உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دو دہائیوں کے بعد وادی کشمیر میں ہاکی کھیل کو فروغ دینے کی حکومت کی بہترین پہل 

    دو دہائیوں کے بعد وادی کشمیر میں ہاکی کھیل کو فروغ دینے کی حکومت کی بہترین پہل 

    دو دہائیوں کے بعد وادی کشمیر میں ہاکی کھیل کو فروغ دینے کی حکومت کی بہترین پہل 

    جموں و کشمیر کو یوٹی درجہ دینے کے ساتھ ہی مرکزی حکومت نے وادی کشمیر کے پلوامہ میں ہاکی کا پہلا SYNTHETIC ASTRO TURF میدان کو منظوری دی ۔

    • Share this:
    مرکزی حکومت کی پہل سے وادی کشمیر میں اپنی نوعیت کا پہلا عالمی سطع کا ہاکی میدان پلوامہ میں تعمیر ہورہا ہے ۔ ملک کے دیگر حصوں کی طرح ہی وادی کشمیر میں بھی جہاں کھبی ہاکی کھیل کافی مقبول ہوا کرتا تھا ۔ تاہم بہتر انفرا اسٹراکچر نہ ہونے کے سبب ہاکی کھیل کی طرف لوگوں کا رحجان ختم ہوگیا تھا ۔ مرکزی حکومت کی جانب سے ہاکی کھیل کو فروغ دینے کی پہل کے تحت وادی کشمیر میں اپنی نوعیت کا پہلا ہاکی SYNTHETIC TURF فیلڈ پلوامہ میں بن گیا ہے ۔ جس سے نوجوانوں میں ہاکی کی طرف رحجان بڑھنے کی اُمید پیدا ہوگئی ہے ۔

    جموں و کشمیر کو یوٹی درجہ دینے کے ساتھ ہی مرکزی حکومت نے وادی کشمیر کے پلوامہ میں ہاکی کا پہلا SYNTHETIC ASTRO TURF میدان کو منظوری دی ۔ تقریبا پانچ کروڑ روپے کی لاگت سے تعمیر ہونے والے اس ہاکی ٹرف کا تقریبا کام آخری مرحلے پر ہے ۔ پلوامہ میں ہاکی ٹرف کے تعمیر  کے ساتھ ہی اس کھیل سے جُڑے کھیلاڑیوں کی دلچسپی ایک بار پھر اس کی طرف بڑھ گئی ہے ۔ پلوامہ ہاکی ایسوسیشن کے صدر آفتاب احمد نے نیوز18 اُردو کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہا کہ 1990 سے قبل وادی کے دیگر حصوں کی طرح پلوامہ میں بھی ہاکی کھیل کافی مقبول تھا ۔ لیکن حکومت کی عدم توجہی کے باعث کھیلاڑیوں کی دلچسپی کرکٹ اور فُٹ بال کی طرف بڑھ گئی ۔تاہم اب پلوامہ عالمی سطع کا synthetic astro turf۔ میدان بن جانے سے نوجوانوں نے ہاکی ایسوسی ایشن کے ساتھ تقریبا تیس سال بعد رجوع کیا ، جس سے لگتا ہے کہ ہاکی دوبارہ پلوامہ اُبررہی ہے ۔

    اُدھر ایک نوجوان ہاکی کھلاڑی محسن اندرابی نے کہا کہ پلوامہ میں ہاکی ٹرف کے وجود میں آنے سے ایک بار پھر پلوامہ کے ساتھ ساتھ پوری وادی کشمیر میں ہاکی کے کھیل میں نئی روح پھونک دی گئی ہے ۔ ملک کی آزادی سے قبل ہاکی کھیل پورے ملک میں کافی مقبول تھا ۔ ہاکی واحد ایسا کھیل تھا ، جس کے ذریعہ ہندوستان کی ٹیم نے دُنیا بھر میں اپنا لوہا منوایا تھا ۔ تقریبا 1980 تک پورے ملک میں مقبول ترین کھیل تھا ۔

    جموں کشمیر مین اس وقت تقریبا 60 کھیل کھیلے جارہی ہیں ۔ جن میں ہاکی بھی شامل ہے ۔ لیکن گُزشتہ دو دہایوں سے ہاکی کی مقبولیت کافی کم ہویی تھی ۔ اب اُمید ظاہر کی جارہی ہے کہ پلوامہ میں سے تعمیر ہوا ہاکی ٹرف میدان سے ہاکی کھیل کی طرف کھلاڑی راغب ہوں گیں ۔ اور ہاکی کھیل کو وادی کشمیر میں فروغ حاصل ہوگا ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: