ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

کورونا بحران :کشمیری نوجوانوں کا ذہنی تناؤ دور کرنے کےلئے فوج کی پہل، اٹھایا یہ بڑا اقدام

موجودہ صورتحال میں کشمیری نوجوانوں کا ذہنی دباؤ کم کرنے کی غرض سے فوج نے جنوبی کشمیر کے دیالگام علاقے میں ایک منفرد پہل کی۔ اس پہل کے تحت اندور گیمز ایونٹ کا اہتمام ہوا ، جسمیں علاقے کے سینکڑوں نوجوانوں نے شرکت کی۔فوج کے مطابق اسطرح کی پہل کا مقصد نہ صرف نوجوانوں کے لیے ایک پلیٹ فارم مہیا کرنا تھا ، بلکہ کورونا کی وجہ سے پیدا شدہ حالات اور ذہنی تناؤ کو دور کرنے کی ایک کوشش بھی تھا۔

  • Share this:
کورونا بحران :کشمیری نوجوانوں کا ذہنی تناؤ دور کرنے کےلئے فوج کی پہل، اٹھایا یہ بڑا اقدام
ایونٹ کے اختتام پر فوج اور کشمیری نوجوانوں کے مابین ایک ٹھوس اور مؤثر انٹرایکٹو سیشن کا انعقاد کیا گیا

کورونا کی وبائی صورتحال میں جہاں زندگی تھم گئی ہے اور معمول کی زندگی پٹری سے کافی نیچے آگئی ہے ۔وہیں لوگ اب ذہنی تناؤ کا شکار بھی ہو رہے ہیں۔موجودہ صورتحال میں کشمیری نوجوانوں کا ذہنی دباؤ کم کرنے کی غرض سے فوج نے جنوبی کشمیر کے دیالگام علاقے میں ایک منفرد پہل کی۔ اس پہل کے تحت اندور گیمز ایونٹ کا اہتمام ہوا ، جسمیں علاقے کے سینکڑوں نوجوانوں نے شرکت کی۔فوج کے مطابق اسطرح کی پہل کا مقصد نہ صرف نوجوانوں کے لیے ایک پلیٹ فارم مہیا کرنا تھا ، بلکہ کورونا کی وجہ سے پیدا شدہ حالات اور ذہنی تناؤ کو دور کرنے کی ایک کوشش بھی تھا۔


اس ایونٹ میں مقامی نوجوانوں نے مختلف انڈور گیمز جیسے والی بال ، بیڈ منٹن ، ٹیبل ٹینس ، کیرم اور شطرنج کے کھیلوں بنیں حصہ لیا اور فوج کے ہمراہ تفریح اور فرصت کے لمحات گزارے۔ 19 راشٹریہ رایفلز کے کمپنی کمانڈر میجر راہل کے مطابق کورونا کے دوران سیر و تفریح کے مواقع کافی سمٹ گئے ہیں ایسے میں ذہنی تناؤ کا بڑھنا ایک عام بات ہے۔ ان مسائل کو مدنظر رکھتے ہوئے فوج نے کی ایک کوشش کے طور پر اسطرح کا پروگرام منعقد ہوا۔ میجر راہل کے مطابق نوجوانوں میں منشیات کے استعمال کے رحجان کو ختم کرنے اور کھیلوں کی جانب انہیں زیادہ راغب کرنا بھی اسطرح کے پروگراموں کا مقصد ہوتا ہے فوج کشمیر میں آئندہ بھی جاری رکھے گی۔


ایونٹ کے اختتام پر فوج اور کشمیری نوجوانوں کے مابین ایک ٹھوس اور مؤثر انٹرایکٹو سیشن کا انعقاد کیا گیا جس کے تحت فوج اور اعوام کے روابط کو مزید مضبوط بنانے کے وعدے کے ساتھ فاتحین کو ایک کپ چائے پر انعامات تقسیم کیے گئے۔ فوج کے مطابق اسطرح کے پروگرام نہ صرف جسمانی اور ذہنی نشوونما کےلئے کارگر ثابت ہوتے ہیں بلکہ کشمیری نوجوانوں اور فوج کے بیچ دوریوں کو مزید ختم کر کے پل کا کام انجام دیتے ہیں ۔

Published by: Mirzaghani Baig
First published: May 24, 2021 09:22 AM IST