ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں:پی ایم کیئرفنڈسے محض16دنوں میں بنایاگیا کووڈ اسپتال، خدمات کا آغاز

اس اسپتال میں 500 بستروں میں آکسیجن کی سہولیت دستیاب رہے گی جب کہ اسپتال میں 125 آئی سی یو بیڈ بھی دستیاب ہونگے محکمہ صحت کے فائنانشل کمشنر اتل ڈلو کے مطابق کشمیر میں بھی اسی نوعیت کے ایک اسپتال پر کام شدومد سے جاری ہے

  • Share this:
جموں:پی ایم کیئرفنڈسے محض16دنوں میں بنایاگیا کووڈ اسپتال، خدمات کا آغاز
ڈی آرڈی او کی جانب سے محض 16 دنوں میں اس اسپتال کو قائم کیاگیاہے

جموں میں آخر کار ڈی آر ڈی او کی جانب سے قائم کے گئے 500بستروں والے کووڈ اسپتال میں خدمات کا آغاز ہوگیاہے جس کے بعد مقامی لوگوں میں خوشی کی لہر دیکھی جارہی ہے۔ ڈی آرڈی او کی جانب سے محض 16 دنوں میں اس اسپتال کو قائم کیاگیاہے۔ پی ایم کیئر فنڈ کے تحت ڈی آر ڈی او نے کووڈ اسپتال بنایا ہے۔ ڈی آرڈی او کا کہناہے کہ اس اسپتال میں وینٹی لیٹرز ، مانیٹرز،فارمیسی،لیب سمیت ایکسرے اور سی ٹی اسکان کی سہولتیں بھی دستیاب کروائی گئی ہے۔ایل جی منوج سنہا نے اسپتال کے قیام پر وزیراعظم نریندرمودی، وزیرصحت ہرش وردھن، وزیردفاع راج ناتھ سنگھ سمیت ڈی آرڈی او کے چیئرمین سے اظہارتشکر کیاہے۔



اسپتال کو باضابطہ طور پر شروع کرنے سے پہلے اسے آزمائشی بنیادوں پر چلایا گیا۔ اس موقعے پر جموں کشمیر یو ٹی کے ایل جی منوج سنہا اور رکن پارلیمنٹ جُگل کشور بھی موجود تھے ۔جموں کے بھگوتی علاقے میں قائم کئے گئے ۔اس اسپتال کے مکمل ہونے پر جموں کے لوگوں نے ڈی آر ڈی او کی سراہنا کی ہے اور یہ امید ظاہر کی ہے کہ اس اسپتال کے قیام سے جموں میں کووڈ کی دوسری لہر سےقابو پانے میں انتظامیہ کو مدد ملے گی۔


یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ کووڈ کی دوسری لہر کے چلتے جموں میں صورت حال کافی تشویشناک ہے اور یہاں مثبت معاملات میں اضافے کے ساتھ ساتھ شرح اموات بھی بہت زیادہ ہے چنانچہ جموں میں بڑھتی شرح اموات کی وجہ سے جموں میں صحت کا شعبہ بحث کا موضوع بن گیا ہے اور کچھ لوگوں بڑھتی شرح اموات کے لئے نامناسب صحت خدمات کو بڑی وجہ قرار دے رہے ہیں ۔اسی بیچ اب جب کہ جموں میں 500بستروں والا کووڈ اسپتال مکمل ہوگیا ہے انتظامیہ کے ساتھ ساتھ مقامی لوگ بھی اس امید کا اظہار کر رہے ہیں کہ اس کووڈ اسپتال کے شروع ہونے سے جموں میں کووڈ کی ابتر صورت حال پر قابو پایا جائے گا اور لوگوں کو کووڈ کے حوالے سے مناسب صحت خدمات میسر رہے گی ۔

واضح رہے اس اسپتال میں 500 بستروں میں آکسیجن کی سہولیت دستیاب رہے گی جب کہ اسپتال میں 125 آئی سی یو بیڈ بھی دستیاب ہونگے محکمہ صحت کے فائنانشل کمشنر اتل ڈلو کے مطابق کشمیر میں بھی اسی نوعیت کے ایک اسپتال پر کام شدومد سے جاری ہے جب کہ جموں میں اس کووڈ اسپتال کو چلانے کے لئے انتظامیہ نے پہلے ہی عارضی بنیادوں پر نیم طبعی عملے کی بھرتی بھی عمل میں لائی ہے۔

اس اسپتال میں تعینات طبعی و نیم طبعی عملے کا کہنا تھا کہ اب وہ کووڈ مریضوں کے علاج و معالجہ کے لئے پوری طرح تیار ہیں -اس بات میں کوئی شک نہیں کہ جموں اور کشمیر میں 500 بستروں والے ان اسپتالوں کے قیام کی وجہ سے نہ صرف کووڈ کی دوسری لہر پر قابو پانے میں انتظامیہ کو مدد ملے گی بلکہ ان اسپتالوں کے قیام سے سرکاری اسپتال پر بوجھ بھی کم ہوگا
Published by: Mirzaghani Baig
First published: Jun 06, 2021 06:46 PM IST