ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

وسطی کشمیر کے پکھرپورہ میں گرینیڈ حملہ، دو سیکورٹی اہلکاروں سمیت 6 افراد زخمی

سرکاری ذرائع نے بتایا کہ ضلع بڈگام کے پکھرپورہ میں ملٹینٹوں نے 181 بٹالین سی آر پی ایف اور جموں وکشمیر پولیس کی ایک مشترکہ پارٹی کو نشانہ بناکر گرینیڈ داغا۔

  • UNI
  • Last Updated: May 05, 2020 03:58 PM IST
  • Share this:
وسطی کشمیر کے پکھرپورہ میں گرینیڈ حملہ، دو سیکورٹی اہلکاروں سمیت 6 افراد زخمی
فائل فوٹو

سری نگر۔ وسطی کشمیر میں ضلع بڈگام کے پکھرپورہ علاقہ میں منگل کو ملٹینٹوں کی طرف سے کئے گئے گرینیڈ حملے میں ایک پولیس افسر، ایک سینٹرل ریزرو پولیس فورس (سی آر پی ایف) اہلکار اور چار عام شہریوں سمیت کم از کم آدھ درجن افراد زخمی ہوگئے۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ ضلع بڈگام کے پکھرپورہ میں ملٹینٹوں نے 181 بٹالین سی آر پی ایف اور جموں وکشمیر پولیس کی ایک مشترکہ پارٹی کو نشانہ بناکر گرینیڈ داغا۔

انہوں نے کہا کہ گرینیڈ زمین پر گرنے کے ساتھ ہی ایک زودار دھماکے کے ساتھ پھٹ گیا جس کے نتیجے میں پولیس کا ایک اسسٹنٹ سب انسپکٹر غلام رسول، سی آر پی ایف کانسٹیبل سنتوش کمار اور چار عام شہری زخمی ہوئے۔ زخمیوں میں دو خواتین بھی شامل ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ سبھی زخمیوں کو فوری طور پر سب ضلع ہسپتال پکھرپور لے جایا گیا جہاں سے چار کو سری نگر کے ایس ایم ایچ ایس ہسپتال منتقل کیا گیا ہے۔



انہوں نے مزید کہا کہ سیکورٹی فورسز نے حملے کے فوراً بعد علاقے کو محاصرے میں لیکر تلاشی آپریشن شروع کر دیا۔ ایک رپورٹ میں ایس ایس پی بڈگام امود ناگپوری کے حوالے سے کہا گیا ہے کہ ملٹینٹوں کی طرف سے یہ گرینیڈ حملہ پکھرپور مارکیٹ میں کیا گیا۔ انہوں نے مزید کہا ہے کہ حملے میں زخمی ہونے والے سبھی افراد کی حالت خطرے سے باہر ہے۔
First published: May 05, 2020 03:58 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading