உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں وکشمیر: فوج کی بڑی کارروائی، لائن آف کنٹرول کے نزدیک دہشت گردوں کی کمین گاہ تباہ، بڑی تعداد میں اسلحہ بارود ضبط

    جموں وکشمر: فوج کی بڑی کارروائی، لائن آف کنٹرول کے نزدیک دہشت گردوں کی کمین گاہ تباہ

    جموں وکشمر: فوج کی بڑی کارروائی، لائن آف کنٹرول کے نزدیک دہشت گردوں کی کمین گاہ تباہ

    کپواڑہ ضلع میں لائن آف کنٹرول کے نزدیک آباد علاقے کرناہ ٹاد میں فوج نے ایک تلاشی کارروائی کے دوران دہشت گردوں کی ایک کمین گاہ کو تباہ کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔کمین گاہ سے بڑی تعداد میں اسحلہ بارود ضبط کیا گیا۔ کمین گاہ سے پولیس اور فوج نے دعویٰ کیا ہے کہ جنگلی علاقہ میں بھاری مقدار میں اسلحہ اور گولہ بارود چھپا رکھا تھا۔

    • Share this:
    کپواڑہ: جموں وکشمیر کے کپواڑہ ضلع میں لائن آف کنٹرول کے نزدیک آباد علاقے کرناہ ٹاد میں فوج نے ایک تلاشی کارروائی کے دوران دہشت گردوں کی ایک کمین گاہ کو تباہ کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔ کمین گاہ سے بڑی تعداد میں اسحلہ بارود ضبط کیا گیا۔ کمین گاہ سے پولیس اور فوج نے دعویٰ کیا ہے کہ جنگلی علاقہ میں بھاری مقدار میں اسلحہ اور گولہ بارود چھپا رکھا تھا۔

    پولیس کا کہنا ہے کہ بر آمد شدہ اسلحہ وگولہ بارود میں پانچ پستول، ایک سو پچاس پستول کی گولیاں، پندرہ ہتھ گولے، پانچ میگزین اور براون شوگر کے پاکٹ کے علاوہ قابل اعتراض مواد بھی شامل ہے۔ پندرہ اگست سے پہلے اس طرح کی کارروائی کو فوج نے ایک بڑی کارروائی سے تعبیر کیا۔ فوجی ذرائع کے مطابق اگر یہ اسحلہ بارود ملیٹنٹوں کے ہاتھ لگ جاتا۔ تو ایک بڑی کارروائی انجام دے سکتے تھے۔ پولیس نے اس حوالہ سے ایک کیس درج کرکے مزید تحقیقات شروع کی۔ 15 اگست کی تقریب کو پُر وقاربنانے کیلئے تمام تیاریوں کو حتمی شکل دی گئی اور سیکورٹی کے پختہ بندوبست کئے گئے ہیں۔

    کمین گاہ سے بڑی تعداد میں اسحلہ بارود ضبط کیا گیا۔ کمین گاہ سے پولیس اور فوج نے دعویٰ کیا ہے کہ جنگلی علاقہ میں بھاری مقدار میں اسلحہ اور گولہ بارود چھپا رکھا تھا۔
    کمین گاہ سے بڑی تعداد میں اسحلہ بارود ضبط کیا گیا۔ کمین گاہ سے پولیس اور فوج نے دعویٰ کیا ہے کہ جنگلی علاقہ میں بھاری مقدار میں اسلحہ اور گولہ بارود چھپا رکھا تھا۔


    پندرہ اگست کو لے کر تمام جگہوں پر تلاشی کارروائی شروع کی گئی اور تمام علاقوں میں گاڑیوں کی تلاشی لی جارہی ہے تاکہ اس موقع پر کسی بھی تخریبی کارروائی کو روکا جاسکے۔ کیونکہ پھچلے کئ دنوں سے ملیٹنٹوں نے کشمیر کے مختلف اضلاع میں تخریبی کارروائی انجام دی ہین اور کہی دنوں سے مختلف علاقوں میں ملیٹنٹوں اور فوج کے درمیان جھڑپیں ہوئیں۔ اب لائن آف کنٹرول سے لے کرگاوں دیہات تک سکیورٹی کے پختہ بندوبست کئے گئے ہیں تاکہ اس موقع پر کوئی بھی تخریبی کارروائی انجام دینے میں  دہشت گرد کا میاب نہ ہوسکیں۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: