உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    jammu and kashmir: جموں میں اپنی نوعیت کا پہلا خواتین کےلیے مخصوص پٹرول پمپ کا قیام

    دو فیول ڈسچارج یونٹ والا پیٹرول پمپ صرف خواتین صارفین کے لیے کھلا ہوگا۔ وقف شدہ ’آئی لینڈ یونٹ‘ کے علاوہ، پیٹرول پمپ میں خواتین کے لیے ایک مخصوص کمرہ بھی ہے جس میں صاف ستھرے بیت الخلاء، چینجنگ روم اور ایک چھوٹا سا ریسٹ روم جیسی سہولیات موجود ہیں۔

    دو فیول ڈسچارج یونٹ والا پیٹرول پمپ صرف خواتین صارفین کے لیے کھلا ہوگا۔ وقف شدہ ’آئی لینڈ یونٹ‘ کے علاوہ، پیٹرول پمپ میں خواتین کے لیے ایک مخصوص کمرہ بھی ہے جس میں صاف ستھرے بیت الخلاء، چینجنگ روم اور ایک چھوٹا سا ریسٹ روم جیسی سہولیات موجود ہیں۔

    دو فیول ڈسچارج یونٹ والا پیٹرول پمپ صرف خواتین صارفین کے لیے کھلا ہوگا۔ وقف شدہ ’آئی لینڈ یونٹ‘ کے علاوہ، پیٹرول پمپ میں خواتین کے لیے ایک مخصوص کمرہ بھی ہے جس میں صاف ستھرے بیت الخلاء، چینجنگ روم اور ایک چھوٹا سا ریسٹ روم جیسی سہولیات موجود ہیں۔

    • Share this:
    جموں کشمیر: جموں کے گاندھی نگر علاقے میں ایک پٹرول پمپ میں ایک وقف پٹرول پمپ کاؤنٹر قائم کیا گیا ہے۔ بشمبر داس نامی پمپ کے مالک کا کہنا ہے کہ انہوں نے یہ اقدام خاتون ڈرائیوروں کو ریلیف دینے اور خواتین کے لیے روزگار کے مواقع پیدا کرنے کے مقصد سے کیا ہے۔ خواتین نے اس اقدام کا خیر مقدم کیا ہے اور دوسروں سے بھی اس قدم پر عمل کرنے کی اپیل کی ہے۔ اپنی نوعیت کی پہلی اور منفرد پہل کے تحت جموں کے گاندھی نگر علاقے میں بشمبر داس نے اپنے پیٹرول پمپ میں ایک 'آل ویمن' پیٹرول پمپ کا کاؤنٹر شروع کیا۔ دو فیول ڈسچارج یونٹ والا پیٹرول پمپ صرف خواتین صارفین کے لیے کھلا ہوگا۔ وقف شدہ ’آئی لینڈ یونٹ‘ کے علاوہ، پیٹرول پمپ میں خواتین کے لیے ایک مخصوص کمرہ بھی ہے جس میں صاف ستھرے بیت الخلاء، چینجنگ روم اور ایک چھوٹا سا ریسٹ روم جیسی سہولیات موجود ہیں۔

    پٹرول پمپ کے پاس ایک توسیعی کاونٹر بھی ہے جس میں مفت پولیشن چیک، مفت پیٹرول واؤچر اور خواتین کے لیے مفت آنکھوں کا معائنہ شامل ہے۔ ملازمین کے طور پر کام کرنے والی خواتین نے ملازمت ملنے کے ساتھ ساتھ خواتین ڈرائیوروں کے لیے مددگار بننے پر خوشی کا اظہار کیا۔ پمپ پر کام کر رہی مینو کماری نامی ملازمہ کا کہنا ہے کہ اس پمپ پر کام کرنے سے نہ صرف انہیں روزگار فراہم ہوا ہے، بلکہ خواتین کےلیے موافق ماحول میں کام کرنے کا ایک الگ ہی احساس ہوتا ہے۔ مینو نے جموں میں اپنی نوعیت کے اس پہلے اقدام کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ جموں کشمیر کے باقی حصوں میں بھی خواتین کی بااختیاری کےلیے اسطرح کے اقدام اٹھانا وقت کی اہم ضرورت ہے۔

    حکومت کا بڑا فیصلہ: سستے ہوں گے Petrol-Die اور ہوائی ایندھن کے دام!

    پٹرول پمپ کے مالک بشمبر داس کا کہنا ہے کہ انہوں نے یہ قدم یقینی طور پر یہاں کی خواتین کو بااختیار بنانے کےلیے اٹھایا ہے۔ جبکہ خواتین کےلیے مخصوص اس جگہ پر خواتین ایک کھلے ماحول میں بھیڑ بھاڑ سے دور بلا ججھک آ سکتی ہیں جہاں پر صرف اور صرف انکو ترجیح دی جاتی ہے۔

    عین موقع پر کلک ہوئی یہ photos ایک سیکنڈ کی بھی دیری سے برباد ہو جاتیں: جانئے کیوں




    خواتین ڈرائیور بڑی تعداد میں اسی پٹرول پمپ سے ایندھن بھرنے کے لیے آرہی ہیں کیونکہ وہ اس جگہ کا دورہ کرتے ہوئے آرام محسوس کرتی ہیں۔ یہاں تک کہ وہ خواتین ملازمین کے ساتھ کھلے دل سے بات کرتی نظر آتی ہیں اور خوشی خوشی ایک دوسرے کا پرجوش خوش آمد کرتی بھی نظر آتی ہیں۔ یہ خواتین صارف انکے کے لیے علیحدہ پیٹرول پمپ کاؤنٹر شروع کرنے پر پیٹرول پمپ مالک کی تعریف کرتے ہیں۔
    خواتین کے لیے مخصوص اس پیٹرول پمپ کو الگ کرنا خواتین کو بااختیار بنانے کی جانب واقعی ایک بڑا قدم ہے۔ وقت کی ضرورت ہے کہ اس طرح کے اقدامات دوسرے تمام لوگ اٹھائیں تاکہ خواتین میں حقیقی معنوں میں مردوں کے برابر چلنے کا خود اعتمادی کا مادہ اپنے اندر محسوس کر سکے۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: