اپنا ضلع منتخب کریں۔

    J&K News: ایڈمنسٹریٹیو کونسل کا بڑا فیصلہ، کمرشیل گاڑیوں کے پیسنجر ٹیکس میں 50 فیصد کی رعایت، جانئے کیا رہا ٹرانسپورٹ مالکان کا ردعمل

    Jammu and Kashmir News : میٹنگ میں یہ بھی بتایا گیا کہ جن گاڑی مالکان نے اس مدت کے لئے پورا پسنجر ٹیکس جمع کروا دیا ہے ، ان کی باقی رقومات کو موجودہ مالی سال کے پیسنجر ٹیکس کے طور پر ایڈجسٹ کیا جائے گا ۔ سرکار کے اس فیصلے پر ٹرانسپورٹ انجمنوں نے ملے جلے رد عمل کا اظہار کیا ہے۔

    Jammu and Kashmir News : میٹنگ میں یہ بھی بتایا گیا کہ جن گاڑی مالکان نے اس مدت کے لئے پورا پسنجر ٹیکس جمع کروا دیا ہے ، ان کی باقی رقومات کو موجودہ مالی سال کے پیسنجر ٹیکس کے طور پر ایڈجسٹ کیا جائے گا ۔ سرکار کے اس فیصلے پر ٹرانسپورٹ انجمنوں نے ملے جلے رد عمل کا اظہار کیا ہے۔

    Jammu and Kashmir News : میٹنگ میں یہ بھی بتایا گیا کہ جن گاڑی مالکان نے اس مدت کے لئے پورا پسنجر ٹیکس جمع کروا دیا ہے ، ان کی باقی رقومات کو موجودہ مالی سال کے پیسنجر ٹیکس کے طور پر ایڈجسٹ کیا جائے گا ۔ سرکار کے اس فیصلے پر ٹرانسپورٹ انجمنوں نے ملے جلے رد عمل کا اظہار کیا ہے۔

    • Share this:
    Jammu and Kashmir News : جموں وکشمیر ایڈمنسٹریٹیو کونسل کی آج جموں ایک میٹنگ منعقد ہوئی ۔ لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا کی صدارت میں منعقدہ اس میٹنگ میں کئی اہم فیصلے کئے گئے۔ ایک اہم ترین فیصلے میں کمرشیل گاڑیوں پر عائد کئے جانے والے پسنجر ٹیکس پر پچاس فیصدی رعایت دینے کا فیصلہ کیا گیا۔ فیصلہ کے مطابق لاک ڈاؤن کے دوران متاثرہ ٹرانسپورٹروں کو راحت دینے کے لئے یکم اپریل دوہزار بیس سے اکتیس مارچ دوہزار اکیس تک پسنجیرس ٹیکس میں پچاس فیصدی چھوٹ دی جائے گی۔ میٹنگ میں بتایا گیا کہ اس اقدام سے کووڈ وباء سے نمٹنے کے لئے لاک ڈاؤن کئے جانے کی وجہ سے متاثرہ ٹرانسپورٹروں کو کافی حد تک راحت ملے گی جو اس مدت کے دوران اپنی گاڑیاں چلانے سے قاصر رہے۔

    میٹنگ میں بتایا گیا کہ جن گاڑی مالکان نے اس مدت کے لئے پورا پسنجر ٹیکس جمع کروا دیا ہے ، ان کی باقی رقومات کو موجودہ مالی سال کے پیسنجر ٹیکس کے طور پر ایڈجسٹ کیا جائے گا ۔ سرکار کے اس فیصلے پر ٹرانسپورٹ انجمنوں نے ملے جلے رد عمل کا اظہار کیا ہے۔ جموں میٹاڈور ایسوسی ایشن کے صدر وکرم سنگھ منہاس کا کہنا ہے کہ اس فیصلے سے ٹرانسپورٹ شعبے سے وابستہ افراد کو کوئی خاص مالی راحت نہیں ملے گی ۔ نیوز18 اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے وکرم سنگھ نے کہا : "ایک سال کے لئے پچاس فیصدی پیسنجر ٹیکس معاف کرنے سے گاڑی مالکان کوکوئی خاص فائدہ نہیں ہوگا ، ہم نے گزشتہ ڈیڑھ سال میں لاک ڈاؤن کی وجہ سے گاڑیاں نہیں چلائیں ، اس مدت کے دوران جب پبلک ٹرانسپورٹ چلانے کی اجازت دی گئی اس دوران بھی پچاس فیصد مسافر ہی گاڑیوں میں سوار کرنے کی حکام نے ہدایت دی تھی ، جس کی وجہ سے ٹرانسپورٹروں کو شدید مالی نقصان اٹھانا پڑا ہے" ۔

