ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر : چنار کور کے جی او سی نے فوجیوں کے ساتھ ادا کی نماز ، انسانیت کیلئے دعا کی اپیل

Jammu and Kashmir News : جنرل پانڈے نے فوجیوں کو ماہ رمضان کی مبارکباد دی اور رمضان اور کووڈ وبا کے دوران فوجیوں کے کام کی سراہنا کی ۔ انہوں نے مذہبی رہنماؤں سے اپیل کی کہ وہ انسانیت کی بہتری کیلئے دعائیں جاری رکھیں ۔

  • Share this:
جموں و کشمیر : چنار کور  کے جی او سی  نے فوجیوں کے ساتھ ادا کی نماز ، انسانیت کیلئے دعا کی اپیل
جموں و کشمیر : چنار کور کے جی او سی نے فوجیوں کے ساتھ ادا کی نماز ، انسانیت کیلئے دعا کی اپیل

سری نگر : چنار کور کے جی او سی لیفٹننٹ جنرل ڈی پی پانڈے نے جموں اینڈ کشمیر لائٹ انفینٹری یعنی جیک لیے کے ریجمنٹرل سنٹر سرینگر میں فوجیوں کے ساتھ مغرب کی نماز ادا کی ۔ جنرل پانڈے نے فوجیوں کو ماہ رمضان کی مبارکباد دی اور رمضان اور کووڈ  وبا کے دوران فوجیوں کے کام کی سراہنا کی ۔ انہوں نے مذہبی رہنماؤں سے اپیل کی کہ وہ انسانیت کی بہتری کیلئے دعائیں جاری رکھیں ۔ جنرل پانڈے نے کہا کہ ہم سب کو ایک ساتھ مل کر طبی ماہرین اور انتظامیہ کے ہاتھ مضبوط کرنے چاہئیں ۔ تاکہ اس مشکل صورت حال سے باہر نکلنے کی صورت نکل آئے۔


جی او سی جنرل پانڈے نے اس موقع پر عوام سے اپیل کی کہ وہ کووڈ قواعد و ضوابط پر عمل  کریں ۔ تاکہ پورے قوم کا بھلا ہو۔ انہوں نے خوشی کا اظہار کیا کہ انہیں اس مبارک مہینے میں جموں و کشمیر لائٹ انفنٹری کے بہادر فوجیوں کے ساتھ اس مذہبی فریضے میں شرکت کرنے کا موقع ملا ۔ جموں و کشمیر لائٹ انفینٹری ہندوستان کے مذہبی بھائی چارے ، سیکولرزم اور اتحاد و اتفاق کی علامت رہی ہے۔


جموں کشمیر لائٹ انفینٹری کی اپنی انوکھی تاریخ ہے۔ 1947 میں کشمیر پر پاکستانی قبائلیوں کے حملہ کے دوران مقامی ملیشیا قائم ہوئی ، جس نے قبائلیوں کو واپس بھگانے میں اہم رول ادا کیا ۔ 1962 ہند چین جنگ میں اس کی دو بٹالین کو  لداخ اسکواٹس میں تبدیل کیا گیا ، جس نے اس جنگ میں اچھا کام کیا ۔ اس ملیشیا  نے 1965 اور 1971 کے ہند و پاک جنگ کے دوران بہادری کا مظاہرہ کیا اور انھیں بہادری کے لئے تمغوں سے نوازا گیا۔


اس کے بعد 1972 میں اس ملیشیا کو ہندوستانی فوج کے ایک مکمل ریجمنٹ کے طور درج کیا گیا ۔ 1976 میں اس کا نام جموں کشمیر لائٹ انفینٹری رکھا گیا ۔ یہ ہندوستانی فوج میں سب سے زیادہ بہادری کے تمغے حاصل کرنے والی ریجمنٹوں میں شامل ہے۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: May 12, 2021 10:17 PM IST