ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں وکشمیر: بی جے پی کی ریلی سے قبل دہشت گردوں نے کیا اپنی موجودگی کا اظہار، دن دھاڑے ڈیوٹی پر معمور سیکورٹی فورسز پر کیا گرینیڈ حملہ ایک اہلکار زخمی

جنوبی کشمیر کے مصروف ترین علاقے بجبہاڑہ اننت ناگ میں دہشت گردوں نے دن دھاڑے ڈیوٹی پر معمور سیکورٹی فورسز پر گرینیڈ حملہ کرکے اپنی موجودگی کا اظہار کیا۔ یہ حملہ اس وقت انجام دیا گیا، جب اسی علاقے میں بی جے پی کی ریلی منعقد ہونے جا رہی تھی اور ریلی میں بی جے پی کے قومی ترجمان سید شاہنواز حسین اور وبود گپتا اور صوفی محمد یوسف سمیت کئ اعلیٰ لیڈران کی آمد کے پارٹی کارکن منتظر تھے۔

  • Share this:
جموں وکشمیر: بی جے پی کی ریلی سے قبل دہشت گردوں  نے کیا اپنی موجودگی کا اظہار، دن دھاڑے ڈیوٹی پر معمور سیکورٹی فورسز پر کیا گرینیڈ حملہ ایک اہلکار زخمی
جموں وکشمیر: بی جے پی کی ریلی سے قبل دہشت گردوں نے کیا اپنی موجودگی کا اظہار، دن دھاڑے ڈیوٹی پر معمور سیکورٹی فورسز پر کیا گرینیڈ حملہ ایک اہلکار زخمی

جموں کشمیر: جنوبی کشمیر کے مصروف ترین علاقے بجبہاڑہ اننت ناگ میں دہشت گردوں نے دن دھاڑے ڈیوٹی پر معمور سیکورٹی فورسز پر گرینیڈ حملہ کرکے اپنی موجودگی کا اظہار کیا۔ یہ حملہ اس وقت انجام دیا گیا، جب اسی علاقے میں بی جے پی کی ریلی منعقد ہونے جا رہی تھی اور ریلی میں بی جے پی کے قومی ترجمان سید شاہنواز حسین اور وبود گپتا اور صوفی محمد یوسف سمیت کئ اعلیٰ لیڈران کی آمد کے پارٹی کارکن منتظر تھے۔


حملے میں سی آر پی ایف 40 ویں بٹالین کے پاٹل پرمبر نامی جوان زخمی ہو گئے، جنہیں علاج و معالجہ کےلئے اسپتال میں داخل کرایا گیا اور ڈاکٹروں کے مطابق مذکورہ جوان کی حالت مستحکم ہے۔ حملے کے بعد فورسز نے پورے علاقے کا محاصرہ کیا اور مفرور حملہ آور ملیٹینٹوں کی تلاش بڑے پیمانے پر شروع کر دی۔ دوسری جانب بی جے پی کے قومی ترجمان سید شاہنواز حسین اور دیگر لیڈران شیڈول کے مطابق بی جے پی کی  ریلی میں پہنچے اور پارٹی کارکنوں سے خطاب کیا۔


اس موقع پر سید شاہنواز نے کہا کہ یہ بی جے پی کی ریلی میں رخنہ ڈالنے اور اسے ناکام بنانے کے لئے دہشت گردوں کی جانب سے ایک حربہ تھا، جس کو ناکام بنا دیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی کے سپاہی اس طرح کے حربوں سے ڈرنے والے نہیں ہیں اور یہی وجہ ہے کہ علاقے میں دہشت گردانہ حملے کے باوجود بھی یہ ریلی کامیاب ترین ثابت ہوئی۔ شاہنواز حسین نے مزید کہا کہ دہشت گردوں کو بندوق کی راہ ترقی کر کے قومی دھارے میں شامل ہونا چاہئے اور بی جے پی ان نوجوانوں کے ہاتھوں میں بندوق کے بجائے قلم دیکھنا چاہتی ہے۔ دریں اثنا پولیس نے بجبہاڑہ حملے کے ضمن میں ایک معاملہ درج کرکے مزید تحقیقات شروع کر دی ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ اس حملے میں ملوث دہشت گردوں کا سراغ جلد ہی لگایا جائے گا۔

Published by: Nisar Ahmad
First published: Dec 17, 2020 04:31 PM IST