உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کشمیر میں 24 گھنٹے میں 4 Terrorist Attack، ایک کشمیری پنڈت سمیت 6 افراد زخمی، ایک شہید 

    Youtube Video

    Jammu & Kashmir News: پہلی واردات کل شام کو پیش آئی جس میں دو افراد کو گولی ماری گئی۔ پلوامہ Pulwama میں دو ڈرائیوروں پر گولیاں چلائی گئیں جس میں وہ زخمی ہوئے۔ اس کے بعد آج دوپہر کو پلوامہ کے ہی لاجورہ علاقے میں دو غیر ریاستی مزدوروں کو گولی مارکر زخمی کردیا گیا۔

    • Share this:
    سرینگر: وادی کشمیر Kashmir Valley میں پچھلے 24 گھنٹے میں چار دہشت گردانہ حملوں ( Terrorist Attack) میں ایک سی آر پی ایف CRPF اہلکار  مارا گیا اور پانچ دیگر افراد  دہشت گردوں کی گولیوں کا نشانہ بن کر زخمی ہوگئے۔  پہلی واردات کل شام کو  پیش آئی جس میں دو افراد کو گولی ماری گئی۔ پلوامہ Pulwama میں  دو ڈرائیوروں پر گولیاں چلائی گئیں جس میں وہ زخمی ہوئے۔ انھیں اسپتال میں بھرتی کرایا گیا اور اب ان کی حالت مستحکم بتائی جارہی ہے۔ اس کے بعد آج دوپہر کو پلوامہ کے ہی لاجورہ علاقے میں دو غیر ریاستی مزدوروں کو گولی مار کر زخمی کیا گیا جو ابھی اسپتال میں  ہیں۔  ان دو مزدوروں کا تعلق بہار سے ہے جو یہاں پر مزدوری کرتے ہیں۔

    پتلیشور کمار نامی ایک مزدور نے کہا کہ وہ دوپہر کے کھانے کے بعد وہ سو رہے تھے کہ دہشت گرد وہاں آئے اور گولیاں چلانا شروع کردی۔دونوں مزدوروں کی حالت اب بہتر  ہے۔ شام کے قریب سرینگر میں تیسرا حملہ کیا گیا۔ مائسمہ میں ملی ٹنٹوں نے سی آر پی ایف کی ٹکڑی پر فائرنگ کردی ۔ دو سی آر پی ایف کے اہلکار گولی لگنے سے زخمی ہوئے۔ دونوں کو فوری طور اسپتال پہنچایا گیا لیکن ایک ہیڈ کانسٹیبل زخموں کی تاب نہ لاکر چل بسا۔

    شہید ہوئے سی آر پی ایف اہلکار کی پہچان 132 بٹالین سی آر پی ایف کے ہیڈ کانسٹیبل وشال کے طور ہوئی ہے۔ دوسرے زخمی سی آر پی ایف اہلکار کی حالت مستحکم بتائی جارہی ہے۔ دیر شام  جنوبی کشمیر کے شوپیاں علاقہ میں ایک کشمیری پنڈت کو گولیاں مار کر زخمی کر دیا گیا۔
    جموں۔کشمیر: سرینگر دہشت گردانہ حملے میں CRPF کے 2 جوان شہید، پلوامہ میں بہار کے دو مزدور زخمی

    GP Bomb: مدھیہ پردیش نے بنایا ملک کا سب سے بڑا بم، ایک جھٹکے میں اڑادے گا پاکستان۔چین کا کوئی بھی حصہ: تفصیل جانئے

    بالا کرشن Bala krishan نامی ایک کشمیری پنڈت کو چھوٹہ گام نامی گاؤں میں اپنی ہی دکان میں گولی مار دی گئی۔ سنیل کو زخمی حالت میں اسپتال پہنچایا گیا۔ زخمی شخص کی حالت مستحکم بتائی جا رہی کئے لیکن عام شہریوں پر بڑھ رہے ملی ٹنٹوں حملوں کی وجہ سے سیکورٹی ایجنسیوں کو پریشانی کا سامنا ہے کیونکہ سافٹ ٹارگیٹ پر حملہ کرنے کی وجہ سے ان کا کام مشکل ہو جاتا ہے۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: