உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں و کشمیر : کولگام میں فاسلز کی کروڑوں برس پرانی سائٹ دریافت

    جموں و کشمیر : کولگام میں فاسلز کی کروڑوں برس پرانی سائٹ دریافت

    جموں و کشمیر : کولگام میں فاسلز کی کروڑوں برس پرانی سائٹ دریافت

    Jammu and Kashmir News : محکمہ تعلیم میں کام کرنے والے دو لیکچررز نے اس کی کھوج کا دعویٰ کیا ہے ۔ ڈاکٹر روف حمزہ اور منظور جاوید کے مطابق یہ فاسلسس کی سب سے بڑی سائٹ ہو سکتی ہے ، جہاں طرح طرح کے فاسلس پائے جا رہے ہیں ۔

    • Share this:
    کولگام: ریاست جموں و کشمیر کی تاریخ میں ایک اہم کھوج کے تحت Fossils یعنی جیواشم کی بہت بڑی سائٹ دریافت کرنے کا دعویٰ کیا گیا ہے ۔ جیو سائنس میں دلچسپی رکھنے والے سائنس دانوں اور محقیقین کے لیے ایک اہم خوش خبری یہ کہ اہرہ بل کولگام میں Fossils یعنی جیواشم کی سب سے بڑی سائٹ دریافت کی گئی ہے اور دریافت کرنے والوں کا دعویٰ ہے کہ یہ سائٹ ریاست جموں و کشمیر کی سب سے بڑی فاسلس کی سائٹ ہو سکتی ہے ، جہاں 488-354 ملین سالوں کے فاسلسس دریافت کئے گئے ہیں ۔

    محکمہ تعلیم میں کام کرنے والے دو لیکچررز نے اس کی کھوج کا دعویٰ کیا ہے ۔ ڈاکٹر روف حمزہ اور منظور جاوید کے مطابق یہ فاسلسس کی سب سے بڑی سائٹ ہو سکتی ہے ، جہاں طرح طرح کے فاسلس پائے جا رہے ہیں ۔ ادھر دریافت کے فورا بعد محکمہ آثار قدیمہ ، جنگلات اور متعلقہ محکموں کے افسران نے جائے وقوع کا دورہ کیا اور یہاں اس کھوج کے حوالے سے مزید معلومات حاصل کیں۔

    ریاستی حکومت کے سکریٹری اور سابق ڈایریکٹر آثار قدیمہ ڈاکٹر منیر الاسلام کا کہنا ہے کہ موقع پر یہ ظاہر ہو رہا ہے کہ یہ فاسلز کروڑوں برس پہلے کے ہیں تاہم مزید تحقیق کی گنجائش ہے۔ ادھر محکمہ آثار قدیمہ کے ڈپٹی ڈائریکٹر مشتاق احمد بیگ کے مطابق فاسلز کی سائٹ پر کروڑوں سال پہلے کے آثار نمایاں ہوئے ہیں ۔ تاہم کاربن ڈیٹنگ کے زریعہ ان کی عمر اور مزید تحقیقات کرنے کی ضرورت ہے ۔

    محکمہ کے مطابق اس پر جلد کام شروع ہوگا اور سائٹ پر ایک میوزیم کی تعمیر کا کام عمل میں لایا جائے گا ۔ تاکہ دنیا بھر کے سائنس دان اور جیو سائنس کے محقیقن و طلبہ سائٹ کا دورہ کریں اور مزید معلومات حاصل کریں ۔ سائٹ کو دریافت کرنے کے بعد محکمہ جنگلات کے ڈی ایف او وسیم گُل نے کہا کہ جنگلاتی علاقہ میں وسیع پیمانے پر فاسلز ہو سکتے ہیں اور یہ علاقہ کافی زرخیز ہے ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: