உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں وکشمیر میں فوج کا سب سے لمبا آپریشن جاری،’اوورگراونڈ ورکرس‘ کا بڑا نیٹ ورک تباہ، 26 گرفتار

    جموں وکشمیر میں فوج کا سب سے لمبا آپریشن جاری، ’اوور گراونڈ ورکرس‘ کا بڑا نیٹ ورک تباہ، 26 گرفتار

    جموں وکشمیر میں فوج کا سب سے لمبا آپریشن جاری، ’اوور گراونڈ ورکرس‘ کا بڑا نیٹ ورک تباہ، 26 گرفتار

    Jammu and Kashmir Terrorism: پونچھ کے ڈیرا کی گلی میں 11 اکتوبر کو صبح تقریباً 5 بجے کے قریب فوج کی ایک ٹکڑی پر 11 دہشت گردوں نے گھات لگاکر حملہ کیا تھا، جس میں پانچ جوان شہید ہوگئے تھے۔

    • Share this:
      پونچھ: سرحد پار سے جموں وکشمیر (Jammu-Kashmir) میں خون خرابہ کرنے کے لئے پاکستانی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی (ISI) اور پاکستانی فوج (Pakistan Army) نئے نئے ہتھکنڈے اپناتی آرہی ہیں، لیکن جموں وکشمیر میں تعینات فوج اور سیکورٹی اہلکاروں کے جوان ہر بار منہ توڑ جواب دیتے آرہے ہیں۔ پونچھ میں ابھی تک کا سب سے لمبا آپریشن جاری ہے۔ گزشتہ 30 دن سے دہشت گردوں کے خلاف بڑے پیمانے پر آپریشن چلایا جا رہا ہے، جو تقریباً 50 کلو میٹر کے جنگل کے دائرے میں جاری ہے۔

      11 اکتوبر کو پونچھ کے ڈیرا کی گلی میں صبح تقریباً 5 بجے کے قریب فوج کی ایک ٹکڑی پر 11 دہشت گردوں نے گھات لگاکر حملہ کیا تھا، جس میں پانچ جوان شہید ہوگئے تھے۔ اس کے بعد کئی گھنٹوں تک دہشت گردوں سے تصادم چلا، لیکن دہشت گرد گھنے جنگل اور موسم کا فائدہ اٹھاکر دوسرے جنگل بھٹا دوریاں علاقے میں جاکر چھپ گئے۔ فوج اور پولیس کی ٹیمیں دہشت گردوں کے پیچھے لگی رہیں اور ان دہشت گردوں کے ساتھ پھر 13 اکتوبر کو تصادم شروع ہوا، جس میں ہندوستانی فوج کے چار اور جوان شہید ہوگئے۔ دہشت گرد گھنی جھاڑیوں میں جاکر چھپ گئے۔

      تبھی سے ان دہشت گردوں کے خلاف آپریشن جاری ہے، جس میں فوج کے ساتھ ساتھ جموں وکشمیر پولیس کا اسپیشل آپریشن گروپ بھی شامل ہے۔ حالانکہ دہشت گرد کتنے ہیں اور کہاں چھپے ہیں، اس کی پوری جانکاری نہیں مل پائی ہے۔ فوج کے ذرائع کا کہنا ہے کہ جنگل کے اندر کچھ قررتی غار ہیں، جس میں دہشت گرد چھپے ہوسکتے ہیں۔

      ان دہشت گردوں کو کھانے پینے کا سامان اور اطلاعات مقامی لوگ دے رہے تھے، جو پاکستان خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی کے پے رول پر تھے، جنہیں اوور گراونڈ ورکر بھی کہہ سکتے ہیں۔ ابھی تک پولیس نے 26 لوگوں کو گرفتار کیا ہے، جو دہشت گردوں تک کھانے پینے کے سامان پہنچاتے تھے اور سیکورٹی اہلکاروں کے ہر موومنٹ کی جانکاری مہیا کروا رہے تھے۔ پونچھ ضلع کے مینڈھر سب ڈویژن سے تین ایسے اوور گراونڈ ورکر تھے، جو یہاں سے بھاگ کر نیپال چلے گئے تھے اور وہیں سے سعودی عرب اور پھر پاکستان پہنچنے کی فراق میں تھے، لیکن پولیس نے انہیں کاٹھمنڈو ایئر پورٹ سے گرفتار کرلیا۔ ان سبھی سے پوچھ گچھ جاری ہے۔

      گزشتہ رات پھر پانچ لوگوں کو پولیس نے منڈھیر، سورن کوٹ، راجوری سے گرفتار کرلیا ہے۔ کل 26 لوگوں کو ابھی تک پکڑا گیا ہے اور پوچھ گچھ جاری ہے۔ ذرائع کے مطابق، ان لوگوں نے قبول کیا ہے کہ انہیں سرحد پار سے پیغام ملتے تھے اور پھر سے یہ دراندازی کرکے ہندوستان میں گھسنے والے دہشت گردوں کو آگے کے راستے کی جانکاری دیتے تھے۔ ساتھ ہی ان کے رہنے اور کھانے کا انتظام کرتے تھے۔ پونچھ اور راجوری میں ایل او سی سے کئی ایسے علاقے ہیں، جن کے راستے یہ دہشت گرد دراندازی کرتے ہیں۔

      ذرائع کا یہ بھی دعویٰ ہے کہ پونچھ میں جو دہشت گرد جنگل میں پوشیدہ تھے، وہ بھی بالا کوٹ سیکٹر سے دراندازی کرکے پہنچے تھے۔ حالانکہ ان کے چار ساتھی راجوری کے تھانہ منڈی علاقے میں اگست 2021 میں فوج نے مارے گئے تھے اور کچھ ساتھی بچ کر نکل گئے تھے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: