உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں خطے میں سیاحت کی صنعت کو بڑھاوا دینے کیلئے آئیکونک ویک کا اہتمام

    جموں خطے میں سیاحت کی صنعت کو بڑھاوا دینے کے لیے آئیکونک ویک کا اہتمام۔ سیاحتی اعتبار سے اہمیت کے حامل پچہتر مقامات پر خصوصی پروگرام منعقد۔

    جموں خطے میں سیاحت کی صنعت کو بڑھاوا دینے کے لیے آئیکونک ویک کا اہتمام۔ سیاحتی اعتبار سے اہمیت کے حامل پچہتر مقامات پر خصوصی پروگرام منعقد۔

    جموں خطے میں سیاحت کی صنعت کو بڑھاوا دینے کے لیے آئیکونک ویک کا اہتمام۔ سیاحتی اعتبار سے اہمیت کے حامل پچہتر مقامات پر خصوصی پروگرام منعقد۔

    • Share this:
    جموں وکشمیر میں سیاحت کی صنعت کو مزید بڑھاوا دینے کے لیے محکمہ سیاحت کی طرف سے یوٹی میں ہفتہ وار طویل پروگراموں کا انعقاد عمل میں لایا گیا۔ آئیکونک ویک Iconic week festival کے تحت مختلف سیاحتی اور تواریخی اعتبار سے اہم مقامات پر کئی پروگرام منعقد کئے گئے۔جموں خطے میں بھی کئی پروگرام منعقد ہوئے۔جس کے تحت جموں کے سدھرا میں واقع گالف کورس میں جمعہ کے روز خواتین کے لیے pitting پٹنگ مقابلے  کا انعقاد کیا گیا اس مقابلے میں جموں خطے سے تعلق رکھنے والی لگ بھگ دو درجن خواتین گالفئیرس نے حصہ لیا اس مقابلے کا مقصد جموں کو ایک گالف ڈیسٹنیشن کے طور اجاگر کرناتھا۔مقابلے کی مہمان خصوصی جموں میو نسپل کارپوریشن کی کمشنر این وی لواسا نے نیوز18اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ جموں میں واقع یہ گالف کورس ملک میں قائم بہترین گالف کورسز میں شمار کیا جاتا ہے۔جہاں قومی سطح کے بین الاقوامی سطح کے گالف ٹورنامنٹ منعقد کرائے جاسکتے ہیں لہذا ملک کے مختلف حصوں سے تعلق رکھنے والے گالفر مستقبل میں جموں کا رخ کرسکتے ہیں۔ مقابلے میں شریک خواتین گالفئیرس نے محکمہ سیاحت کے اس قدم کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ ایسے اقدامات نہ صرف خواتین کو گالف میں اپنی صلاحیتوں کو پیش کرنے میں معاون ثابت ہوسکتے ہیں بلکہ ملک کے دیگر حصوں سے بھی گالف کھلاڑیوں کو جموں کی سیر کرنے کے لیے راغب کرسکتے ہیں۔ نتیجے کے طور پر جموں آنے والے سیاحوں کی تعداد میں اضافہ ہوگا۔

    مقابلے میں شریک خاتون گالفر ذہین خان نے نیوز18اردو کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ یہ محکمہ سیاحت کی طرف سے کی گئی نہایت عمدہ کوشش ہے کہ خواتین کے لیے اس طرح کا مقابلہ منعقد کروایا گیا۔اس سے خواتین گالف کی طرف راغب ہوجائیں گی۔ میں آج پہلی بار گالف کورس میں اس طرح کے مقابلے میں شریک ہوئی ہوں اور میں نہایت خوش ہوں کیونکہ دیگر خواتین گالفرس کے ساتھ ملاقات کرکے کافی اچھا محسوس ہورہا ہے۔



    انہوں نے کہا کہ سرکار کو مستقبل میں بھی ایسے مقابلے منعقد کرنے چاہیے تاکہ زیادہ سے زیادہ خواتین اس کھیل کی طرف راغب ہوپائیں۔ ایک اور خاتون گالفر تنوی نے کہا کہ انہیں اس مقابلے میں شریک ہوکر مسرت ہوئی ہے نیوز18اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے تنوی نے کہاکہ"یہ واقعی ایک اچھی کوشش ہے اس سے نہ صرف جموں وکشمیر میں گالف کی کھیل کو فروغ حاصل ہوگا۔بلکہ دیگر ریاستوں کے گالفر بھی جموں کا رخ کریں گے جس سے یہاں سیاحت کی صنعت کو مزید بڑھاوا ملے گا۔آئیکونک ویک تقریبات کے سلسلے میں جموں کے مشہور تواریخی مقام مبارک منڈی میں بھی ایک تقریب منعقد ہوئی۔تقریب کے دوران جموں وکشمیر کی قدیم وراثت یہاں کے تہذیب و تمدن کی عکاسی کرنے والی پینٹنگس اور ڈوگرہ راج کے دوران استعمال کئے گئے ہتھیاروں کی نمائش کی گئی۔



    تقریب میں سینکڑوں افراد نے شرکت کی۔جنہوں نے ماضی کے ان عظیم شاہکاروں کی نمائش منعقد کرنے پر محکمہ آثار قدیمہ،محکمہ سیاحت اور کلچرل اکیڈمی کی کوششوں کی سراہانا کی۔ اس موقع پر جموں کے روایتی رقص و موسیقی کے پروگرام بھی پیش کئے گئے۔ اس پروگرام کا مقصد جموں خطے کی قدیم وراثت تہذیب و تمدن اور تواریخی پس منظر کو اجاگر کرنا تھا۔تاکہ تواریخ جاننے کی دلچسپی رکھنے والے سیاحوں کو جموں کی سیر پر آمادہ کیا جاسکے۔تقریب میں ملک کے مختلف حصوں سے تعلق رکھنے والے سیاحوں نے شرکت کی۔ دہلی کے باشندے وشال شرما نے نیوز18اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ وہ اس پروگرام سے کافی متاثر ہوئے۔انہوں نے کہاکہ"جموں وکشمیر کی تاریخ اور یہاں کے کلچر کے بارے میں مجھے آج تک اتنی جانکاری نہیں تھی تاہم اس نمائش کو دیکھنے کے بعد میں جموں وکشمیر کے تاریخی پس منظر سے واقف ہوا۔

    راکیش شرما نے کہاکہ مہاراجہ کے دور حکومت میں استعمال کئے گئے ہتھیاروں کی نمائش نے انہیں کافی متاثر کیا۔ انہوں نے کہاکہ محکمہ سیاحت کو جموں وکشمیر سے باہر بھی اس طرح کی نمائشوں کا انعقاد کرنا چاہئے تاکہ ملک کے مختلف حصوں میں آباد لوگ جموں وکشمیر کے تہذیب و تمدن سے روشناس ہوسکیں۔ جمعہ کے روز شام دیر گئے منعقد کئے گئے پروگرام میں جموں خطے کے روایتی پکوانوں کی نمائش بھی کی گئی۔واضح رہے کہ محکمہ سیاحت نے ایک ہفتے کے دوران جموں وکشمیر میں  پچہتر ایسے مقامات پر مختلف پروگرام منعقد کئے جن کی ماضی میں زیادہ تشہیر نہیں کی گئی تھی۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: