ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

24 گھنٹے میں مارے گئے 9دہشت گرد لیکن جنوبی کشمیر میں اب بھی 125 دہشت گرد سرگرم: فوج

فوج کی 15ویں کور کی قیادت کررہے لیفٹیننٹ جنرل بی ایس راجو نے جانکاری دیتے ہوئے کہا کہ کشمیر وادی (Kashmir Valley) میں آئے امن سے پاکستان (Pakistan)ناخوش ہے۔

  • Share this:
24 گھنٹے میں مارے گئے 9دہشت گرد لیکن جنوبی کشمیر میں اب بھی 125  دہشت گرد سرگرم: فوج
فوج کی 15ویں کور کی قیادت کررہے لیفٹیننٹ جنرل بی ایس راجو نے جانکاری دیتے ہوئے کہا کہ کشمیر وادی (Kashmir Valley) میں آئے امن سے پاکستان (Pakistan)ناخوش ہے۔

سری نگر۔ کشمیری عوام نے آرٹیکل 370 (Article 370) کی بیشتر دفعات کو مثبت انداز میں ختم کرنے کا فیصلہ کیا کیونکہ طویل عرصے کے بعد امن آیا لیکن پاکستان ناخوش ہے اور وادی کشمیر میں امن کو خراب کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔ یہ بات فوج کے ایک سینر افسر نے پیر کو کہی۔ انہوں نے کہا کہ جنوبی کشمیر میں تقریبا 25 غیر ملکی اور 100 مقامی دہشت گرد (Terrorists) سرگرم ہیں۔ فوج کی 15ویں کور کی قیادت کررہے لیفٹیننٹ جنرل بی ایس راجو نے جانکاری دیتے ہوئے کہا کہ کشمیر وادی (Kashmir Valley) میں آئے امن سے پاکستان (Pakistan)ناخوش ہے۔

فوج کی 15ویں کور کی قیادت کررہے لیفٹیننٹ جنرل بی ایس راجو نے یہان سے تقریبا 33 کلومیٹر دور اونتی پورہ میں نامہ نگاروں سے کہا، آرٹیکل 370 کی دفعات کو ختم کرنے کے بعد کی حالت سمیت، میرا ماننا ہے کہ لوگوں نے فیصلے کو پازیٹو طریقے سے لیا۔ ہم نے طویل وقت بعد امن دیکھا۔

لیفٹیننٹ جنرل بی ایس راجو کے ساتھ جنوبی کشمیر فوج کی وکٹور فورس کے جنرل آفیسر کمانڈنگ میجر جنرل اے سینگپتا اور سی آر پی ایف کے انسپکٹر جنرل بھی تھے۔ لیفٹیننٹ جنرل بی ایس راجو ضلع شوپیاں میں 24 گھنٹوں سے بھی کم وقت میں دو انکاؤنٹروں میں 9 دہشت گردوں کے مارے جانے کے بعد میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ اس سال فروری تک وادی میں حالات تقیبا معمول پر آگئے۔

First published: Jun 08, 2020 06:11 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading