உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    آئی جی پی کشمیر وجےکمارکا بڑا دعویٰ- کشمیرمیں سرگرم تمام پرانے دہشت گردوں کا خاتمہ

    انسپکٹر جنرل آف پولیس کشمیر رینج، وجے کمارکا کہنا ہے کہ آرٹیکل 370 کے خاتمہ کے بعدکشمیر میں سبھی پرانے سرگرم دہشت گردوں کا صفایا ممکن بنایا گیا ہے۔ جبکہ ابھی تک 480 دہشت گردوں کو جموں وکشمیر پولیس اور دیگر سیکورٹی فورسز نے مارگرایا ہے۔

    انسپکٹر جنرل آف پولیس کشمیر رینج، وجے کمارکا کہنا ہے کہ آرٹیکل 370 کے خاتمہ کے بعدکشمیر میں سبھی پرانے سرگرم دہشت گردوں کا صفایا ممکن بنایا گیا ہے۔ جبکہ ابھی تک 480 دہشت گردوں کو جموں وکشمیر پولیس اور دیگر سیکورٹی فورسز نے مارگرایا ہے۔

    انسپکٹر جنرل آف پولیس کشمیر رینج، وجے کمارکا کہنا ہے کہ آرٹیکل 370 کے خاتمہ کے بعدکشمیر میں سبھی پرانے سرگرم دہشت گردوں کا صفایا ممکن بنایا گیا ہے۔ جبکہ ابھی تک 480 دہشت گردوں کو جموں وکشمیر پولیس اور دیگر سیکورٹی فورسز نے مارگرایا ہے۔

    • Share this:
    جموں کشمیر: انسپکٹر جنرل آف پولیس کشمیر رینج، وجے کمارکا کہنا ہے کہ آرٹیکل 370 کے خاتمہ کے بعدکشمیر میں سبھی پرانے سرگرم دہشت گردوں کا صفایا ممکن بنایا گیا ہے۔ جبکہ ابھی تک 480 دہشت گردوں کو جموں وکشمیر پولیس اور دیگر سیکورٹی فورسز نے مارگرایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان ہلاکتوں میں کئی ٹاپ دہشت گرد کمانڈر بھی شامل ہیں، جبکہ اس وقت پورے کشمیر میں صرف 3 پرانے دہشت گرد سرگرم ہیں۔

    آئی جی پی کشمیر وجے کمار کا کہنا ہے کہ حکومت کشمیر میں حالات میں نمایاں بہتری لانے میں کامیاب ہے، جس کے باعث اب کسی بھی بے گناہ قتل کے خلاف نہ صرف کشمیری پنڈت بلکہ کشمیری مسلم بھی کھل کر آواز اٹھانے کے اہل بن گئے ہیں۔

    وجے کمار نے کہا کہ راہل بٹ کی ہلاکت کے خلاف نہ کشمیری پنڈت بلکہ یہاں کے اکثریتی طبقے نے بھی احتجاج کیا ہے اور اگر اس وقت یہ احتجاج ہو رہے ہیں، تو یہ اس بات کا ثبوت ہے کہ لوگوں کے دلوں سے اب ڈرختم ہو گیا ہے، جس کی وجہ سے اب لوگ کھل کر کسی بھی بے گناہ قتل کی مخالفت پر سڑکوں پر آنے سے خوف زدہ نہیں ہیں۔ تاہم انہوں نے کہا کہ اگر وزیراعظم پیکیج پنڈت ملازمین کشمیر چھوڑ کر چلے جاتے ہیں تو اس سے پاکستان کے عزائم پورے ہوں گے۔ کیونکہ پاکستان یہی منشاء رکھتا ہے کہ کشمیر کا بھائی چارہ ختم ہو۔

    آئی جی پی کشمیر وجے کمار کا کہنا ہے کہ حکومت کشمیر میں حالات میں نمایاں بہتری لانے میں کامیاب ہے۔
    آئی جی پی کشمیر وجے کمار کا کہنا ہے کہ حکومت کشمیر میں حالات میں نمایاں بہتری لانے میں کامیاب ہے۔


    آئی جی پی کشمیر نے کہا کہ کشمیری پنڈتوں کی حالیہ ہلاکتیں دہشت گردوں کی سافٹ ٹارگٹ کلنگ پالیسی کا نتیجہ ہے، کیونکہ دہشت گرد اب ہارڈ ٹارگٹ کی صلاحیت نہیں رکھتے ہیں اور وہ اب سافٹ ٹارگٹ کلنگس کے ذریعے سے ہی اپنی موجودگی ظاہر کرنا چاہتے ہیں۔

    اس سے قبل ڈویژنل کمشنر کشمیر، پی کے پولے نے بھی کشمیری پنڈتوں کے ساتھ ملاقات کے دوران کچھ اسی طرح کی باتوں کا اظہار کیا تھا۔ پولے نے کہا کہ گزشتہ 30 برسوں کے مقابلے میں اب دہشت گردانہ کارروائیوں کا گراف کم ہوگیا ہے۔ جبکہ پولیس اوردیگر قانون نافذکرنے والی اور دیگر سیکورٹی ایجنسیوں نے یہاں پر دہشت گردوں کی سپورٹ بیس کو بھی ختم کر دیا ہے۔ پولے نے کہا کہ صرف 2 فیصدی سپورٹ بیس کی وجہ سے گزشتہ ایام میں دہشت گرد ہارڈ ٹارگٹ کی صلاحیت رکھتے تھے اور اب اس بیس کے ختم ہونے سے کشمیر کے حالات میں کافی نرمی آئی ہے، جس کے نتیجے میں اب یہاں کے لوگ کسی بھی بے گناہ کے قتل پر لال چوک جیسے علاقے میں کینڈل لائٹ احتجاج کرتے ہیں۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: