ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

کپواڑہ میں دردناک حادثہ : شادی کی خوشیاں ماتم میں تبدیل ، کنویں کی صفائی کے دوران دو سگے بھائیوں سمیت چار کی موت

دو سگے بھائیوں سمیت چار افراد کی لاشیں جب ان کے آبائی گاؤں سنگڈانہ پہنچی ، تو وہاں کہرام مچ گیا ۔ چاروں افراد کو شام دیر گئے پر نم آنکھوں سے سپرد خاک کیا گیا ۔

  • Share this:
کپواڑہ میں دردناک حادثہ : شادی کی خوشیاں ماتم میں تبدیل ، کنویں کی صفائی کے دوران دو سگے بھائیوں سمیت چار کی موت
شادی کی خوشیاں ماتم میں تبدیل ، کنویں کی صفائی کے دوران دو سگے بھائیوں سمیت چار کی موت

جموں و کشمیر کے کپواڑہ ضلع کے سنگڈانہ کرا پورہ میں آج دوپہر ایک المناک سانحہ اس وقت پیش آیا ، جب شادی کی تیاری میں مصروف ایک کنبہ کے دو سگے بھائیوں سمیت چار افراد کی موت ہوگئی ۔  یہ کنبہ اپنے کنویں کی صفائی کررہ تھا ، کیونکہ کہ کچھ روز بعد ان کی بیٹی کی شادی ہونے جارہی تھی ۔ کنویں کی صفائی آخری مرحلہ تھی ۔ لیکن اس خاندان کو یہ معلوم نہیں تھا کہ یہ کنواں اب ان کیلئے موت کا کنواں ثابت ہوگا ۔


تفصیلات کے مطابق گھر کا ایک فرد ممتاز احمد کنویں کے اندر صفائی کررہا تھا اور اس نے کنویں کی صفائی کیلئے ایک موٹر کنویں میں اتاری ، جس کی وجہ سے وہاں گیس جمع ہوگئی اور وہ دم گھٹنے سے اندر ہی بے ہوش ہوگیا ۔ ممتاز کو نکالنے اس کا بھائی محمد الطاف کنویں کے اندر گیا ، لیکن وہ بھی گیس کی وجہ سے وہیں بے ہوش ہوگیا ۔ جب دونوں بھائی کنویں کے اندر بے ہوش ہوگئے تو ان کے رشتہ داروں اور خواتین میں چیخ و پکار مچ گئی ۔ جس کو سن کر نزدیکی رشتہ دار محمد الطاف شیخ اور شوکت احمد خان وہاں آگئے اور  کنویں کے اندر دونوں بھائیوں کو نکالنے کیلئے گھس گئے ، لیکن انہیں کیا معلوم تھا کہ ان دو بھائیوں کے ساتھ وہ بھی ہمیشہ کیلئے موت کی آغوش میں چلے جائیں گے۔


جب چاروں لوگ کنویں سے باہر نہیں آئے تو کہرام مچ گیا اور لوگوں نے پولیس کو اطلاع دی ، جس کے بعد پولیس ، مقامی لوگوں کے علاوہ فائر سروس محکمہ کے افراد وہاں پہنچ گئے اور بچاو کارروائی شروع کی گئی ۔ جے سی بی مشین سے کنویں کی کھدائی کی گئی ، چاروں کو باہر نکالا گیا اور مقامی اسپتال پہنچایا گیا ، لیکن اس وقت تک کافی دیر ہوچکی تھی اور ڈاکٹروں نے چاروں کو مردہ قرار دیا ۔


دو سگے بھائیوں سمیت چار افراد کی  لاشیں جب ان کے آبائی گاؤں سنگڈانہ پہنچی ، تو وہاں کہرام مچ گیا ۔ چاروں افراد کو شام دیر گئے پر نم آنکھوں سے سپرد خاک کیا گیا ۔

قابل ذکر ہے کہ علاقہ کے لوگوں نے الزام عائد کیا ہے کہ پینے کا صاف پانی دستیاب نہ ہونے کی وجہ سے آج ایک پورا خاندان تباہ ہوگیا ۔ ان کا کہنا تھا کہ سالوں سے اس علاقہ کے لوگ انتظامیہ سے پینے کا صاف پانی فراہم کرنے کا مطالبہ کررہے ہیں ، مگر کوئی ان کی سننے کیلئے تیار نہیں ہے ۔
First published: Jul 03, 2020 04:13 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading