உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    J&K News: جی 20 ممالک کا 2023 اجلاس کشمیر میں منعقد کروانا سفارتی سطح پر ہندوستان کی بڑی کامیابی ہوگی ثابت ، امور خارجہ سے متعلق ماہرین کی رائے

    J&K News: جی 20 ممالک کا 2023 اجلاس کشمیر میں منعقد کروانا سفارتی سطح پر ہندوستان کی بڑی کامیابی ہوگی ثابت ، امور خارجہ سے متعلق ماہرین کی رائے

    J&K News: جی 20 ممالک کا 2023 اجلاس کشمیر میں منعقد کروانا سفارتی سطح پر ہندوستان کی بڑی کامیابی ہوگی ثابت ، امور خارجہ سے متعلق ماہرین کی رائے

    Jammu and Kashmir : جی 20 ممالک کے عالمی سطح کے اجلاس کی کچھ میٹنگیں تاریخی اہمیت کی حامل ہوں گی۔ وادی کشمیر میں ماضی میں اس نوعیت کا عالمی اجلاس کبھی بھی منعقد نہیں ہوا ہے۔ امور خارجہ سے متعلق ماہرین مانتے ہیں کہ یہ میٹنگیں کشمیر میں منعقد کروانا سفارتی سطح پر ہندوستان کی ایک بڑی کامیابی ہے۔

    • Share this:
    جموں و کشمیر : جی 20 ممالک کے عالمی سطح کے اجلاس کی کچھ میٹنگیں تاریخی اہمیت کی حامل ہوں گی۔ وادی کشمیر میں ماضی میں اس نوعیت کا عالمی اجلاس کبھی بھی منعقد نہیں ہوا ہے۔ امور خارجہ سے متعلق ماہرین مانتے ہیں کہ یہ میٹنگیں کشمیر میں منعقد کروانا سفارتی سطح پر ہندوستان کی ایک بڑی کامیابی ہے۔ جموں وکشمیر کے سینئر صحافی اور خارجی معاملات کے ماہر بشیر منظر کا کہنا ہے کہ کشمیر میں جی 20 ممالک کی میٹنگ منعقد کروانا ہندوستان کے لئے سفارتی سطح پر ایک بڑی جیت ہوگی۔ نیوز18 اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جی 20 عالمی اجلاس کی میٹنگیں کشمیر میں منعقد کروانے سے ہندوستان عالمی سطح پر پاکستان کے مقابلے میں مضبوط ہوکر ابھرے گا۔ یہ قدم عالمی سطح پر کشمیر سے متعلق پاکستان کے موقف کو کمزور کرے گا ۔ ماضی میں مختلف ممالک کے سفارت کار وقتاً فوقتاً کشمیر کا دورہ کرتے رہے ہیں، تاہم وہ الگ مشنوں کے تحت کشمیر آیا کرتے تھے، لیکن حکومت ہند کی جانب سے منعقد ہونے والے اس عالمی اجلاس کی میٹنگوں میں جی 20 ممالک کے لیڈران کی شرکت سے ہندوستان کے اس موقف کو مضبوطی ملے گی جموں وکشمیر ہندوستان کا ہی حصہ ہے ۔

     

    یہ بھی پڑھئے: اتراکھنڈ کے سیاح کی جان بچانے کیلئے کشمیری ٹورسٹ گائیڈ نے دے دی اپنی جان


    اس سوال کے جواب میں کہ کشمیر میں اجلاس کے انعقاد سے پاکستان پر کیا اثر پڑے گا، بشیر منظر نے کہا کہ پاکستان کشمیر کے بارے میں عالمی سطح پر اپنی بات رکھنے سے پیچھے ہٹ نہیں سکتا تاہم اس اجلاس کے کشمیر میں انعقاد کے بعد اس کا موقف کمزور پڑے گا ۔ جموں وکشمیر میں جاری دہشت گردی پراس اجلاس کے منعقد کئے جانے کے اثرات کے بارے میں پوچھے گئے ایک سوال کے جواب بشیر منظر نے کہا کہ پاکستان کشمیر میں ملی ٹینسی کی پشت پناہی کرتا رہے گا ۔ ہم نے ماضی میں دیکھا ہے کہ جب بھی کوئی عالمی سطح کا لیڈر ہندوستان کے دورے پر آیا تو دہشت گردوں نے کشمیر میں بڑی واردات انجام دی اب جبکہ عالمی سطح کی اتنے بڑے اجلاس کی اہم میٹنگیں کشمیر میں بھی منعقد ہونے جارہی ہے، تو عین ممکن ہے کہ پاکستان کوئی بڑی واردات انجام دینے کی کوشش کرے گا ۔

     

    یہ بھی پڑھئے: یاترا کو ہر لحاظ سے محفوظ بنانے کیلئے پہلگام اور بال تل میں ماک ڈرلز


    سیاسی تجزیہ نگار محمد سعید ملک کا کہنا ہے کہ یہ اجلاس کشمیر میں منعقد کروانا عالمی سیاست میں ہندوستان کے بڑھتے ہوئے قد کی نشاندہی کرتا ہے ۔ ہندوستان عالمی سطح پر ایک بڑی طاقت کے طور پر ابھر چکا ہے، لہذا اس معاملے پرمعاشی طور پر پاکستان کے ساتھ موازنہ کرنا ٹھیک نہیں ہوگا۔ عالمی سطح پر زیادہ تر ممالک بشمول اسلامی ممالک ہندوستان کے رتبے سے متاثر ہوئے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ زیادہ تر ممالک ہندوستان کے ساتھ دوستی قائم رکھنا چاہتے ہیں ۔

    واضح رہے دوہزار تئیس جی 20 ممالک کے کشمیر میں منعقد ہونے والے اجلاس کے سلسلے میں جموں وکشمیر سرکار کی جانب سے اقدامات کرنے کا عمل شروع ہوچکاہے۔ یوٹی انتظامیہ نے اس سلسلہ میں کل ایک آڈر جاری کرکے پانچ ممبران کی ایک کمیٹی تشکیل دینے کا حکم جاری کیا ہے۔ مکانات اور شہری ترقی محکمے کے پرنسپل سیکرٹری دھیرج گپتا کی سربراہی والی یہ کمیٹی میٹنگوں کو احسن طریقے پر منعقد کرانے کے لئے متعلقہ محکموں کے ساتھ تال میل انجام دے گی ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: