உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    الطاف احمد اور مدثر گل کے گھر والوں کو پریس کولونی سے ہٹادیا گیا، حیدرپورہ انکاؤنٹر کی مجسٹریل انکوائری کا حکم

    Youtube Video

    انصاف اور لاشیں حوالے کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے الطاف اور مدثر کے اہل خانہ اور چند مقامی افراد نے پریس کالونی میں کینڈل لائٹ احتجاج کیا تھا جس کے بعد وہ دیر رات تک وہیں پر موجود تھے۔

    • Share this:
      الطاف احمد اور ڈاکٹر مدثر گل کے ارکان کو بیتی شب پریس کالونی سرینگر سے بزور ہٹادیاگیا۔ انھیں حراست میں لیاگیا تھا اور بعد میں رہا کردیاگیا۔ انصاف اور لاشیں حوالے کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے الطاف اور مدثر کے اہل خانہ اور چند مقامی افراد نے پریس کالونی میں کینڈل لائٹ احتجاج کیا تھا جس کے بعد وہ دیر رات تک وہیں پر موجود تھے۔ پولیس نے احتجاجیوں کو وہاں سے ہٹانے کی کوشش کی تاہم ان لوگوں نے مزاحمت کی ۔ تاہم بعد میں پولیس نے انھیں ہٹادیا اور انھیں حراست میں لے لیا۔ سیاست داں عمر عبداللہ، سجاد غنی لون سمیت دیگر سیاست دانوں نے پولیس کی اس کاروائی کی مذمت کی۔ انتظامیہ نے پریس کالونی کو سیل کردیا ہے اور شناختی کارڈ دکھانے پر ہی صحافیوں کو جانے کی اجازت دی گئی۔

      وہیں جموں و کشمیر کے حیدرپورہ انکاؤنٹر کی مجسٹریل انکوائری کا حکم دیاگیا۔اے ڈی ایم رینک کے افسر کے ذریعہ تحقیقات کی جائے گی ۔ تحقیقات کے بعد حکومت مناسب کاروائی کرے گی۔جموں کشمیر کے ایل جی منوج سنہا نے کہا کہ انتظامیہ معصوم شہریوں کی جانوں کے تحفظ کے عزم کا اعادہ کرتی ہے۔کوئی ناانصافی نہیں ہوگی۔

      جموں کشمیر پیپلز کانفرنس نے آج سرینگر میں احتجاجی مارچ نکالا اور حیدرپورہ انکاؤنٹر میں ہلاک افراد کے گھر والوں کو لاشیں حوالے کرنے کا مطالبہ کیا۔ پیپلز کانفرنس لیڈر خورشید عالم کی قیادت میں یہ احتجاج کیاگیا۔ انہوں نے وزیراعظم سے اس معاملے میں مداخلت کرنے اور متاثرہ خاندانوں کو انصاف دلانے کی مانگ کی ۔احتجاجیوں نے سڑک پر نکلنے کی کوشش کی تاہم پولیس نے انھیں سنگرمال کامپلکس سے باہر نکلنے نہیں دیا۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: