உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں وکشمیر: ہندوستانی فضائیہ کا طیارہ حادثہ کا شکار، دونوں پائلٹ ہلاک، گھر میں ماتم کا ماحول

    ہندوستانی فضائیہ (IAF) کا ایک MiG-21 لڑاکا طیارہ کل شام راجستھان کے باڑمیر کے قریب گر کر تباہ ہو گیا، جس کے نتیجے میں جڑواں نشستوں والے اس  طیارے میں سوار دونوں پائلٹ ہلاک ہو گئے۔

    ہندوستانی فضائیہ (IAF) کا ایک MiG-21 لڑاکا طیارہ کل شام راجستھان کے باڑمیر کے قریب گر کر تباہ ہو گیا، جس کے نتیجے میں جڑواں نشستوں والے اس طیارے میں سوار دونوں پائلٹ ہلاک ہو گئے۔

    ہندوستانی فضائیہ (IAF) کا ایک MiG-21 لڑاکا طیارہ کل شام راجستھان کے باڑمیر کے قریب گر کر تباہ ہو گیا، جس کے نتیجے میں جڑواں نشستوں والے اس طیارے میں سوار دونوں پائلٹ ہلاک ہو گئے۔

    • Share this:
    جموں: ہندوستانی فضائیہ (IAF) کا ایک MiG-21 لڑاکا طیارہ کل شام راجستھان کے باڑمیر کے قریب گر کر تباہ ہو گیا، جس کے نتیجے میں جڑواں نشستوں والے اس  طیارے میں سوار دونوں پائلٹ ہلاک ہو گئے۔ طیارہ تربیتی سفر پر تھا۔ مرنے والے پائلٹوں میں سے ایک کی شناخت جموں کے آر ایس پورہ سے تعلق رکھنے والے لیفٹیننٹ ادویتیا بال کے طور پر ہوئی ہے۔ اپنے نوجوان پائلٹ کی موت کی خبر سن کر پورا خاندان شدید غم اور صدمے میں ہے۔

    یہاں کے مناظر کو دیکھ کر لگتا ہے کہ راجستھان کے باڑمیر میں مگ اکیس طیارے کے حادثے میں جان کی بازی ہارنے والے 26 سالہ انڈین ایئرفورس کے پائلٹ لیفٹیننٹ ادویتا بال کے خاندان پر کس طرح غم کا پہاڑ ٹوٹ پڑا ہے،   شام جموں کے رنبیر سنگھ پورہ کے جندر ملہو گاؤں کے رہنے والے ادویتیا بال نے قوم کے لئے بہت چھوٹی عمر میں ہی اپنی جان نچھاور کی۔ ان کی شہادت کی خبر سنتے ہی ان کا خاندان ہی نہیں بلکہ پورا آر ایس پورہ  شدید صدمے اور غم میں مبتلا ہے۔ ان کی والدہ کو گھر والوں نے گھیر رکھا ہے اور انہیں تسلی دے رہے ہیں، لیکن وہ کل شام سے بے چین ہیں۔ ادویتا بال کی دادی کرسی پر بیٹھ کر اپنے بچپن کے دنوں میں ادویتا کی تصویر پکڑے رو رہی ہے۔

    ان کے چچا کا کہنا ہے کہ ادوتیا بال ایک بہادر لڑکا تھا جو ہمیشہ سے آئی اے ایف میں شامل ہو کر ملک کی خدمت کرنا چاہتا تھا۔ انہوں نے کہا کہ انہیں ان کی شہادت پر فخر ہے۔ شہید کے اہل خانہ نے یہ بھی انکشاف کیا کہ اُن کی سالگرہ حال ہی میں یعنی سولہ جولائی کو تھی۔ ان کا کہنا تھا کہ ادوتیا  سماج سے بہت لگاو رکھتا تھا اور وہ جموں کے دورے کے دوران ہمیشہ دوستوں اور رشتہ داروں کے ساتھ بیٹھ کر لطیفے سُنایا کرتا تھا۔

    ان کا کہنا تھا کہ وہ زمین سے جُڑا نوجوان تھا اور اس نے قوم کی خدمت کا خواب دیکھا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ اس کے جذبہ حب الوطنی کو اس وقت ایک نیا پن حاصل ہوا جب اس نے چھٹی جماعت میں تعلیم حاصل کرنے کے لئے ناگوت میں قائم سینک اسکول میں داخلہ لیا۔ ادوتیا کے اہل خانہ لاش کو حاصل کرنے کے لئے دہلی روانہ ہو گئے ہیں اور کل اس کی آخری رسومات کی توقع ہے۔ تاہم خاندان کے افراد اور رشتہ دار بھی آئی اے ایف کی جانب سے مگ اکیس کے استعمال پر حکومت سے ناخوش ہیں۔

    ادویتا کے گھر میں اب اس کے والدین اور ایک بھائی رہ گیا ہے۔ اسی دوران ایل جی منوج سنہا اور کئی دیگر معززین نے بھی سوگوار خاندان کے ساتھ تعزیت کا اظہار کیا ہے۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: