ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں وکشمیر: سابق آئی اے ایس شاہ فیصل 9 ماہ کے بعد رہا، پی ایس اے بھی ہٹایا گیا

جموں وکشمیر کے سابق آئی اے ایس افسر شاہ فیصل کو 9 ماہ کے بعد رہا کردیا گیا ہے۔ ساتھ ہی شاہ فیصل پر لگایا گیا عوامی تحفظ قانون بھی ہٹا دیا گیا ہے۔

  • Share this:
جموں وکشمیر: سابق آئی اے ایس شاہ فیصل 9 ماہ کے بعد رہا، پی ایس اے بھی ہٹایا گیا
جموں وکشمیر: سابق آئی اے ایس شاہ فیصل 9 ماہ کے بعد رہا

سری نگر: جموں وکشمیر (Jammu Kashmir) کے سابق آئی اے ایس افسر شاہ فیصل کو 9 ماہ کے بعد رہا کردیا گیا ہے۔ ساتھ ہی شاہ فیصل پر لگایا گیا عوامی تحفظ قانون (PSA) بھی ہٹا دیا گیا ہے۔ مرکزی حکومت نے گزشتہ سال 5 اگست کو جموں وکشمیر سے خصوصی ریاست کا درجہ واپس لے کر مرکز کے زیر انتظام دو حصوں میں تقسیم کردیا تھا، جس کے بعد مین اسٹریم کے کچھ لیڈروں سمیت سابق آئی اے ایس شاہ فیصل کو پی ایس اے قانون کے تحت حراست میں لے لیا گیا تھا، تب سے ہی وہ مسلسل نظر بند تھے۔


سابق آئی اے ایس اور جموں وکشمیر پیپلز موومنٹ (JKPM) کے سربراہ شاہ فیصل پر فروری 2020 میں پی ایس اے لگایا گیا تھا۔ گزشتہ سال 13 اگست کو جب شاہ فیصل دہلی ایئر پورٹ سے استنبول کے لئے پرواز لینے جا رہے تھے، اسی دوران انہیں حراست میں لے لیا گیا تھا۔ اس کے بعد انہیں واپس سری نگر لے جایا گیا اور نظر بند کردیا گیا۔ تقریباً ایک ماہ بعد شاہ فیصل پر پی ایس اے لگا دیا گیا۔




سال 2009 میں یو پی ایس سی ٹاپر رہے تھے شاہ فیصل

ہندوستانی انتظامی خدمات سے استعفیٰ دینے کے بعد جموں وکشمیر کے سابق نوکر شاہ فیصل نے جموں و کشمیر پیپلز موومنٹ پارٹی (Jammu and Kashmir Peoples Movement Party) کی تشکیل کی تھی۔ شاہ فیصل 2009 میں یو پی ایس سی (UPSC) میں ٹاپر رہے تھے۔ اسی سال جنوری میں انہوں نے اپنی نوکری سے استعفیٰ دے کر سیاست میں قدم رکھا تھا۔ مارچ میں انہوں نے اپنی پارٹی جموں وکشمیر پیپلز موومنٹ لانچ کی تھی۔

تقریباً 8 ماہ بعد رہا ہوئے تھے عمر عبداللہ

اس سے پہلے تقریباً 8 ماہ بعد نیشنل کانفرنس کے کارگزار صدر عمر عبداللہ کو رہا کیا گیا تھا۔ عمر عبداللہ کو جموں وکشمیر سے آرٹیکل 370 ہٹانے کے ساتھ ہی حراست میں لے لیا گیا تھا۔ تقریباً 8 ماہ اپنی رہائش گاہ میں قید رہنے کے بعد 24 مارچ کو انہیں رہا کردیا گیا۔ رہا ہونے کے بعد عمر عبداللہ نے محبوبہ مفتی سمیت دیگر لیڈروں کی رہائی کا مطالبہ کیا تھا۔

ابھی بھی حراست میں محبوبہ مفتی

واضح رہے کہ ابھی بھی جموں وکشمیر کے کئی لیڈر حراست میں ہیں، جن میں سابق وزیر اعلیٰ اور پی ڈی پی سربراہ محبوبہ مفتی، نیشنل کانفرنس کے جنرل سکریٹری علی محمد ساگر اور سابق وزیر نعیم اختر بھی شامل ہیں۔
First published: Jun 03, 2020 08:38 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading