உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں وکشمیر: سابق وزیر اعلیٰ فاروق عبداللہ نے کہا- جموں وکشمیر کی عوام جمہوری حقوق سے محروم

    فاروق عبداللہ نے کہا- جموں وکشمیر کی عوام جمہوری حقوق سے محروم ہے۔

    فاروق عبداللہ نے کہا- جموں وکشمیر کی عوام جمہوری حقوق سے محروم ہے۔

    نیشنل کانفرنس کے صدر و رکن پارلیمان ڈاکٹر فاروق نے کہا کہ جموں و کشمیر کی عوام اس وقت جمہوری حقوق سے محروم ہے اور جمہوریت کے فقدان کا براہ راست منفی اثر عام لوگوں پر پڑ رہا ہے۔

    • Share this:

      سری نگر: نیشنل کانفرنس کے صدر و رکن پارلیمان ڈاکٹر فاروق نے کہا کہ جموں و کشمیر کی عوام اس وقت جمہوری حقوق سے محروم ہے اور جمہوریت کے فقدان کا براہ راست منفی اثر عام لوگوں پر پڑ رہا ہے۔ انہوں نے یہ باتیں جمعہ کو یہاں اپنی رہائش گاہ پر فورم برائے انسانی حقوق جموں و کشمیر کے ایک اعلیٰ سطحی وفد سے ملاقات کے دوران کہی ہیں۔ وفد میں جسٹس اے پی شاہ، سابق مصالحت کار رادھا کمار اور معروف حقوق اطفال کارکن اناکشی گنگولی بھی شامل تھیں جبکہ اس موقعے پر نیشنل کانفرنس کے کئی سینئر پارٹی لیڈران بھی موجود تھے۔
      نیشنل کانفرنس ترجمان کے مطابق اس موقع پر جموں و کشمیر کی سیاسی صورتحال، زمینی سطح لوگوں کو درپیش مشکلات، 5 اگست 2019 کے بعد حالات، گزشتہ دو سال سے جاری غیر یقینیت اور بے چینی اور خصوصاً انسانی حقوق کے بارے میں تبادلہ خیالات ہوا ہے۔ فاروق عبداللہ نے وفد سے کہا کہ نیشنل کانفرنس جموں و کشمیر کے عوام کے حقوق کی پاسبان جماعت رہی ہے اور یہ جماعت آج بھی یہاں کے عوام کے حقوق کے لئے برسرجہد ہے۔ انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر کی عوام اس وقت جمہوریت کے حق سے بھی محروم ہیں اور جمہوریت کے فقدان کا براہ راست منفی اثر عام لوگوں پر پڑ رہا ہے۔


      محبوبہ مفتی کی والدہ کو ای ڈی نے بھیجا سمن


      انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) نے منی لانڈرنگ معاملے سے متعلق ایک معاملے میں پوچھ گچھ کے لئے جموں وکشمیر کی سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی والدہ کو سمن بھیجا ہے۔ افسران نے جمعہ کو یہ جانکاری دی۔ گلشن نذیر جموں وکشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ آنجہانی مفتی محمد سعید کی اہلیہ اور سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی والدہ ہیں۔ مرکزی تفتیشی ایجنسی نے اس سے پہلے گزشتہ 14 جولائی کو گلشن نذیر کو اس کے سامنے پیش ہونے کو کہا تھا، لیکن وہ ایجنسی کے سامنے پیش نہیں ہوئی تھیں کیونکہ انہیں اس معاملے کی تفصیل نہیں دی گئی، جس میں پوچھ گچھ کی جانی تھی۔ گلشن نذیر کو صرف اتنا بتایا گیا تھا کہ ای ڈی کے سامنے ان کی پیشی اینٹی منی لانڈرنگ قانون (پی ایم ایل اے) کے تحت درج ایک معاملے میں ضروری ہے، لیکن وہ انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ کے سامنے پیش نہیں ہوئیں، کیونکہ ایجنسی نے ان کے اس خط کا جواب نہیں دیا ہے، جس میں معاملے کی تفصیل پوچھی گئی تھی۔

      انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) نے منی لانڈرنگ معاملے سے متعلق ایک معاملے میں پوچھ گچھ کے لئے جموں وکشمیر کی سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی والدہ کو سمن بھیجا ہے۔
      انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) نے منی لانڈرنگ معاملے سے متعلق ایک معاملے میں پوچھ گچھ کے لئے جموں وکشمیر کی سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی والدہ کو سمن بھیجا ہے۔


      محبوبہ مفتی نے بھی اپنی ماں کو ای ڈی کا نوٹس ملنے کے بعد مرکزی حکومت پر تنقید کی تھی۔ انہوں نے ٹوئٹ کیا تھا، ’جس دن پی ڈی پی نے حد بندی کمیشن سے نہیں ملنے کا فیصلہ کیا تھا، اسی دن ای ڈی نے میری ماں کو نامعلوم الزامات میں انفرادی طور پر پیش ہونے کے لئے سمن بھیج دیا۔ ہندوستانی حکومت سیاسی مخالفین کو ڈرانے دھمکانے کی کوششوں میں سینئر شہریوں تک کو نہیں چھوڑتی۔ این آئی اے اور ای ڈی جیسی ایجنسیاں ہندوستانی حکومت کے اس کام کو پورا کرنے کا ہتھیار بن گئی ہیں۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: