ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں وکشمیر: پلوامہ میں سیکورٹی اہلکاروں اور دہشت گردوں کے درمیان تصادم، تین مبینہ دہشت گرد ہلاک، آپریشن جاری

جانکاری کے مطابق، ہندوستانی سیکورٹی اہلکاروں (Indian Security Forces) کو خفیہ اطلاع ملی تھی کہ پلوامہ سیکٹر (Pulwama Sector) میں کچھ دہشت گرد چھپے ہوئے ہیں۔ خفیہ اطلاع کی بنیاد پر سیکورٹی اہلکاروں نے مقامی پولیس کے ساتھ مل کر علاقے میں سرچ آپریشن شروع کیا۔

  • Share this:
جموں وکشمیر: پلوامہ میں سیکورٹی اہلکاروں اور دہشت گردوں کے درمیان تصادم، تین مبینہ دہشت گرد ہلاک، آپریشن جاری
جموں وکشمیر: پلوامہ میں سیکورٹی اہلکاروں اور دہشت گردوں کے درمیان تصادم، تین مبینہ دہشت گرد ہلاک، آپریشن جاری

سری نگر: جموں وکشمیر (Jammu-Kashmir) کے پلوامہ سیکٹر (Pulwama Sector) میں بدھ کی صبح ہندوستانی سیکورٹی اہلکاروں (Indian Security Forces) اور دہشت گردوں (Terrorist) کے درمیان تصادم (Encounter) ہوگیا۔ ابھی تک کی جانکاری کے مطابق، تین مبینہ دہشت گرد مارے جاچکے ہیں جبکہ دیگر دہشت گردوں کی تلا میں علاقے میں سرچ آپریشن جاری ہے۔


جانکاری کے مطابق، ہندوستانی سیکورٹی اہلکاروں کو خفیہ اطلاع ملی تھی کہ پلوامہ سیکٹر میں کچھ دہشت گرد چھپے ہوئے ہیں۔ خفیہ اطلاع کی بنیاد پر سیکورٹی اہلکاروں نے مقامی پولیس کے ساتھ مل کر علاقے میں سرچ آپریشن شروع کیا۔ بتایا جا رہا ہے کہ خود کو گھرتا ہوا دیکھ کر دہشت گردوں نے فائرنگ بھی کی اور علاقے میں ہی کہیں چھپ گئے۔ ابھی تک کی جانکاری کے مطابق، تین دہشت گردوں کو مارا جا چکا ہے جبکہ کچھ دہشت گرد ابھی بھی علاقے میں چھپے ہوئے ہیں۔




دوسری جانب اترپردیش پولیس کے انسداد دہشت گردی اسکواڈ (اے ٹی ایس) کو بڑی کامیابی ہاتھ لگی ہے۔ اتوار کو لکھنو میں جن دو دہشت گردوں کو گرفتار کیا گیا تھا، ان کے پاس سے اترپردیش کے کئی شہروں کے نقشے ملے ہیں۔ اے ٹی ایس ذرائع کے مطابق، القاعدہ حامی یہ مبینہ دہشت گرد کسی بڑے حملے کی منصوبہ بندی کر رہے تھے۔ خبروں کے مطابق، ان دہشت گردوں نے کسی ویب سائٹ کو دیکھ کر بم بنانا سیکھا تھا۔ القاعدہ کے دونوں مشتبہ دہشت گردوں نے پوچھ گچھ میں بتایا ہے کہ ان سب نے صرف 3000 روپئے میں پریشر کوکر بم تیار کیا تھا۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Jul 14, 2021 09:30 AM IST