உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    J&K News: امت شاہ نے جموں و کشمیر میں سیکورٹی صورتحال کا لیا جائزہ، سیکورٹی اہلکاروں کو دی یہ بڑی ہدایت

    J&K News: امت شاہ نے جموں و کشمیر میں سیکورٹی صورتحال کا لیا جائزہ، سیکورٹی اہلکاروں کو دی یہ بڑی ہدایت

    J&K News: امت شاہ نے جموں و کشمیر میں سیکورٹی صورتحال کا لیا جائزہ، سیکورٹی اہلکاروں کو دی یہ بڑی ہدایت

    Jammu and Kashmir : مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے ہفتہ کے روز جموں و کشمیر میں سیکورٹی کی صورتحال کا جائزہ لیا اور دہشت گردی کے خلاف فعال کارروائیوں اور ان کے لاجسٹک اور مالی امداد کے نظام کو بند کرنے پر زور دیا۔

    • Share this:
    جموں : مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے ہفتہ کے روز جموں و کشمیر میں سیکورٹی کی صورتحال کا جائزہ لیا اور دہشت گردی کے خلاف فعال کارروائیوں اور ان کے لاجسٹک اور مالی امداد کے نظام کو بند کرنے پر زور دیا۔ شاہ نے کہا کہ دہشت گردی کو مکمل طور پر ختم کرنے کے لیے سیکورٹی گارڈ کو مزید مضبوط کیا جانا چاہئے ۔ تاکہ وزیر اعظم نریندر مودی کے پرامن اور خوشحال جموں و کشمیر کے ویژن کو حاصل کیا جا سکے۔ نیز وزیر داخلہ  نے جموں میں سی آر پی ایف کے 83 ویں یوم تاسیس کے پروگرام سے خطاب کیا ۔ انہوں نے کہا کہ سی آر پی ایف نے طویل عرصے سے ہندوستان میں لوگوں کو "حفاظت اور تحفظ کا احساس" فراہم کرنے کا کام کیا ہے۔ اور "سی آر پی ایف کے جوانوں نے ملک کے مشکل حالات میں لوگوں کو راحت پہنچایی ہے۔

     

    یہ بھی پڑھئے : جموں و کشمیر کے پلوامہ میں ملی ٹینٹوں نے غیر مقامی مزدور پر کیا قاتلانہ حملہ


    امت شاہ نے انتخابات کو انجام دینے میں اہم کردار ادا کرنے کے لیے سی آر پی ایف کی  تعریف کی، جسے انہوں نے ملک بھر میں پرامن طریقے سے "جمہوریت کا تہوار" قرار دیا۔ شاہ نے کہا کہ انتخاب جمہوریت کا تہوار ہے اور منصفانہ انتخابات جمہوری ملک کی روح ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ جب بھی ہندوستان میں لوک سبھا یا اسمبلی کے انتخابات ہوتے ہیں، تو سی آر پی ایف پورے ملک میں پرامن طریقے سے انتخابات کرانے میں اہم کردار ادا کرتا ہے اور یہ پہلا موقع ہے جب سی آر پی ایف اپنا یوم تاسیس قومی دارالحکومت کے باہر منا رہا ہے۔

     

    یہ بھی پڑھئے : کشمیری رائٹر جاوید بیگ نے کشمیری پنڈتوں سے مانگی معافی، کہا: شرمندہ ہوں


    سی آر پی ایف کا یوم تاسیس 19 مارچ کو منایا جاتا ہے ، جب ہندوستان کے پہلے وزیر داخلہ سردار ولبھ بھائی پٹیل نے 1950 میں پارلیمنٹ کے ذریعہ سی آر پی ایف ایکٹ کے نفاذ کے بعد سی آر پی ایف کو رنگ پیش کیا تھا۔ سی آر پی ایف کی تشکیل 1939 میں ہوئی تھی اور اس وقت اسے کراؤن ریپریزنٹیٹو پولیس کے نام سے جانا جاتا تھا۔ 1939 میں اسی دن سی آر پی ایف کو کراؤن نمائندہ پولیس کے طور پر اٹھایا گیا تھا۔

    آزادی کے فوراً بعد اس فورس کو نئی زندگی دی گئی ، جب اسے 28 دسمبر 1949 کو سنٹرل ریزرو پولیس کا نام دیا گیا اور اسے نئے سرے سے ڈیزائن کیا گیا اور اسے ملک کی داخلی سلامتی کو محفوظ بنانے کا ذمہ دیا گیا۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: