ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

سابق گورنر جگموہن کی موت کے بعد جموں و کشمیر میں غم کی لہر ، تین دن کے سرکاری سوگ کا اعلان

Jammu and Kashmir News : آنجہانی جگموہن کے انتقال پر جموں و کشمیر میں 3 دن کے سرکاری سوگ کا اعلان کیا گیا ۔ چار سے چھ جون تک یوٹی کی تمام سرکاری عمارتوں پر قومی جھنڈا سرنگوں رہے گا اور اس دوران کسی بھی سرکاری پروگرام کا اہتمام نہیں ہوگا ۔

  • Share this:
سابق گورنر جگموہن کی موت کے بعد جموں و کشمیر میں غم کی لہر ، تین دن کے سرکاری سوگ کا اعلان
سابق گورنر جگموہن کی موت کے بعد جموں و کشمیر میں غم کی لہر ، تین دن کے سرکاری سوگ کا اعلان

جموں و کشمیر : مرکز کے زیر انتظام جموں و کشمیر کے سابق گورنر جگموہن ملہوترا کے انتقال پر یو ٹی انتظامیہ ، سیاست دانوں اور سماج کے ایک بڑے طبقے نے دکھ کا اظہار کیا ہے ۔ 93 سالہ جگموہن کی موت کی خبر ملتے ہی جموں وکشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے آنجہانی لیڈر کے انتقال پر دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ۔ اپنے تعزیتی پیغام میں انہوں نے آنجہانی جگموہن کو ایک دور اندیش ، متحرک اور قابل ایڈمنسٹریٹر قرار دیا ۔ منوج سنہا نے کہا کہ مرحوم کی جموں و کشمیر کے عوام کے تئیں خدمات کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا ۔ آنجہانی جگموہن کے انتقال پر جموں و کشمیر میں 3 دن کے سرکاری سوگ کا اعلان کیا گیا ۔ چار سے چھ جون تک یوٹی کی تمام سرکاری عمارتوں پر قومی جھنڈا سرنگوں رہے گا اور اس دوران کسی بھی سرکاری پروگرام کا اہتمام نہیں ہوگا ۔


انتظامیہ کے ساتھ ساتھ عام لوگوں خاص طور پر کشمیری مائیگرنٹوں نے جگموہن کے انتقال کو ایک بڑا نقصان قرار دیا ۔ آنجہانی لیڈر کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے زیادہ تر لوگوں نے سماجی رابطہ سائٹس فیس بک اور ٹویٹر کا سہارا لیا ۔ لاتعداد کشمیری مائیگرنٹس نے اپنے تعزیتی پیغامات کے ذریعے جگموہن کو نہ صرف ان کی خدمات کے لیے یاد کیا ۔ بلکہ انہیں ایک انسان دوست لیڈر قرار دیا ۔ یوتھ آل انڈیا کشمیری سماج کے صدر آر کے بھٹ نے کہا آج صبح جب جگموہن کے انتقال کی خبر سنی تو دل بہت رنجیدہ ہو گیا ۔ انہوں نے کہا کہ جگموہن ایک بے داغ اور قابل ایڈمنسٹریٹر تھے ، جنہوں نے اپنے آپ کو لوگوں کی خدمت کے لیے وقف رکھا تھا۔




انہوں نے کہا کہ 1990 میں جموں کشمیر میں بگڑے ہوئے حالات پر قابو پانے کےلئے جگموہن نے کافی محنت کی اور وہ اس میں کافی حد تک کامیاب بھی رہے۔ آر کے بھٹ نے کہا کہ جگموہن نے کشمیری پنڈتوں جو اس وقت ملیٹینٹوں کے نشانے پر تھے کہ مدد کے لیے کئ مؤثر قدم اٹھاۓ۔ انہوں نے مزید کہا کہ جگموہن نے ملیٹینسی سے متاثرہ عوام کو راحت پہنچانے کے لیے کچھ ایسے قوانین پاس کرواۓ تاکہ متاثرہ کنمبوں کی پریشانیوں کو کم کیا جا سکے۔

بی جے پی کے سینئر لیڈر اشونی کمار چرنگو نے کہا کہ جگموہن نے اپنے قلم کا استعمال کر کے پاکستانی پشت پناہی والے دہشت گردوں کی طرف سے کشمیری پنڈتوں کی نسل کشی کو اجاگر کیا ۔ چرنگو نے کہا کہ جگموہن کی تحریر کردہ کتاب مائی فروزن ٹربلنس ان کشمیر میں کشمیری پنڈتوں کے دکھ درد کو شامل کر کے مرحوم لیڈر نے کشمیری پنڈت سماج کیلئے ایک ناقابل فراموش کارنامہ انجام دیا۔ چرنگو نے کہا کہ مرحوم جگموہن نے کشمیری پنڈتوں کی آواز اس وقت بڑے ایوانوں تک پہنچائی ، جب ان کی آواز کو آگے بڑھانے اور سننے والا موجود نہیں تھا ۔

واضح رہے کہ جگموہن ملہوترا دو بار جموں و کشمیر کے گورنر رہ چکے ہیں ۔ پہلی مرتبہ انہیں 1984 میں جموں و کشمیر کا گورنر مقرر کیا گیا تھا اور وہ 5 سال تک اس عہدے پر فائز رہے ۔ دوسری مرتبہ 1990 میں جگموہن کو دوبارہ جموں و کشمیر کا گورنر تعینات کیا گیا ۔ تاہم چند ماہ کے بعد ہی انہیں اس عہدے سے ہٹادیا گیا۔ جگموہن کا انتقال پیر کی رات نئی دلی میں مختصر علالت کے بعد انتقال ہو گیا۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: May 04, 2021 06:01 PM IST