    وکرم سنگھ نے کہا کہ جموں وکشمیر میں لگ بھگ پچھتر ہزار کمرشیل گاڑیاں چلتی ہیں ، جنہیں کووڈ لاک ڈاؤن کی وجہ سے اربوں روپے کا نقصان اٹھانا پڑا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ گاڑی مالکان کو وہیکل ٹیکس یعنی ٹوکن اور بنک کے قرضوں پر لاکھوں روپے سود کے طور پر ادا کرنا پڑتے ہیں ، کیا ہی اچھا ہوتا کہ سرکار بنکوں کے ساتھ میٹنگ کرکے کمرشیل گاڑیوں کے مالکان کے قرضوں پر عائد سود ختم کرنے کے بارے میں اقدامات کرتی ۔ وکرم منہاس نے کہا کہ جموں خطے کی تمام ٹرانسپورٹ انجمنیں کل یعنی تین فروری کو اس معاملہ پر میٹنگ کریں گی ۔ تاکہ سرکار کو ٹرانسپورٹ شعبے کو درپیش مسائل سے آگاہ کیا جائے اور اپنے جائز مطالبات منوانے کے لیے مستقبل کا لائحہ عمل طے کیا جائے۔

    کشمیر ویسٹرن بس یونین کے صدر بشیر احمد مٹا نے ایک سال کے لئے پیسنجر ٹیکس میں پچاس فیصدی چھوٹ دئے جانے کو آٹے میں نمک کے مترادف قرار دیا ۔ نیوز18 اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کشمیر وادی میں ٹرانسپورٹ سیکٹر اگست دوہزار انیس سے ہی متاثر رہاہے ، جس کے باعث اس صنعت سے وابستہ افراد مالی بحران کے شکار ہوئے ہیں۔ بشیر احمد مٹا نے کہا: " پیسنجر ٹیکس میں اعلان کردہ یہ چھوٹ متاثرہ ٹرانسپورٹروں کو کوئی بھی راحت نہیں پہنچائے گی۔ ٹرانسپورٹروں کو راحت دینے کی بجائے سرکار نے گزشتہ برس ٹوکن میں سو فیصدی اضافہ کردیا ، جس سے ہماری مالی دشواریوں میں مزید اضافہ ہوا۔ ہمیں امید تھی کہ سرکار گزشتہ چار برسوں کا ٹوکن ٹیکس معاف کرے گی ۔  برے دور سے گزر رہے ٹرانسپورٹ سیکٹر سے منسلک افراد کو راحت مل پاتی تاہم ایسا نہیں ہوا" ۔

    اسی دوران ایڈمنسٹریٹیو کونسل ایک اور فیصلے کے تحت یوٹی میں ہاؤسنگ سیکٹر کو فروغ دینے کے اقدام کے طور پر سرینگر اور اس کے مضافات میں رہائشی کالونیاں تعمیر کرنے کیلئے زمین منتقل کئے جانے کو منظوری دے دی ۔ اس فیصلے کے تحت ہاؤسنگ اور شہری ترقی کے محکمہ کو سرینگر اور بڈگام اضلاع میں 17 مقامات پر لگ بھگ 2319 کنال اراضی فراہم کی جائے گی ۔ تاکہ رہائشی کالونیاں تعمیر کی جاسکتی ۔

    ایڈمنسٹریٹیو کونسل نے پاور ڈیولپمنٹ ڈیپارٹمنٹ کے لئے 64 نئی آسامیوں کی تقریروں کو منظوری دی۔ میٹنگ میں ایل جی منوج سنہا کے مشیروں کے علاوہ پرنسپل سیکریٹری نتیشور کمار اور چیف سیکریٹری اشوک کمار مہتا نے بھی شرکت کی ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: