ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر کی انفرادیت قائم و دائم رکھنا ہر پشتینی باشندے کی ذمہ داری: فاروق عبداللہ

نیشنل کانفرنس کے صدر و رکن پارلیمنٹ ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ جموں و کشمیر کی انفرادیت، وحدت اور اجتماعیت قائم و دائم رکھنا اس خطے کے ہر پشتنی باشندے کے لئے لازم و ملزوم ہے اور اسی میں ہماری شناخت اور تشخص کا راز مضمر ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Jul 23, 2021 11:24 PM IST
  • Share this:
جموں و کشمیر کی انفرادیت قائم و دائم رکھنا ہر پشتینی باشندے کی ذمہ داری: فاروق عبداللہ
جموں و کشمیر کی انفرادیت قائم و دائم رکھنا ہر پشتینی باشندے کی ذمہ داری: فاروق عبداللہ





سری نگر: نیشنل کانفرنس کے صدر و رکن پارلیمنٹ ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ جموں و کشمیر کی انفرادیت، وحدت اور اجتماعیت قائم و دائم رکھنا اس خطے کے ہر پشتنی باشندے کے لئے لازم و ملزوم ہے اور اسی میں ہماری شناخت اور تشخص کا راز مضمر ہے۔ ان باتوں کا اظہار انہوں نے جمعے کو اپنی رہائش گاہ واقع گپکار پر وادی کے مختلف اضلاع سے آئے ہوئے پارٹی عہدیداران، کارکنان اور معزز شہریوں سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

فاروق عبداللہ نے کہا کہ ہماری پہچان دنیا میں اُسی صورت میں قائم رہ سکتی ہے جب ہم اپنی تہذیب و تمدن، کلچر خصوصاً اپنی علاقائی زبانوں کو محفوظ رکھیں گے اور اپنے بچوں کو اس سے روشناس کرائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اللہ کا شکر ہے کہ علمدار کشمیر، لل عارفہ اور حبہ خاتون جیسے صوفی اور ریشیوں نے کشمیری زبان کو دوام بخشا اور اس کی حفاظت کی ترغیب دی۔ حضرت شیخ العالم نے اپنی مادری زبان میں ہی قرآن و حدیث بیان کیا۔
ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ جس قوم نے اپنی زبان اور تمدن کھو دیا وہ صفحہ ہستی سے مٹ گئی۔ انہوں نے کارکنوں اور عہدیداروں اور ہدایت دی کہ وہ جماعت کی مضبوطی اور لوگوں کی خدمت کو اپنا شعار بنائیں۔ ان کا مزید کہنا تھا: 'جموں وکشمیر کا خصوصی درجہ ہر قیمت اور ہر سطح پر بحال ہرنے سے ہی ریاست میں امن و امان، تعمیر و ترقی اور عوامی حکومت قائم ہو سکتی ہے۔ میں جماعت کے اعلیٰ سے ادنیٰ عہدیداروں اور کارکنوں سے تاکید کرتا ہوں کہ وہ اس وقت پُرآشوب اور سخت ترین دور کو مدنظر رکھتے ہوئے خود کو عوام کے لئے وقف رکھیں اور ساتھ ہی نیشنل کانفرنس کے نیا کشمیر پروگرام کو گھر گھر پہنچائیں'۔




ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ جس قوم نے اپنی زبان اور تمدن کھو دیا وہ صفحہ ہستی سے مٹ گئی۔ انہوں نے کارکنوں اور عہدیداروں اور ہدایت دی کہ وہ جماعت کی مضبوطی اور لوگوں کی خدمت کو اپنا شعار بنائیں۔
ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ جس قوم نے اپنی زبان اور تمدن کھو دیا وہ صفحہ ہستی سے مٹ گئی۔ انہوں نے کارکنوں اور عہدیداروں اور ہدایت دی کہ وہ جماعت کی مضبوطی اور لوگوں کی خدمت کو اپنا شعار بنائیں۔


دریں اثنا نیشنل کانفرنس کے ترجمان کے مطابق وادی کے مختلف اضلاع سے آئے ہوئے کئی وفود بشمول پارٹی لیڈران، عہدیداران اور کارکنان جماعت کے نائب صدر عمر عبداللہ سے اُن کی رہائش پر ملاقی ہوئے۔ وفود اور پارٹی زعما و دیگر کارکنوں نے عمر عبداللہ کو عید مبارک پیش کیا۔ وفود نے عمر عبداللہ کو اپنے اپنے علاقوں کے لوگوں کے گوناگون مسائل و مشکلات جن میں اقتصادی ومعاشی بدحالی، بے چینی اور غیر یقینیت، بے روزگاری اور مہنگائی کے علاوہ ضروریات زندگی کی عدم فراہمی قابل ذکر ہیں۔ لوگوں نے کہا کہ بار بار حکمرانوں کی نوٹس میں لانے کے باوجود بھی اُن کی دادرسی نہیں ہو رہی ہے بلکہ ہر گزرتے دن کے ساتھ مشکلات میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔
عمر عبداللہ نے وفود سے کہا کہ نیشنل کانفرنس ہمیشہ عوامی مسائل سے باخبر ہے اور اس وقت لوگوں کو جن جن مسائل و مشکلات کا سامنا ہے ہم انہیں ہر سطح پر اجاگر کرنے کے علاوہ اس بات کی حد درجہ کوشش کرتے ہیں کہ ان کا ازالہ ہے کیونکہ لوگوں کی راحت رسانی نیشنل کانفرنس کا بنیادی منشور ہے۔ انہوں نے پارٹی عہدیداران اور کارکنان پر زور دیا کہ وہ موجودہ سخت ترین دور میں زمینی سطح پر لوگوں کے ساتھ قریبی رابطہ رکھ کر اُن کے دکھ سکھ میں پیش پیش رہیں۔ حضرت بل کے دکانداروں کے ایک وفد نے شکایت کی کہ گزشتہ ڈیڑھ سال سے انہیں دکانیں کھولنے کی اجازت نہیں دی جا رہی ہے، جس کی وجہ سے اُن کے کنبے فاقہ کشی پر مجبور ہو گئے ہیں۔






Published by: Nisar Ahmad
First published: Jul 23, 2021 11:24 PM IST