ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

وادی کشمیر میں گرمی میں اضافہ اور بارش نہ ہونے سے فصلوں کو نقصان پہنچنے کا خطرہ ، کاشتکاروں میں تشویش

پلوامہ کے میوہ کاشتکار محمد امین کا کہنا ہے کہ درجہ حرارت میں اضافہ ہونے کے بعد کشمیر میں بارش ہوتی تھی ، لیکن اس مرتبہ صورتحال اس کے بالکل برعکس ہے ، جس کی وجہ سے مختلف میوہ جات کے علاوہ سبزیوں کو بھی نقصان پہنچنے کا خطرہ پیدا ہوگیا ہے ۔

  • Share this:
وادی کشمیر میں گرمی میں اضافہ اور بارش نہ ہونے سے فصلوں کو نقصان پہنچنے کا خطرہ ، کاشتکاروں میں تشویش
وادی کشمیر میں گرمی میں اضافہ اور بارش نہ ہونے سے فصلوں کو نقصان پہنچنے کا خطرہ ، کاشتکاروں میں تشویش

رواں سال موسم گرما کے دوران وادی کشمیر میں درجہ حرارت میں اضافہ سے سیب اور دیگر فصلوں کو نقصان پہنچنے کا خطرہ لاحق ہوگیا ہے ۔ گزشتہ کئی روز سے وادی کے دیگر حصوں کی طرح ہی ضلع پلوامہ کے میدانی اور بالائی علاقوں میں بھی شدید گرمی پڑ رہی ہے ۔ اس دوران بارش نہ ہونے سے وادی کشمیر میں خُشک سالی جیسی صورتحال پیدا ہوگئی ہے ۔ بارش نہ ہونے کی وجہ سے کشمیر میں میوہ باغات میں سیب اور دیگر میوہ جات کی فصلوں کو نقصان پہنچے کا خطرہ ہوگیا ہے ، جس کی وجہ سے میوہ کاشتکاروں میں کافی تشویش پائی جارہی ہے ۔


پلوامہ کے میوہ کاشتکار محمد امین کا کہنا ہے کہ درجہ حرارت میں اضافہ ہونے کے بعد کشمیر میں بارش ہوتی تھی ، لیکن اس مرتبہ صورتحال اس کے بالکل برعکس ہے ، جس کی وجہ سے مختلف میوہ جات کے علاوہ سبزیوں کو بھی نقصان پہنچنے کا خطرہ پیدا ہوگیا ہے ۔


ادھر محکمہ باغبانی کے افسر پلوامہ آر کے کوتوال کا کہنا ہے کہ ان حالات میں میوے کو مختلف بیماری سے محفوظ رکھنے کیلئے اقدامات کرنے کی ضرورت ہے اور طے شدہ جراثیم کش ادویات کا استعمال بھی ضروری ہے ۔


ادھر گرمی میں اضافہ سے ضلع پلوامہ کے مختلف علاقوں میں پینے کے پانی کی بھی قلت پیدا ہوگئی ہے ۔ پلوامہ کے علاوہ وادی کے سبھی علاقوں میں گرمی کی شدید لہر سے میوہ  کاشتکاروں کے علاوہ عام لوگوں میں تشویش پائی جارہی ہے ۔ وادی کشمیر میں گرما کے دوران درجہ حرارت 30 ڈگری سیلسیس سے زیادہ ہونے کے بعد بارش ہوتی تھی ، لیکن اس مرتبہ گرمی بڑھ جانے کے ساتھ بارش نہیں ہورہی ہے۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jul 08, 2020 08:49 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading