உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بیلی برج ایک دہائی سے ٹریفک کی آمد و رفت کیلئے غیر محفوظ، موجودہ صورتحال پر عوام کا ردعمل

     نیشنل کانفرنس کے سینئر لیڈر ارجن سنگھ راجو نے موجودہ حکومت و انتظامیہ پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ضلع رامبن کی عوام کا دیرینہ مطالبہ رامبن میترہ پل کا آج تک نہ بننا حکومت کی ترقی کے دعوے کی پول کھول رہا ہے۔

    نیشنل کانفرنس کے سینئر لیڈر ارجن سنگھ راجو نے موجودہ حکومت و انتظامیہ پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ضلع رامبن کی عوام کا دیرینہ مطالبہ رامبن میترہ پل کا آج تک نہ بننا حکومت کی ترقی کے دعوے کی پول کھول رہا ہے۔

    نیشنل کانفرنس کے سینئر لیڈر ارجن سنگھ راجو نے موجودہ حکومت و انتظامیہ پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ضلع رامبن کی عوام کا دیرینہ مطالبہ رامبن میترہ پل کا آج تک نہ بننا حکومت کی ترقی کے دعوے کی پول کھول رہا ہے۔

    • Share this:
    ضلع رامبن کے قدیم قصبے کو نئے ضلع ہیڈ کوارٹر سے ملانے والا بیلی برج جس کی تعمیر بی آر او کی جانب سے سال انیس سو تریسٹھ میں مکمل کیا گیا، اس وقت سے ابھی تک ضلع کے دونوں طرف کی آبادی کو ملانے کا واحد پل ہے۔ ماضی میں حکومت کی جانب سے سی آر ایف کے تحت اس پل کو بنانے کا پرپوزل پاس کیا گیا تاہم اس کی فنڈنگ کو اب لنگویشنگ میں ڈالا گیا ہے ۔ انتالیس کروڑ کی لاگت سے پل کے کام کو ستویر گپتا کو دیا گیا ہے جس کی نگرانی محکمہ تعمیرات عامہ کر رہا ہے۔تاہم اتنا وقت گزرنے کے بعد ابھی تک پل کا کام صرف دس فیصدی کام کیا گیا ہے۔

    نیشنل کانفرنس کے سینئر لیڈر ارجن سنگھ راجو نے موجودہ حکومت و انتظامیہ پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ضلع رامبن کی عوام کا دیرینہ مطالبہ رامبن میترہ پل کا آج تک نہ بننا حکومت کی ترقی کے دعوے کی پول کھول رہا ہے۔ وہیں مرکزی مملکتی وزیر ڈاکٹر جتیندر سنگھ اور سابقہ رکن اسمبلی رامبن نیلم کمار لہنگے کی جانب سے کئی بار کے اعلانات اور سوشل میڈیا پر پل کی تعمیر کے کام کو لیکر کافی واواہی بٹوری تو گئی اور سال دوہزار چودہ سے ابھی تک پل کی تعمیر کا نہ ہونا رامبن کے رکن پارلیمنٹ کا عوام کے تئیں ہمدردی کی عکاسی کرتا ہے۔

    رامبن میترہ پل کی تعمیر کا دیرینہ مطالبہ رامبن کی عوام کی جانب سے ہر محاذ پر کیا گیا۔ وہیں میڈیا رپورٹس میں میں پل کی ضرورت کو اجاگر بھی کیا گیا۔ اس ضمن میں ضلع ترقیاتی کمشنر رامبن سے جب نیوز ایٹین اردو نے اس پل کی موجودہ صورتحال پر جانکاری حاصل کی تو انہوں نے کہا انتظامیہ تیس مہینے کی مدت میں اس پل کی تعمیر کا کام مکمل کرنے کیلئے پر عزم ہے اور اس سے ضلع کی معشیت کو تقویت ملنے کے کافی امکانات بھی ہے۔

    دریائے چناب پر اس وقت ضلع رامبن میں قومی شاہراہ کا جیسوال پل ہی واحد رابطہ کا ذریعہ ہے ۔ اس کے علاوہ بیلی برج سے بڑی گاڑیوں کو چلانا ناممکن ہے اسلئے تمام اعتبار سے میترہ رامبن پل کا بننا وقت کی اہم ضرورت ہے لیکن اب یہ آنے والا وقت ہی بتا پائے گا کہ جموں و کشمیر کی حکومت و پارلیمنٹ میں رامبن کے رکن کتنی جلدی اس پل کی تعمیر کو یقینی بنانے میں کامیاب ہونگے تاکہ عوام کا دیرنہ خواب شرمندہ تعبیر کو سکے۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: