உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بانہال: نالہ میں گری لڑکی، پانی کے تیز بہاؤ سے کئی سو میٹر بہی ایسے بچایا گیا: جانیں یہاں

    بانہال اتوار کی صبح بانہال کے کھڑی علاقے میں ایک دس سالہ لڑکی  مہو نالہ کے پانی میں بہہ گئی تاہم پولیس چوکی کھڑی کے اہلکار  ، مقامی کیو آر ٹی کے رضاکاروں اور فوج  کی بروقت کاروائی سے لڑکی کو پانی کے تیز بہاؤ میں کئی سو میٹر بہہ جانے کے بعد بچا لیا گیا ہے۔

    بانہال اتوار کی صبح بانہال کے کھڑی علاقے میں ایک دس سالہ لڑکی مہو نالہ کے پانی میں بہہ گئی تاہم پولیس چوکی کھڑی کے اہلکار ، مقامی کیو آر ٹی کے رضاکاروں اور فوج کی بروقت کاروائی سے لڑکی کو پانی کے تیز بہاؤ میں کئی سو میٹر بہہ جانے کے بعد بچا لیا گیا ہے۔

    بانہال اتوار کی صبح بانہال کے کھڑی علاقے میں ایک دس سالہ لڑکی مہو نالہ کے پانی میں بہہ گئی تاہم پولیس چوکی کھڑی کے اہلکار ، مقامی کیو آر ٹی کے رضاکاروں اور فوج کی بروقت کاروائی سے لڑکی کو پانی کے تیز بہاؤ میں کئی سو میٹر بہہ جانے کے بعد بچا لیا گیا ہے۔

    • Share this:
    بانہال اتوار کی صبح بانہال کے کھڑی علاقے میں ایک دس سالہ لڑکی  مہو نالہ کے پانی میں بہہ گئی تاہم پولیس چوکی کھڑی کے اہلکار  ، مقامی کیو آر ٹی کے رضاکاروں اور فوج  کی بروقت کاروائی سے لڑکی کو پانی کے تیز بہاؤ میں کئی سو میٹر بہہ جانے کے بعد بچا لیا گیا ہے۔ بچاؤ کاروائیوں کے بعد دس سالہ لڑکی  رابعہ ایاز ولد ایاز احمد نائیک ساکنہ کھورہ کھڑی کو پرائمری ہیلتھ سینٹر کھڑی پہنچایا گیا ۔یہ لڑکی اپنی کسی رشتہ دار خاتون کے ساتھ کھڑی ہسپتال آئی تھی اور واپسی پر ایک عارضی پل کو پار کرنے کے دوران لڑکی پھسل کر تیز بہاؤ والے نالہ کھڑی میں گر گئی اور قریب آدھا کلومیٹر تک پانی میں بہہ جانے کے بعد لڑکی کو بچاؤ کاروائیوں میں شامل افراد نے بچا لیا۔
    بروقت بچاؤ کاروائی میں شامل مقامی رضاکار راشد بشیر نائیک اور پولیس اہلکار بشیر احمد نائیک کو تحصیلدار کھڑی اشوک کمار اور ایس ایچ او رنجیت سنگھ نے انعامات سے نوازنے کا اعلان کیا ہے اور انہیں  انتظامیہ نے شاباشی دی ہے۔

    تحصیلدار کھڑی اشوک کمار نے آتوار شام نیوز 18  سے بات کرتے ہوئے کہا کہ وہ کھڑی مارکیٹ کی چیکنگ میں مصروف عمل تھے کہ لڑکی کے دریا میں ڈوب جانے کا شور سنائی دیا اور ہم فوری طور پولیس اور مقامی لوگوں کے ہمراہ نالہ کے کناروں پر  پہنچ گئے۔ انہوں نے کہا کہ مقامی رضاکار راشد بشیر نائیک اور پولیس اہلکار بشیر احمد نائیک نے کمال جرآت کا مظاہرہ کرکے اپنی جانوں کو خطرہ میں ڈال کر اس لڑکی رابعیہ کو چھ سات سو میٹر تک پانی میں بہہ جانے کے بعد بچا لیا ۔ انہوں نے کہا کہ ان کی اس لاجواب اور پرخطر بچاؤ کاروائی کیلئے انہیں انتظامیہ کی طرف سے انعام سے نوازہ جائے گا تاکہ ان کی حوصلہ افزائی ہو۔ انہوں نے کہا کہ لڑکی اب ٹھیک ہے اور اسے گھر بھیجا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ اوپر والے کے شکر گزار ہیں کہ ناممکن معاملے میں حیات موت پر جیت گئی ۔

    (بانہال سے تسکین وانی کی رپورٹ)
    Published by:sana Naeem
    First published: