உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Jammu and Kashmir: جموں وکشمیر کے اننت ناگ میں دہشت گردوں اور سیکورٹی اہلکاروں کے درمیان شروع ہوا تصادم

    جموں وکشمیر: دہشت گردوں اور سیکورٹی اہلکاروں کے درمیان شروع ہوا تصادم

    جموں وکشمیر: دہشت گردوں اور سیکورٹی اہلکاروں کے درمیان شروع ہوا تصادم

    پولیس اور فوج کے جوان جب علاقے میں تلاشی مہم کے لئے پہنچے تو دہشت گردوں نے سیکورٹی اہلکاروں پر فائرنگ کرنا شروع کردیا۔ اس کے بعد سیکورٹی اہلکاروں نے بھی جوابی کارروائی شروع کی، جس کے بعد دونوں کے درمیان تصادم شروع ہوگیا۔ بتایا جا رہا ہے کہ فوج نے علاقے کی گھیرا بندی کر دی ہے تاکہ دہشت گرد اس علاقے سے باہر نہ جاسکیں۔

    • Share this:
      andنئی دہلی: جموں وکشمیر (Jammu Kashmir News) سے ایک بڑی خبر سامنے آئی ہے۔ یہاں اننت ناگ ضلع (Anantnag encounter) میں دہشت گردوں اور سیکورٹی اہلکاروں کے درمیان تصادم شروع ہوگیا ہے۔ یہ تصادم اننت ناگ ضلع کے مرہامہ بجبہرہ علاقے میں شروع ہوا۔ دہشت گردوں سے نمٹنے کے لئے ریاستی پولیس اور فوج کے جوان مشترکہ طور پر علاقے میں موجود ہیں۔ ذرائع کے مطابق، پولیس کو اِن پُٹ ملا تھا کہ علاقے میں دہشت گرد موجود ہیں۔ 24 گھنٹے کے اندر اننت ناگ ضلع میں یہ دوسرا تصادم ہے۔

      پولیس اور فوج کے جوان جب علاقے میں تلاشی مہم کے لئے پہنچے تو دہشت گردوں نے سیکورٹی اہلکاروں پر فائرنگ کرنا شروع کردیا۔ اس کے بعد سیکورٹی اہلکاروں نے بھی جوابی کارروائی شروع کی، جس کے بعد دونوں کے درمیان تصادم شروع ہوگیا۔ بتایا جا رہا ہے کہ فوج نے علاقے کی گھیرا بندی کر دی ہے تاکہ دہشت گرد اس علاقے سے باہر نہ جاسکیں۔

      اس سے قبل منگل کو بھی اننت ناگ میں سیکورٹی اہلکاروں اور دہشت گردوں کے درمیان تصادم ہوا تھا۔ اس تصادم میں سیکورٹی اہلکاروں کو بڑی کامیابی ملی تھی۔ تصادم کے دوران لشکر طیبہ دہشت گرد تنظیم کا کمانڈر نثار ڈار اور اس کا ایک ساتھی مارا گیا تھا۔ نثار ڈار نوجوانوں کو بہلا پھسلاکر دہشت گرد تنظیم جوائن کراتا تھا اور پھر انہیں دہشت گردانہ حادثات کو انجام دینے کے لئے بھیج دیتا تھا۔

      الگ الگ تصادم میں ایک شہری کی ہوئی موت

      منگل کو جموں وکشمیر میں الگ الگ تصادم میں دو دہشت گرد اور ایک شہری کی موت ہوگئی جبکہ ایک فوجی سیمت دو دیگر زخمی ہوگئے۔ پولیس نے منگل کو یہ جانکاری دی۔ ایک پولیس ترجمان نے بتایا کہ سیکورٹی اہلکاروں نے پیر کے روز شام کو شوپیاں کے پنڈوشن علاقے میں دہشت گردوں کی موجودگی کی اطلاع ملنے کے بعد تلاشی مہم شروع کی تھی۔ انہوں نے کہا کہ جب سیکورٹی اہلکار علاقے کی گھیرا بندی کر رہے تھے۔ اسی دوران چھپے دہشت گردوں نے سیکورٹی اہلکاروں پر گولیاں چلائیں۔

      ترجمان نے کہا کہ سیکورٹی اہلکاروں نے علاقے میں موجود عام شہریوں کو بچانے اور انہیں محفوظ ہٹانے کے لئے بہت احتیاط کیا۔ انہوں نے کہا، ’حالانکہ، عام شہریوں کو ہٹانے کے عمل کے دوران، چھپے ہوئے دہشت گردوں نے بھاگ نکلنے کے لئے شہریوں کے ساتھ ہی سیکورٹی اہلکاروں کو بھی نشانہ بنایا۔ شہریوں کو محفوظ مقامات پر پہنچایا گیا، لیکن دہشت گردوں کے ذریعہ کی گئی بھاری گولہ باری کے سبب، فوجی لانس نائک سنجیب داس اور دو شہری شاہد غنی ڈار اور صہیب احمد گولی لگنے سے زخمی ہوگئے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: