உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    J&K News: کشمیر کے مختلف علاقوں میں شدید ژالہ باری،میوہ فصلوں کو شدید نقصان

    J&K News: کشمیر کے مختلف علاقوں میں شدید ژالہ باری،میوہ فصلوں کو شدید نقصان

    J&K News: کشمیر کے مختلف علاقوں میں شدید ژالہ باری،میوہ فصلوں کو شدید نقصان

    Jammu and Kashmir : جمعرات کے روز دوپہر کے بعد آسمان اچانک ابر آلود ہوگیا اور بارشوں کے ساتھ ساتھ شدید ژالہ باری شروع ہوگئی۔ پندرہ منٹ تک جاری رہنے والے اس طوفان سے میوہ فصلوں کو شدید نقصان پہنچا ہے ۔

    • Share this:
    جموں و کشمیر : کئی دنوں سے کشمیر میں موسم میں تغیر و تبدیلی دیکھنے کو مل رہی ہے۔ جہاں دن میں گرمی کی شدت رہتی ہے تو وہیں دوپہر کے بعد موسم خراب ہوتا ہے اور آسمان ابر آلود ہوجاتا ہے۔ آج جمعرات کے روز بھی ایسا ہی کچھ ہوا اور دوپہر کے بعد آسمان اچانک ابر آلود ہوگیا اور بارشوں کے ساتھ ساتھ شدید ژالہ باری شروع ہوگئی۔ پندرہ منٹ تک جاری رہنے والے اس طوفان سے میوہ فصلوں کو شدید نقصان پہنچا ہے، جس سے کاشت کاروں کی کمر ٹوٹ گئی ہے اور ان کی محنت پر پانی پھر گیا ہے۔ ان دنوں میں کشمیر کے مختلف مقامات پر چیری اتارنے کا کام اپنے عروج پر ہے۔ ژالہ باری سے اس تیار فصل کو بھی نقصان ہواہے۔

    یہ بات قابل ذکر ہے کہ کشمیر میں میوہ فصل شگوفوں سے نکل آیا ہے۔ اس دوران اس فصل کی حفاظت انتہائی اہم مانی جاتی ہے ۔ تاہم جب تیز ہوائیں اور شدید ژالہ باری ہوتی ہے، تواس فصل کا بچنا کافی مشکل ہوجاتا ہے۔ کشمیر میں گزشتہ ایک دو مہینے میں کئی مرتبہ شدید ژالہ باری ہوئی، جس سے میوہ صنعت کو کافی نقصان ہواہے۔ آج تیز ہواؤں کی وجہ سے رہائشی مکانات کو بھی نقصان ہواہے۔ کچھ لوگ کھلے آسمان کے نیچے آگئے۔

     

    یہ بھی پڑھئے: چاڈورہ بڈگام میں خاتون آرٹسٹ کو ملی ٹینٹوں نے گولی مار کر ہلاک کردیا


    شمالی کشمیر کے ضلع بارہمولہ کے ٹنگمرگ، کنزر، پٹن کے علاوہ دیگر علاقوں میں شدید ژالہ باری سے میوہ صنعت متاثر ہوئی۔ اسی طرح وسطیٰ کشمیر کے ضلع بڈگام کے بیروہ، ماگام اور نارہ بل میں نقصان ہواہے۔ میوہ صنعت سے وابستہ افراد نے سرکار اور متعلقہ محکمہ سے اپیل کی کہ نقصان کا تخمینہ لگایا جائے اور متاثرین کو معاوضہ فراہم کیاجائے۔

     

    یہ بھی پڑھئے:  لشکر طیبہ کے 3دہشت گرد ڈھیر، دراندازی کی کررہے تھےکوشش، فوج نے کی ناکام


    عبدالرشید نامی ایک کاشت کار نے نیوز18 اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے اس بار سیب کے باغات میں کافی محنت کی اور گزشتہ کئی مہینوں میں ہوئی ژالہ باری سے ہوئے نقصان سے ان کی تمام محنت پر پانی پھر گیا۔ وہ انتہائی مایوس تھے کیونکہ ان کے روزگار کا دارومدار اسی میوہ صنعت پر ہے۔ ایک اور منظور احمد نامی کاشت کار نے نیوز18 اردو کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ بے وقت بارشوں اور ژالہ باری سے ان کے فصلوں کو کافی نقصان ہورہا ہے۔ جس سے ان کی روزی روٹی متاثر ہوئی۔

    انہوں نے کہا کہ سرکار کو ایسے لوگوں کو اپنی جگہ پر کھڑا کرنے کے لئے اقدامات کرنے چاہئیں ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: