ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر : رئیس حسین نے قائم انوکھی مثال ، بلی کے بچوں کی اس طرح بچائی جان ، جانئے کیوں

Jammu and Kashmir News : رئیس نے نیوز 18 اردو سے بات کرتے ہوئے کہا کہ انسان کو صرف انسان بچانے کی سعی نہیں کرنی چاہئے بلکہ ایک حیوان کے ساتھ ساتھ کیڑے مکوڑے کی جان بچانے کی کوشش کرنی چاہئے۔

  • Share this:
جموں و کشمیر : رئیس حسین نے قائم انوکھی مثال ، بلی کے بچوں کی اس طرح بچائی جان ، جانئے کیوں
جموں و کشمیر : رئیس حسین نے قائم انوکھی مثال ، بلی کے بچوں کی اس طرح بچائی جان ، جانئے کیوں

بڈگام : کہتے ہیں حیوان کا خیال رکھنا اتنا ہی ضروری ہے جتنا ایک انسان کا۔ دنیا میں ایک انسان کو صرف انسان کا خیال نہیں رکھنا چاہئے ، بلکہ حیوان کا بھی خاص خیال رکھنا چاہئے ۔ یہ انسانیت بھی ہے اور عبادت بھی ۔ اسی انسانیت کو زندہ رکھتے ہوئے وسطی ضلع بڈگام کے ملہ بوچھن ماگام سے تعلق رکھنے ایک 35 سالہ  نوجوان رئیس حسین حرہ نے نئی مثال قائم کی ہے ۔


رئیس کے گھر میں ایک بلی تھی جس نے چند روز قبل چار بچوں کو جنم دیا ۔ رئیس نے نیوز18 اردو کو بتایا کہ بچوں کو جنم دینے کے دوسرے روز بلی اچانک غائب ہوگئی ۔ ان کی نظر جب ان بچوں پر پڑی جو بھوک سے تڑپ رہے تھے، تو انہوں نے اس پر نظر رکھنا شروع کردیا ۔ جب ایک دو دنوں تک بلی اپنے بچوں کے پاس ہی نہیں آئی او یہ بچے ماں کی غیر موجودگی اور بھوک سے چیخ رہے تھے تو انہوں نے ان کی نگہداشت شروع کردی ۔


رئیس حسین حرہ نے نیوز 18 اردو کو مزید بتایا کہ ان بچوں کی بھوک مٹانے اور انہیں غذا پہچانے کیلئے اپنے بزرگوں سے پوچھا تو ان کی والدہ امینہ بیگم نے انہیں بلی کے ان بچوں کو دودھ پلانے کا مشورہ دیا ۔ ان کے گھر میں دودھ دینے والی گائے بھی موجود تھی تو ان کی والدہ نے بلی کے ان بچوں کی پرورش کے لیے دودھ اپنے بیٹے کو فراہم کیا ۔


رئیس کے مطابق انہوں نے بچوں کو دودھ پلانے والی بوتل خریدی اور اسی سے بلی کے ان بچوں کو دودھ پلانا شروع کیا ۔ رئیس نے گھر میں بلی کے ان بچوں کو محفوظ رکھنے کیلئے علاحدہ رہنے کا انتظام بھی کیا ۔ رئیس اب روزانہ بنیادوں پر دن میں دو تین مرتبہ بلی کے ان بچوں کو غذا پہنچا رہے ہیں ۔ رئیس کے گھر والے بھی اس نیک کام میں خوب ہاتھ بٹھا رہے ہیں ۔

رئیس نے نیوز 18 اردو سے بات کرتے ہوئے کہا کہ انسان کو صرف انسان بچانے کی سعی نہیں کرنی چاہئے بلکہ ایک حیوان کے ساتھ ساتھ کیڑے مکوڑے کی جان بچانے کی کوشش کرنی چاہئے۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: May 15, 2021 08:09 PM IST