உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    غلام نبی آزاد کی پارٹی پرتنقید، کہا- مجھ سے بغیر مشورہ کئے تیار کی گئی کانگریس کمیٹی کی فہرست

    جموں وکشمیر کانگریس یونٹ میں عہدہ ملنے پر ناراض ہوئے غلام نبی آزاد۔ (فائل فوٹو)

    جموں وکشمیر کانگریس یونٹ میں عہدہ ملنے پر ناراض ہوئے غلام نبی آزاد۔ (فائل فوٹو)

    کانگریس پارٹی کے سینئر لیڈر غلام نبی آزاد ایک بار پھر پارٹی سے ناراض ہوگئے ہیں۔ غلام نبی آزاد نے پھر سے کانگریس کی جموں وکشمیر اکائی کا حصہ بننے سے انکار کرتے ہوئے پارٹی کے اندر جنگ کا بگل بجا دیا ہے۔

    • Share this:
      سری نگر: کانگریس پارٹی کے سینئر لیڈر غلام نبی آزاد ایک بار پھر پارٹی سے ناراض ہوگئے ہیں۔ غلام نبی آزاد نے پھر سے کانگریس کی جموں وکشمیر اکائی کا حصہ بننے سے انکار کرتے ہوئے پارٹی کے اندر جنگ کا بگل بجا دیا ہے۔ ساتھ ہی انہوں نے دعویٰ کیا ہے کہ تنظیم کے لئے تقرری کو لے کر پارٹی کے ذریعہ ان سے مشورہ نہیں لیا گیا تھا۔

      گزشتہ منگل کی دیر رات انہوں نے اپنے پی اے کے ذریعہ سونیا گاندھی کو ایک خط بھجواکر کمیٹی میں کسی بھی ذمہ داری کو لینے سے انکار کردیا ہے۔ دراصل، غلام نبی آزاد کو جموں وکشمیر انتخابی کمیٹی کا چیئرمین اور ریاستی سیاسی امور کی کمیٹی کا رکن بنایا گیا، لیکن انہوں نے اس کا حصہ بننے سے انکار کردیا ہے۔

      کانگریس ذرائع نے کہا کہ غلام نبی آزاد سے چار بار مشورہ لیا گیا تھا اور آخری بار 14 جولائی کو بات چیت ہوئی تھی۔ ذرائع نے کہا کہ کانگریس صدر سونیا گاندھی نے غلام نبی آزاد کے ذریعہ دی گئی فہرست میں سے ناموں کا انتخاب کیا۔ اس درمیان خبر آئی کہ غلام نبی آزاد تشہیری کمیٹی کے سربراہ کے طور پر منتخب کئے جانے سے ناخوش تھے کیونکہ انہیں لگا کہ یہ ان کی سینئرٹی سے کم ہے۔

      ذرائع نے کہا کہ آزاد تب تشہیری کمیٹی کے چیئرمین تھے، جب سیف الدین سوز ریاستی کانگریس صدر تھے۔ غلام نبی آزاد کو اس بات سے بھی ناراض بتایا گیا تھا کہ انہیں طارق انور کرا کے تحت سیاسی معاملوں کی کمیٹی کا حصہ بنایا گیا تھا۔ ذرائع نے کہا کہ غلام نبی آزاد نے اسائنمنٹ نہیں لینے کے لئے صحت کی خرابی کا حوالہ دیا تھا۔ غلام نبی آزاد نے 23 لیڈران کے گروپ کی قیادت کی تھی، جنہوں نے قیادت کے موضوع کے بارے میں سونیا گاندھی کو خط لکھا تھا۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      Jammu and Kashmir: غلام نبی آزاد کے استعفیٰ کے بعد جموں وکشمیر کانگریس میں انتشار 

      یہ بھی پڑھیں۔

      jammu and kashmir: غلام نبی آزاد ان ناراض ہونے کی 1نہیں 5 وجوہات ہیں، جانئے اصل کہانی

      کانگریس کے تنظیمی جنرل سکریٹری کے سی وینو گوپال کی طرف سے جاری پریس ریلیز کے مطابق، سونیا گاندھی نے جموں وکشمیر کانگریس کمیٹی کے لئے انتخابی مہم کمیٹی اور سیاسی امور کمیٹی (پی اے سی) سمیت سات کمیٹیوں کی بھی تشکیل کی۔ کے سی وینو گوپال نے کہا کہ سونیا گاندھی نے غلام احمد میر کا ریاستی صدر عہدے سے استعفیٰ منظور کرلیا اور ان کے مقام پر رسول وانی کو صدر مقرر کیا۔ غلام نبی آزاد کے قریبی مانے جانے والے رسول وانی ریاستی کانگریس کے سینئر لیڈر ہیں اور بانیہال سے رکن اسمبلی رہ چکے ہیں۔

      راجیہ سبھا کے سابق اپوزیشن لیڈر غلام نبی آزاد کو انتخابی تشہیری کمیٹی کا سربراہ بنایا گیا ہے۔ انہیں پی اے سی میں بھی جگہ دی گئی ہے۔ غلام نبی آزاد کانگریس کی ’جی 23′ گروپ کے سربراہ رہے ہیں۔ ان نئی تقرریوں سے یہ محسوس ہوتا ہے کہ کانگریس اعلیٰ کمان اور آزاد کے درمیان رشتے بہتر ہوئے ہے۔ غلام نبی آزاد نے 15 اگست کو راہل گاندھی کے ساتھ ’آزادی گورو یاترا‘ میں بھی حصہ لیا۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: