உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سیاحتی مقام گلمرگ میں آئیکونک ویک کے تحت گلمرگ لٹریری فیسٹول، ملک بھر کے نامور ادیبوں ،شعراء اور فنکاروں نے کی شرکت

    سیاحتی مقام گلمرگ میں آئیکونک ویک کے تحت گلمرگ لٹریری فیسٹول کا اہتمام  کیاگیا۔اس فیسٹول میں مرکزی  وزیر میناکشی لیکھی ،لیفٹینٹ گورنر منوج سنہا کے علاوہ  ملک بھر کے نامور ادیبوں ،شعراء اور فنکاروں نے شرکت  کرکے ادب و ثقافت  جیسے موضوعات پر تبادلہ خیال کیا۔

    سیاحتی مقام گلمرگ میں آئیکونک ویک کے تحت گلمرگ لٹریری فیسٹول کا اہتمام  کیاگیا۔اس فیسٹول میں مرکزی  وزیر میناکشی لیکھی ،لیفٹینٹ گورنر منوج سنہا کے علاوہ  ملک بھر کے نامور ادیبوں ،شعراء اور فنکاروں نے شرکت  کرکے ادب و ثقافت  جیسے موضوعات پر تبادلہ خیال کیا۔

    سیاحتی مقام گلمرگ میں آئیکونک ویک کے تحت گلمرگ لٹریری فیسٹول کا اہتمام  کیاگیا۔اس فیسٹول میں مرکزی  وزیر میناکشی لیکھی ،لیفٹینٹ گورنر منوج سنہا کے علاوہ  ملک بھر کے نامور ادیبوں ،شعراء اور فنکاروں نے شرکت  کرکے ادب و ثقافت  جیسے موضوعات پر تبادلہ خیال کیا۔

    • Share this:
    سیاحتی مقام گلمرگ میں اپنی نوعیت کا پہلا آئیکونک ویک کے تحت گلمرگ لٹریری فیسٹول کا اہتمام کیاگیا۔ فیسٹول کی پہلی نشست میں مرکزی وزیر برائے خارجہ امور اور ثقافت محترمہ میناکشی لیکھی مہمان خصوصی تھیں انہوں نے شمع جلا کر اس فیسٹول کا آغاز کیا۔ فیسٹول کے انعقاد میں محکمہ سیاحت، محکمہ اعلیٰ تعلیم ، جموں وکشمیر اکیڈمی آف آرٹ کلچر اینڈ لینگویجز اور ضلع انتظامیہ بارہمولہ کا اشتراک شامل ہے۔فیسٹول سے مرکزی وزیر برائے خارجہ امور اور ثقافت محترمہ میناکشی لیکھی نے خطاب کیا۔ انہوں نے اپنے خطاب میں کشمیر کو ادب و ثقافت کے لئے سر خیز زمین بتایا۔ نیوز18اردو کے ساتھ خاص بات چیت کرتے ہوئے مینا کشی لیکھی نے کہاکہ سرکار نے یہ اچھا قدم اٹھایا کہ یہاں اس طرح کے فیسٹول کااہتمام کیا۔انہوں نے کہاکہ کشمیر سے سارا اتہاس ملتاہے۔یہی سے مارئن سامراج کاعہد ملتاہے۔ یہی پر مندر بنانے کی کلا کو بہتر کیاگیا، کشمیر میں بدھ مذہب کی بڑی کانفرنس ہوئی۔ یہی پر صوفی ازم کے جاننے والے لوگ رہے ہیں۔ میناکشی لیکھی نے کہاکہ اچھا قدم اٹھایا گیا اور سارے ملک کو ایک ساتھ ملکر آگے بڑھنا ہوگا۔گلمرگ میں منعقدہ اس لٹریری فیسٹول میں ملک بھر سے نامور مصنفین ،شعراء اور فنکاروں نے شرکت کی ۔

    اس فیسٹول میں ادب و ثقافت کے مختلف موضوعات پر تبادلہ خیال ہوا ۔پہلی نشست میں افسانہ ،رومانوی ادب ،تاریخ ،فنتاسی ،لوک داستان ،مصنف بننے اور اس کے سفر اور جموں کشمیر کے ابھرتے ہوئے ادیب جیسے موضوعات پر گفت و شنید ہوئی۔ ادیبوں نے کہاکہ یہ خوشی کا مقام ہے کہ گلمرگ میں تمام ادیب، مصنفین اور شعراء ایک جگہ جمع ہوئے۔ مشہور قلم کار کنچن بنرجی نے نیوز18اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ آج خوشی ہوئی کہ گلمرگ میں ایک ہی پلیٹ فارم پر ملک کے تمام قلم کار اور شاعر جمع ہوئے اور ایک دوسرے کے خیالات سننے کاموقع ملا ہے۔نیلی ڈسلوا نامی قلم کار نے بتایا کہ واقعی کشمیر جنت ہے اور اس جنت میں اپنے خیالات کا اظہار کرنے کا موقع ملا۔

    فیسٹول کے دوسرے نشست میں جموں وکشمیر کے لیفٹننٹ گورنر منوج سنہا مہمان خصوصی تھے۔فیسٹول سے خطاب کرتے ہوئے منوج سنہا نے کہاکہ وادی میں کچھ لوگ ایسے ابھی بھی موجود ہیں جو حالات بگاڑنے کے در پے ہیں جو نہیں چاہتے کہ کشمیر میں امن اور بھائی چارہ قائم ہو۔ لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے ملک بھر سے آئے ہوئے قلم کاروں کو دیکھ کر خوشی کا اظہار کیا انہوں نے مزید کہاکہ ایک اچھا موقع ہے یہاں کی نوجوان نسل ان قلم کاروں سے تبادلہ خیال کرسکیں۔

    دوسری نشست میں بھی ملک کے نامور ادیبوں ،شعراءاور فنکاروں نے شرکت کی ۔اس نشست میں ہندوستان اور دنیا کی مختلف زبانوں پر بات چیت ہوئی ۔ وہیں کوویڈ کے بعداور لاک ڈاؤن ۔ایک ٹوٹی ہوئی دنیا کو لکھنا اور رپورٹ کرنا اس موضوع پر بھی مختلف ادیبوں نے اپنے خیالات پیش کئے ۔فیسٹول میں صوفی ازم اورصوفی طریقہ پر بھی ادیبوں نے روشنی ڈالی۔

    انہوں نے کہاکہ کشمیر کی صوفی روایات کو نئی نسل تک پہنچانے اور صوفیوں کے پیغام اخوت اور امن کو پوری دنیا تک پہنچانا انتہائی ضروری ہے ۔فیسٹول میں مقامی اور غیرریاستی فنکاروں نے اپنے فن کا مظاہرہ کرکے سامعین کو محظوظ کیا۔معروف شاعرہ گیتکا کولی آملہ نے پروگرام کی نظامت کی۔ امید یہی کی جارہی ہے کہ کشمیر زیادہ سے زیادہ ادب و ثقافت کے لئے زرخیز جگہ بنے ۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: