உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    J&K News: بمنہ سری نگر میں نہر کا باندھ ٹوٹا، رہائشی علاقوں میں پانی داخل، کئی مکانات کو پہنچا نقصان

    J&K News: بمنہ سری نگر میں نہر کا باندھ ٹوٹا، رہائشی علاقوں میں پانی داخل، کئی مکانات کو پہنچا نقصان

    J&K News: بمنہ سری نگر میں نہر کا باندھ ٹوٹا، رہائشی علاقوں میں پانی داخل، کئی مکانات کو پہنچا نقصان

    Jammu and Kashmir: جموں و کشمیر کے بمنہ سرینگر میں گزشتہ روز آئے سیلاب کی وجہ سے کئی مکانات کو نقصان پہنچا ہے۔ علاقے میں بہنے والی نہر کا باندھ اچانک سے ٹوٹ گیا تھا، جس کے بعد نہر کا پانی رہائشی علاقوں میں داخل ہوگیا۔

    • Share this:
      عابد حسین

      بمنہ : جموں و کشمیر کے بمنہ سرینگر میں گزشتہ روز آئے سیلاب کی وجہ سے کئی مکانات کو نقصان پہنچا ہے۔ علاقے میں بہنے والی نہر کا باندھ اچانک سے ٹوٹ گیا تھا، جس کے بعد نہر کا پانی رہائشی علاقوں میں داخل ہوگیا۔ باندھ کو ٹھیک کرنے میں کافی مشقت کرنی پڑی اور آخر کار نو گھنٹوں کی محنت اور مقامی لوگوں کی مدد سے انتظامیہ باندھ کو ٹھیک کرنے میں کامیاب ہوئی ۔ وہیں نہر سے نکلنے والے پانی نے پہلے بمنہ میں تباہی مچائی اور اس کے بعد یہ پانی رکھ آرتھ بمنہ میں جمع ہوگیا اور آج دوسرے روز بھی رکھ آرتھ‌ بمنہ میں پانی نکلنے کا نام نہیں لے رہا ہے۔

       

      یہ بھی پڑھئے: جنوبی کشمیر میں تارسر جھیل کے نزدیک پھنسے 11 لوگوں کا کیا گیا ریسکیو


      لوگوں نے الزام لگایا کہ سرکار نے انہیں یہاں بسا کر دلدل میں پھینک دیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ ڈل میں ہی ٹھیک تھے۔ پانی کی وجہ سے کئی مکانوں میں پانی جمع ہوگیا ہے۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ انہوں نے انتظامیہ کو کئی مرتبہ خبردار کیا تھا کہ ان کی کالونی میں کبھی بھی پانی آسکتا ہے ، لیکن اس کے باوجود کوئی قدم نہیں اٹھایا گیا۔ لوگوں نے احتجاج کرکے اپنی ناراضگی کا اظہار کیا ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: عقیدت مندوں کیلئے جموں کے کاروباری اور ٹریول ایجنٹوں نے کیا خصوصی رعایت کا اعلان


      ایک متاثرہ خاتوں نے نم آنکھوں سے اپنی فریاد سنائی ۔ انہوں نے کہا کہ سرکار نے ہمیں ڈل سے نکال کر یہاں بسایا ، مگر یہاں خطرہ ہے اور پوری کالونی میں پانی بھرا ہوا ہے اور کوئی بھی توجہ نہیں دے رہا۔ وہیں مقامی لوگوں کا کہنا تھا کہ متعلقہ حکام کو ہماری کوئی فکر ہی نہیں ہے، کئی مرتبہ گزارش کے باوجود کوئی قدم نہیں اٹھایا گیا۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ وہ اب تنگ آچکے ہیں اور کوئی ان کا سننے والا نہیں ہے ۔

      علاقے میں ایک فٹ سے زائد پانی جمع ہے ، ایسے میں لوگوں کو کافی مشکلات کا سامنا ہے۔ انہوں نے ایک مرتبہ پھر سے ایل جی انتظامیہ سے اپیل کی کہ ان کی طرف توجہ دی جائے اور کوئی ٹھوس اقدام کیا جائے۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: