ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں۔کشمیر میں کووڈ19 کا قہر! پازیٹو کیس 10 فیصد کے پار، اموات میں 5 گنا اضافہ، ICU بھی میسر نہیں

جموں کشمیر ملک کے اُن علاقوں میں شامل ہوگیا ہے جہاں کووڈ19 تیزی سے پھیل رہا ہے۔ اپریل کے مہینے میں کُل 1216934 ٹیسٹ کئے گئے اور اُن میں سے 45ہزار 123 افراد کووڈ مثبت پائے گئے یعنی کووڈ مثبت فیصد 3.7 رہا ۔

  • Share this:
جموں۔کشمیر میں کووڈ19 کا قہر! پازیٹو کیس 10 فیصد کے پار، اموات میں 5 گنا اضافہ، ICU بھی میسر نہیں
جموں کشمیر ملک کے اُن علاقوں میں شامل ہوگیا ہے جہاں کووڈ19 تیزی سے پھیل رہا ہے۔

جموں کشمیر ملک کے اُن علاقوں میں شامل ہوگیا ہے جہاں کووڈ19 تیزی سے پھیل رہا ہے۔ اپریل کے مہینے میں کُل 1216934 ٹیسٹ کئے گئے اور اُن میں سے 45ہزار 123 افراد کووڈ مثبت پائے گئے یعنی کووڈ مثبت فیصد 3.7 رہا ۔  وہیں مئی کے پہلے آٹھ دن میں ہی 335927 جانچ رپورٹوں میں سے 35 ہزار 659 یعنی 10.6 فیصد کووڈ مثبت درج کیے گئے۔ اس طرح اپریل مینے کے مقابلے میں مئی مینے میں اب تک کووڈ مثبت فیصد میں 7فیصد کا اضافہ درج کیا گیا ہے اور جموں کشمیر ایسی ریاستوں اور مرکزی زیر انتظام علاقوں میں شامل ہوگیا ہے جہاں پر کووڈ پھیلانے والا وائرس تیزی سے شکنجہ کستا جا رہا ہے۔


اپریل مینے میں یہاں کُل 289 اموات درج کی گئی یعنی روزانہ اوسط ساڑھے نو افراد کی موت لیکن مئی میں اس میں غیر معمولی اضافہ ہوا ہے۔ اس مہینے کے پہلے آٹھ دن میں ہی 342 اموات درج کی گئی ہیں یعنی روزانہ اوسط سے 43 افراد کی موت ۔جموں صوبے میں سب سے زیادہ اموات درج کی گئی ہیں خاص طور سے جی ایم سی جموں میں تو اموات کا سلسلہ تھمتا ہی نہیں ادھر صحتیاب ہورہے افراد کی شرح میں کچھ بہتری ہوئی ہےلیکن یہ ابھی بھی بہت کم ہے۔ اپریل مہینے میں کُل مثبت معاملات کا 42 فیصد صحتیاب ہوا جو مئی کے پہلے آٹھ دن میں بڑھ کر 48 فیصد تک پہنچ گیا ہے۔




اسپتالوں میں اب مریضوں کے لئے بیڈ ملنا مشکل ہورہا ہے خاص طور سے سرینگر ضلع میں جہاں سب سے زیادہ کووڈ متحرک کیس موجود ہیں۔طبی ماہرین کا کہنا ہےکہ جہاں پر کووڈ مریضوں کے لئے مخصوص کُل بستروں میں سے 60 فیصد بھرے ہوں اس کا مطلب ہےکہ وہاں انفیکشن بہت تیزی سے پھیل رہا ہےاور ایسے علاقوں میں مُکمل لاک ڈاون کی اشد ضرورت ہئے۔ جموں کشمیر میں 60.4 فیصد کووڈ مخصوص بستر بھرے ہیں اور آئی سی یو کی بات کریں تو پورے جموں کشمیر میں صرف 12فیصد آئی سی یو بستر اب میسر ہیں پریشان کُن بات یہ ہےکہ وادی کشمیر کے چار بڑے ثانوی درجے کے اسپتالوں میں صرف ایک کووڈ آئی سی یو بیڈ خالی ہے۔ جموں کشمیر میں کووڈ کرفیو تو پچھلے کئی دن سے نافذ ہے لیکن کئی نجی گاڑیاں سڑکوں پر دوڑتی نظر آرہی ہیں۔



جموں کشمیر میں 16 مارچ 2021 تک کووڈ معاملات دو ہندسوں تک محدود تھے لیکن 17 مارچ کو یہ معاملے 97 سے بڑھ کر 126 ہوگئے ۔اس کے بعد کووڈ وائرس تیزی سے پھیلتا گیا ۔12 اپریل کو کووڈ مثبت معاملے 991 پہنچے اور اگلے ہی دن یعنی 13 اپریل کو کووڈ مثبت معاملے 1269 پہنچ گئے۔اس کے بعد سے انفیکشن جنگل کی آگ کی طرح پھیلتا گیا اور روزانہ معاملے ایک موقعہ پر 5 ہزار کے پار کر گئے۔
Published by: Sana Naeem
First published: May 09, 2021 11:25 AM IST