உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    J&K News: ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کشمیری پنڈتوں کے احتجاج کو قرار دیا جائز، کہی یہ بڑی بات

    J&K News: ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کشمیری پنڈتوں کے احتجاج کو قرار دیا جائز، کہی یہ بڑی بات

    J&K News: ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کشمیری پنڈتوں کے احتجاج کو قرار دیا جائز، کہی یہ بڑی بات

    Jammu and Kashmir : نیشنل کانفرنس کے صدر و رکن پارلیمنٹ ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ کشمیر فائلز فلم نے ملک میں نفرت کی آگ کو ہوا دی ہے۔ جبکہ کشمیر میں بھی نوجوان نسل میں اس حوالے سے مایوسی اور برہمی پائی جاتی رہی ہے۔

    • Share this:
    جموں و کشمیر: نیشنل کانفرنس کے صدر و رکن پارلیمنٹ ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ کشمیر فائلز فلم نے ملک میں نفرت کی آگ کو ہوا دی ہے۔ جبکہ کشمیر میں بھی نوجوان نسل میں اس حوالے سے مایوسی اور برہمی پائی جاتی رہی ہے۔ ڈاکٹر فاروق نے مزید کہا کہ کشمیر میں حالات بہت ہی خراب ہیں اور یہاں پر سیاحوں کا آنا قطعی طور پر حالات کی بہتری کی عکاسی نہیں کرتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر فائلز میں جس طرح سے دل دہلانے والے مناظر دکھائے گئے ہیں وہ سرارسر جھوٹ اور پروپیگنڈے پر مبنی ہیں۔ جبکہ اس پروپیگنڈے کی وجہ سے ملک میں مذہبی بھائی چارے کو کافی نقصان پہنچا ہے اور ملک میں مسلمانوں کے خلاف اب کئی سازشیں انجام دی جا رہی ہیں۔

     

    یہ بھی پڑھئے: Gyanvapi Masjid Controversy: محبوبہ مفتی نے کہا: ہماری جن جن مسجدوں پر نظر ہے ان کی فہرست دیدو



    انہوں نے کہا کہ اب وقت آ گیا ہے کہ لوگ یکجہتی کا مظاہرہ کر کے ایسی کوششوں کو ناکام بنا دیں ۔ تاکہ ملک کی سیکولر تصویر برقرار رکھی جا سکے۔ انہوں نے کشمیری عوام کو بھی یک جٹ ہو کر ایک پائیدار اور پرامن نظام کی تشکیل دینے پر زور دیا۔ ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ وہ کشمیر میں قیام امن کہ غرض سے ایل جی سے بھی ملاقی ہوئے اور پی اے جی ڈی جموں و کشمیر میں پائیدار امن قائم کرنے کیلئے ایل جی انتظامیہ کا ہر صورت ساتھ دینے کیلئے تیار ہے۔

    این سی صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کشمیری پنڈتوں کی ایجیٹیشن کو جائز قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ لوگ سرکار سے محض اپنے حق کا تقاضہ کر رہے ہیں۔ جبکہ کشمیری پنڈتوں پر لاٹھی چارج کرنا بلا جواز ہے کیونکہ کشمیری پنڈت کبھی بھی بدامنی نہیں پھیلا سکتا ہے ۔ حالانکہ انتظامیہ نے کہا کہ احتجاجی پنڈتوں نے پتھراؤ کیا جو کہ سراسر بے بنیاد ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ لوگ چاہتے ہیں کہ سرکار ان کی جانوں کا تحفظ یقینی بنائے اور انہیں محفوظ مقامات پر تعینات کرے۔

     

    یہ بھی پڑھئے : گیان واپی مسجد معاملہ پر سپریم کورٹ میں کل ہوسکتی ہے سماعت، مسلم فریق نے کی ہے سروے روکنے کی مانگ


    انہوں نے کہا کہ کشمیر میں حالات بہت خراب ہیں اور سیاحوں کی آمد کسی بھی صورت میں یہاں کے بہتر حالات کو نمایاں نہیں کرتے ہیں۔ اننت ناگ میں سابق وزیر عبدالسلام دیوا کے فرزند عبدالحئی دیوا کے انتقال پر تعزیت کے دوران ڈاکٹر فاروق نے میڈیا کے ساتھ ان باتوں کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ پی اے جی ڈی حالات کو بہتر کرانے میں سرکار کا کسی بھی حد تک ساتھ دے گی ۔ ان کے ہمراہ ڈاکٹر بشیر ویری، ایڈوکیٹ عبدالمجید لارمی و دیگر لیڈران بھی تھے۔

    ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے میڈیا پر بھی نشانہ سادھتے ہوئے کہا کہ کشمیر میں اب میڈیا بھی سچ لکھنے سے کتراتی ہے۔ جبکہ سچ لکھنے سے یہاں کے صحافیوں کے ہاتھ کانپ جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر میں حالات کو بدلنے کی ضرورت ہے اور اس میں سرکار بھی کلیدی رول ادا کر سکتی ہے۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: