ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر : کورونا قہر کے درمیان شمالی کشمیر کے لوگوں کیلئے آئی راحت کی یہ بڑی خبر

Jammu and Kashmir News : کووڈ کے قہر انگیزی کے درمیان جموں و کشمیر کے شمالی کشمیر میں پہلی بار سب ڈسٹرکٹ اسپتال کپواڑہ میں اپنی نوعیت کے پہلے قدم کے تحت سرکار نے آکسیجن جنریشن پلاٹ تعمیر کیا ہے ۔ یہ اپنی نوعیت کا پہلا آکسیجن پلانٹ ہوگا ، جہاں آکسیجن تیار ہوگا اور پھر پورے اسپتال میں پائپوں کے ذریعہ اسپتال میں زیراعلاج مریضوں کو سپلائی کیا جائے گا اور مریضوں کے ہر بیڈ پر پائپ کے ذریعہ اس کا استمال کیا جائے گا ۔

  • Share this:
جموں و کشمیر : کورونا قہر کے درمیان شمالی کشمیر کے لوگوں کیلئے آئی راحت کی یہ بڑی خبر
جموں و کشمیر : کورونا قہر کے درمیان شمالی کشمیر کے لوگوں کیلئے آئی راحت کی یہ بڑی خبر

کپواڑہ : جموں و کشمیر میں شمالی کشمیر کے کپواڑہ ضلع میں سرکار کی جانب سے اپنی نوعیت کے پہلے ایک اہم قدم کے تحت آکسیجن پلانٹ تعمیر کیا گیا ۔ شمالی کشمیر میں عوام کیلے یہ بڑی راحت کی خبر ہے ۔ تفصیلات کے مطابق کووڈ کے قہر انگیزی کے درمیان جموں و کشمیر کے شمالی کشمیر میں پہلی بار سب ڈسٹرکٹ اسپتال کپواڑہ میں اپنی نوعیت کے پہلے قدم کے تحت سرکار نے آکسیجن جنریشن پلاٹ تعمیر کیا ہے ۔ یہ اپنی نوعیت کا پہلا آکسیجن پلانٹ ہوگا ، جہاں آکسیجن تیار ہوگا اور پھر پورے اسپتال میں پائپوں کے ذریعہ اسپتال میں زیراعلاج مریضوں کو سپلائی کیا جائے گا اور مریضوں کے ہر بیڈ پر پائپ کے ذریعہ اس کا استمال کیا جائے گا ۔


خیال رہے کہ ابھی تک مریضوں کو سیلنڈروں کے ذریعہ آکسیجن فراہم کیا جاتا تھا اور سیلنڈر خریدنے کیلئے سرینگر جانا پڑتا تھا ، جس پر لاکھوں روپے خرچ ہوجاتے تھے اور اسپتال پر کافی بوجھ بڑھ جاتا تھا اور اسپتال میں داخل مریضوں کو تکلیف دہ صورتحال کا سامنا کرنا پڑتا تھا ۔


اسپتال انتظامیہ کے مطابق پانچ کروڑ روپے سے زائد کی لاکت سے یہ پروجیکٹ تعمیر کیا گیا ۔ اس طرح یہ کپواڑہ کے عوام کے لئے کسی بڑی خوش خبری سے کم نہیں ۔ چیف میڈیکل افسر کپواڑہ ڈاکٹر کونسر امین نے نیوز 18 سے بات کرتے اسے ایک بڑا قدام قرار دیا ۔ انہوں نے کہا کہ کووڈ کے اس مشکل دور میں یہ اس ضلع کیلئے بڑی خبر ہے ۔ کیونکہ کووڈ میں مبتلا مریضوں کو ہائی فلو آکسیجن کی سہولیات دستیاب نہ ہونے کی وجہ سے کشمیر کے دوسرے اسپتالوں میں منتقل کرنا پڑتا تھا ۔ لیکن اب یہ سہولت کپواڑہ اسپتال میں دستیاب رہی  گی ۔


چیف میڈکل افسر کپواڑہ نے ایل جی انتطامیہ کے ساتھ ساتھ محکمہ صحت کے اعلی افسران کا شکریہ ادا کرتے ہوئے اسے ایک سنگ میل قرار دیا ۔ ادھر ماہرین کا کہنا تھا کہ اس آکسیجن کی خاصیت یہ بھی ہے کہ اب ہائی فلو آکسیجن کیلئے مریضوں کو سرینگر منتقل نہیں کرنا پڑے گا ۔ کیونکہ کووڈ مریضوں کو ہائی فلو آکسیجن کی ضرورت پڑتی تھی اور انہیں سرینگر منتقل کرنا پڑتا تھا ۔ لیکن اب کووڈ مریضوں کیلئے بھی خوشخبری ہے ۔

لوگوں نے سرکار کے اس قدم کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ سرکار کے اس اقدام سے اس دور دراز علاقہ میں لوگوں کی مشکلات میں کمی آسکتی ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Apr 19, 2021 10:48 PM IST