உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    غلام نبی آزاد اور ان کی نئی سیاسی پارٹی جموں و کشمیر کے سیاسی منظر نامہ پر کتنا ہوسکتی ہے اثر انداز؟ جانئے کیا کہتے ہیں سیاسی تجزیہ کار

    غلام نبی آزاد اور ان کی نئی سیاسی پارٹی جموں و کشمیر کے سیاسی منظر نامہ پر کتنا ہوسکتی ہے اثر انداز؟ جانئے کیا کہتے ہیں سیاسی تجزیہ کار

    غلام نبی آزاد اور ان کی نئی سیاسی پارٹی جموں و کشمیر کے سیاسی منظر نامہ پر کتنا ہوسکتی ہے اثر انداز؟ جانئے کیا کہتے ہیں سیاسی تجزیہ کار

    Jammu and Kashmir : جموں و کشمیر میں فعال سیاست میں غلام نبی آزاد کے داخلے کے ساتھ ہی سیاسی حلقوں میں ایک نئی بحث چھڑ گئی ہے کہ آزاد اور ان کی جماعت جموں و کشمیر کے مجموعی سیاسی منظر نامے پر کس طرح اثر انداز ہوگی۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Jammu and Kashmir | Jammu | Srinagar
    • Share this:
    جموں و کشمیر : کانگریس کو الوداع کہنے کے بعد سینئر سیاستدان غلام نبی آزاد نے اعلان کیا کہ وہ جموں و کشمیر پر اپنی بنیادی توجہ کے ساتھ اپنی سیاسی پارٹی بنائیں گے۔ 4 ستمبر کو جموں میں اپنی پہلی عوامی میٹنگ میں آزاد نے اپنی نئی پارٹی کے ایجنڈے کا اعلان کیا۔ ان کی نئی پارٹی کا مرکزی ایجنڈا جموں و کشمیر سے متعلق سیاسی اور ترقیاتی دونوں پہلوؤں پر تھا۔ جموں و کشمیر میں فعال سیاست میں ان کے داخلے کے ساتھ ہی سیاسی حلقوں میں ایک نئی بحث چھڑ گئی ہے کہ غلام نبی آزاد اور ان کی جماعت جموں و کشمیر کے مجموعی سیاسی منظر نامے پر کس طرح اثر انداز ہوگی۔ سیاسی تجزیہ نگاروں کا ماننا ہے کہ آزاد کا جموں و کشمیر میں فعال سیاست جموں وکشمیر کے مجموعی سیاسی منظر نامے پراثر انداز ہوگا ۔

     

    یہ بھی پڑھئے: پوش کریری اننت ناگ میں انکاونٹر کے دوران حزب المجاہدین کے دو دہشت گرد ہلاک


    معروف سیاسی تجزیہ کار پرکشیت منہاس نے کہا کہ " غلام نبی آزاد کی نئی پارٹی بنانے سے رائے دہندوں کو ایک اور متبادل ملے گا اور اس طرح یہ یوٹی کی موجودہ سیاسی جماعتوں کے لیے ایک چیلنج بن جائے گا، میں سمجھتاہوں کہ اس طرح کے سیاسی رہنما کے جموں وکشمیر کی سیاست میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینے سے جموں وکشمیر کی سیاست پر بہت بڑا اثر پڑے گا، جموں وکشمیر کے ووٹروں کو ایک اور متبادل پارٹی فراہم کرے گا اور یہ موجودہ سیاسی پارٹیوں کے ووٹ شیئر کو متاثر بھی کرے گا۔ آزاد ایک سینئر سیاستدان ہونے کے ناطے دیگر سیاسی جماعتوں کے لیے ایک چیلنج بنیں گے، اس لیے اس کا اثر یقینی طور پر پڑے گا۔"

     

    یہ بھی پڑھئے: PoK سے دراندازی کیلئے ISI نے بنائے ہیں 9 لانچنگ پیڈس، 150 دہشت گردوں کو کیا تیار


    کانگریس سے استعفیٰ دینے کے بعد پارٹی کے بہت سے رہنما غلام نبی آزاد کے ساتھ شامل ہو گئے، لیکن اب سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ کیا غلام نبی آزاد مستقبل قریب میں دیگر سیاسی جماعتوں کے لیڈروں اور کارکنوں کو متاثر کر سکتے ہیں۔ نیوز 18 سے بات کرتے ہوئے پریکشت منہاس نے کہا کہ " ایسا لگتا ہے کہ دیگر پارٹیوں کے رہنما آزاد کی پارٹی میں شامل ہوں گے ۔ تاہم یہ اس بات پر منحصر ہے کہ آزاد اپنے مستقبل کے منصوبے کیسے تیار کرتے ہیں۔ تاکہ دوسری جماعتوں کے رہنما ان کے ساتھ شامل ہوں۔ دیگر پارٹیوں کے رہنماؤں کا غلام نبی آزاد کی سیاسی پارٹی میں شامل ہونا اس بات پر منحصر ہوگا کہ وہ عوام کی نبض کیسے پکڑتے ہیں اور اپنے انتخابی منشور کو تشکیل دیتے ہیں ۔ تاہم یہ بات یقینی ہے کہ مختلف سیاسی لیڈروں کی جانب سے اپنی پارٹیاں چھوڑ کر دیگر پارٹیوں میں شمولیت کرنے کا سلسلہ یوٹی میں اسمبلی انتخابات تک جاری رہے گا۔اور کئی سیاسی لیڈران آزاد کی پارٹی میں بھی شامل ہو سکتے ہیں"۔

    قابل ذکر بات یہ ہے کہ غلام نبی آزاد 04 ستمبر 2022 کو اپنی آمد کے بعد سے جموں و کشمیر میں ڈیرہ ڈالے ہوئے ہیں۔ وہ لوگوں کے مختلف علاقوں کے وفود سے ملاقات کر رہے ہیں ۔ تاکہ لوگوں کے ساتھ قریبی تال میل قائم کرکےزمینی سطح کے سیاسی حالات سے متعلق واقفیت حاصل کر سکے۔ غلام نبی آزاد گزشتہ چند دنوں میں جموں میں اپنے قیام کے دوران  مختلف عوامی وفود سے بات چیت کرنے کے بعد 08 ستمبر 2022 سے  تین دن کے لیے وادی چناب کا دورہ کرنے والے ہیں ، جس کے بعد وہ وادی کشمیر روانہ ہوں گے، جہاں انہیں عوامی میٹنگیوں سے خطاب کرنے کا پروگرام ہے۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: