உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں وکشمیر: ڈی ڈی سی انتخابات کے ووٹوں کی گنتی جاری، گپکار اتحاد نے بی جے پی کو پیچھے چھوڑ دیا، دیگر کا بھی دبدبہ قائم

    جموں وکشمیر: ڈی ڈی سی انتخابات کے ووٹوں کی گنتی جاری، گپکار اتحاد نے بی جے پی کو پیچھے چھوڑ دیا۔ فائل فوٹو: اے این آئی

    جموں وکشمیر: ڈی ڈی سی انتخابات کے ووٹوں کی گنتی جاری، گپکار اتحاد نے بی جے پی کو پیچھے چھوڑ دیا۔ فائل فوٹو: اے این آئی

    پی ڈی پی لیڈر نے کہا کہ ڈاکٹر فاروق عبداللہ دنیا کے کونے کونے میں گئے اور ہندوستان کے لئے انہوں نے آواز اٹھائی۔ ہندوستان کی بات رکھی اور اب ان کو ملک مخالف کہا جارہا ہے۔ انتخابی نتائج اس بات کی طرف اشارہ کرتے ہیں کہ عوام سچائی سمجھ چکی ہے۔

    • Share this:



      سری نگر: جموں وکشمیر میں ڈسٹرکٹ ڈیولپمنٹ (JK DDC Results) کی 280 سیٹوں پر ہوئے انتخابات کے لئے ووٹوں کی گنتی جاری ہے۔ اس بار بی جے پی اور کشمیر کی پارٹیوں کے گپکار اتحاد کے درمیان سخت مقابلہ ہے۔ حالانکہ گپکار اتحاد نے بی جے پی کو 23 سیٹ پیچھے چھوڑ دیا ہے جبکہ دیگر کا بھی دبدبہ قائم ہے۔ جموں خطے میں بی جے پی کو بڑی کامیابی ملتی ہوئی نظر آرہی ہے۔ جبکہ کانگریس تیسرے نمبر پر ہے۔ ریاستی الیکشن کمیشن کے افسران نے بتایا کہ مرکز کے زیر اتنظام ریاست میں 8 مرحلے میں ہوئے ان انتخابات میں 450 سے زیادہ خواتین امیدواروں سمیت کل 2178 امیدوار انتخابی میدان میں ہیں۔ پہلے مرحلے کی ووٹنگ 28 نومبر کو ہوئی تھی اور آٹھویں اور آخری مرحلے کی ووٹنگ 19 دسمبر کو ہوئی تھی۔ کل ملاکر پُرامن طریقے سے اختتام پذیر ہوئے ان انتخابات میں 57 لاکھ رائے دہندگان میں سے 51 فیصد نے اپنے حق رائے دہی کا استعمال کیا تھا۔

      ووٹوں کی گنتی سے ایک روز قبل احتیاطاً کم از کم 20 سیاسی لیڈروں کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔ ان لیڈروں میں پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی (پی ڈی پی) کے تین سینئر عہدیداران بھی شامل ہیں۔ پی ڈی پی کی صدر اور جموں وکشمیر کی سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے اپنے پارٹی لیڈروں کو حراست میں لئے جانے سے پر مودی حکومت کی تنقید کی ہے۔ محبوبہ مفتی نے الزام لگایا ہے کہ بی جے پی کو اس طرح سے انتخابی نتائج کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کرسکتی ہے۔ پی ڈی پی لیڈر نے کہا کہ ڈاکٹر فاروق عبداللہ دنیا کے کونے کونے میں گئے اور ہندوستان کے لئے انہوں نے آواز اٹھائی۔ ہندوستان کی بات رکھی اور اب ان کو ملک مخالف کہا جارہا ہے۔ انتخابی نتائج اس بات کی طرف اشارہ کرتے ہیں کہ عوام سچائی سمجھ چکی ہے۔ پی ڈی پی لیڈر نے کہا کہ جہاں تک ہمارے الائنس (اتحاد) کا سوال ہے، پی ڈی پی کیسے بنی تھی، دہلی میں جاکر مفتی محمد سعید نے یہ پارٹی بنائی تھی، ہم سب مل کر الیکشن لڑ رہے ہیں اور نیشنل کانفرنس سے کشمیر کی اہم پارٹی ہے اور یہاں کے تمام ایشوز کو سمجھتی ہے۔

      کشمیر ڈی ڈی سی انتخابات کے جو نتائج سامنے آرہے ہیں، اس کو لے کر نیشنل کانفرنس کے لیڈر اور رکن پارلیمنٹ اور نارتھ زون کے انچارج محمد اکبر لون نے کہا کہ جو الیکشن کے نتائج آرہے ہیں اور ہمیں سبقت ملی ہے، یہ واضح طور پر ظاہر ہوتا ہے کہ عوام کے اندر ہمارا بھروسہ کتنا ہے، ہم نے ایک پختہ اتحاد بناکر الیکشن لڑا اور اس کا نتیجہ سب کے سامنے ہے۔ محمد اکبر لون نے کہا کہ بی جے پی ہمیں کیا کہے گی، ان کی تو سب سے بڑی حصولیابی یہی ہے کہ انہوں نے اپنے جھنڈے لاکر یہاں گاڑ دیئے، لیکن ایشوز تو عوام ہی سمجھے گی نا اور یہ دکھا رہا ہے کہ صرف آکر اور باتیں کہنے سے نہیں ہوتا ہے، بلکہ عوام کے درمیان جانا ہوتا ہے۔ کشمیر ڈی ڈی سی انتخابات کے جو نتیجے آرہے ہیں، اس کو لے کر نیشنل کانفرنس کے سینئر لیڈر، رکن پارلیمنٹ محمد اکبر لون نے کہا کہ جو انتخابات کے نتائج آرہے ہیں اور ہمیں سبقت ملی ہے، یہ صاف طور پر ظاہر کرتا ہے کہ عوام کے اندر ہمارا بھروسہ کتنا ہے، ہم نے ایک پختہ اتحاد بناکر الیکشن لڑا اور اس کا نتیجہ سب کے سامنے ہے۔


      Published by:Nisar Ahmad
      First published: