ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

Jammu and Kashmir: پلوامہ میں دہشت گردوں سے تصادم میں سیکورٹی اہلکاروں نے تین دہشت گردوں کو ہلاک کیا

آئی جی پی کشمیر وجے کمار نے اطلاع دی کہ پلوامہ تصادم کے دوران لشکر کے تین دہشت گرد ہلاک ہوگئے ہیں، لیکن ابھی آپریشن جاری ہے۔ حالانکہ اس آپریشن میں سیکورٹی کا ایک جوان بھی شہید ہوگیا۔

  • Share this:
Jammu and Kashmir: پلوامہ میں دہشت گردوں سے تصادم میں سیکورٹی اہلکاروں نے تین دہشت گردوں کو ہلاک کیا
آئی جی پی کشمیر وجے کمار نے اطلاع دی کہ پلوامہ تصادم کے دوران لشکر کے تین دہشت گرد ہلاک ہوگئے ہیں، لیکن ابھی آپریشن جاری ہے۔ حالانکہ اس آپریشن میں سیکورٹی کا ایک جوان بھی شہید ہوگیا۔

سری نگر: جموں وکشمیر (Jammu Kashmir) کے پلوامہ (Pulwama) میں دیر رات دہشت گردوں اور سیکورٹی اہلکاروں کے درمیان تصادم ہوا۔ اس معاملے کی اطلاع کشمیر زون کی پولیس نے دی۔ آئی جی پی کشمیر وجے کمار نے اطلاع دی کہ پلوامہ تصادم کے دوران لشکر کے تین دہشت گرد ہلاک ہوگئے ہیں، لیکن ابھی آپریشن جاری ہے۔ حالانکہ اس آپریشن میں سیکورٹی کا ایک جوان بھی شہید ہوگیا۔ افسر نے بتایا کہ ابتدائی گولہ باری میں ایک جوان زخمی ہوگیا تھا، جس کا اسپتال میں علاج کے دوران انتقال ہوگیا۔


اس سے پہلے کشمیر زون پولیس نے بتایا کہ پلوامہ واقع حاجن راجپور میں دہشت گردوں اور سیکورٹی اہلکاروں کے درمیان انکاونٹر شروع ہوا۔ ذرائع سے ملی اطلاع کے مطابق، سیکورٹی اہلکاروں کو ان پُٹ ملا تھا کہ علاقے میں کچھ دہشت گرد ہیں، جس کے بعد سرچ آپریشن چلایا گیا۔ اطلاع کے مطابق، تلاشی مہم کے دوران جیسے ہی سیکورٹی اہلکار مشکوک ٹھکانے پر پہنچے، دہشت گردوں نے ان پر گولیاں چلا دیں۔ اس کے بعد سیکورٹی اہلکاروں نے محاذ سنبھالا اور زبردست گولی باری کی۔


کلگام میں تصادم میں لشکر کے تین دہشت گرد ہلاک

اس سے پہلے بدھ کو کلگام ضلع میں سیکورٹی اہلکاروں کے ساتھ ہوئے تصادم میں لشکر طیبہ کے تین دہشت گرد مارے گئے تھے۔ اس دوران ہوئی گولی باری میں فوج کے دو جوان بھی زخمی ہوئے تھے۔ پولیس کے ایک ترجمان کے مطابق، دہشت گردوں کے پوشیدہ ہونے کی خفیہ اطلاع کی بنیاد پر پولیس، مرکزی ریزرو پولیس اہلکار اور فوج نے مشترکہ طور پر کلگام ضلع کے چمیر گاوں میں گھیرا بندی اور تلاشی مہم شروع کیا۔ اسی دوران وہاں موجود دہشت گردوں نے ان پر گولی بار شروع کردی۔ سیکورٹی اہلکاروں نے بھی جوابی کارروائی کی اور تصادم شروع ہوگیا۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Jul 02, 2021 02:01 PM IST