உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں و کشمیر : بڈگام کے انجینئر عبید بشیر نے ٹین کے صندوق کو ریفریجریٹر میں کیا تبدیل، ہر طرف ہورہی جم کر تعریف

    جموں و کشمیر : بڈگام کے انجینئر عبید بشیر نے ٹین کے صندوق کو ریفریجریٹر میں کیا تبدیل، ہر طرف ہورہی جم کر تعریف

    جموں و کشمیر : بڈگام کے انجینئر عبید بشیر نے ٹین کے صندوق کو ریفریجریٹر میں کیا تبدیل، ہر طرف ہورہی جم کر تعریف

    Jammu and Kashmir News : عبید نے نیوز18 اردو کے ساتھ بات چیت کرتے کہا کہ جب انہوں نے اپنی ماں کو اپنے ہاتھ سے بنایا گیا ریفریجریٹر بطور تحفہ دیا تو وہ کافی خوش ہوئیں ۔ ان کے والد نے نیوز18 اردو کے ساتھ بات چیت کرتے انتہائی مسرت کا اظہار کیا ۔

    • Share this:
    بڈگام : وسطی کشمیر کے ضلع بڈگام کے بیروہ کے سید پورہ سے تعلق رکھنے اکیس سالہ ہونہار انجنئیر سید عبید بشیر نے ایک گھریلو ٹین کے صندوق کو ریفریجریٹر میں تبدیل کردیا ۔ ان کی یہ پہل کارآمد ثابت ہوئی ہے ۔ عبید بیروہ میں ایک متوسط خاندان سے تعلق رکھتے ہیں ۔ ان کے والد درزی کا کام کرتے ہیں ۔ عبید کا کہنا ہے کہ انہوں نے ایسا ریفریجریٹر بنانے کا قدم اس وقت اٹھایا جب رواں سال کی عید الضحیٰ سے چند دن پہلے ان کی ماں نے گھر کے لیے ریفریجریٹر لانے کی خواہش ظاہر کی ۔ جب عبید اور ان کے والد بازار گئے تووہاں سے ریفریجریٹر خریدنے کی کوشش کی تاہم ان کے والد کے پاس اتنی کثیر رقم نہیں تھی ۔ مایوسی کے عالم میں باپ بیٹے خالی ہاتھ گھر واپس لوٹ آئے ۔

    تاہم عبید کو یہ خیال آیا کہ وہ کوئی ایسا کارنامہ انجام دے ، جس سے ان کے گھر کی ضرورت بھی پوری ہو اور تجربہ بھی ہو۔ عبید نے گھر پہنچتے ہی اپنی والدہ کی شادی کے وقت کا صندوق کو ریفریجریٹر میں تبدیل کرنے کا کام شروع کردیا ۔ انہوں نے بازار سے استعمال شدہ چیزیں حاصل کرکے اس ریفریجریٹر کو بنانے میں استعمال کیا ۔ اس طرح عبید نے ایک معمولی رقم میں ریفریجریٹر تیار کرلیا ۔ عبید کے اس کارنامہ کی ہرطرف کافی ستائش ہورہی ہے۔

    عبید نے نیوز18 اردو کے ساتھ بات چیت کرتے کہا کہ جب انہوں نے اپنی ماں کو اپنے ہاتھ سے بنایا گیا ریفریجریٹر بطور تحفہ دیا تو وہ کافی خوش ہوئیں ۔ ان کے والد نے نیوز18 اردو کے ساتھ بات چیت کرتے انتہائی مسرت کا اظہار کیا ۔ انہوں نے کہا کہ ان کی خواہش ان کے بیٹے نے بغیر پیسے کے پوری کی ۔ عبید کے والد سید بشیر نے نیوز18 اردو کو بتایا کہ انہیں آج بہت خوشی ہوئی کہ جب ان کے بیٹے نے ایسا کارنامہ انجام دیا ۔

    عبید نے سرینگر میں قائم کے جی پی انجینئر نگ کالج سے الیکڑانک اینڈ کمیونیکیشن کے شعبہ میں تین سالہ  ڈپلوما کیا ہے۔ یہاں بھی انہوں نے سینیٹائزر ٹنل بنائی تھی ۔ عبید اب دیگر چیزوں کی تخلیق اور تجزیہ کرنے کا سوچ رہے ہیں ۔ سید عبید اپنے اساتذہ کرام اور والدین کا شکریہ اداکرتے ہیں ۔

    ساتھ ہی عبید وادی کشمیر کے تمام پڑھے لکھے نوجوانوں سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ غلط کاموں اور جرائم کی طرف نہ جائیں ۔ بلکہ اپنے اندر چھپی صلاحیتوں کو بروئے کار لائیں۔ ساتھ ہی سرکار سے اپیل کی جارہی ہے کہ ان کی ذہانت اور صلاحیتوں کو آگے بڑھانے کے لیے بہتر پلیٹ فارم فراہم کیا جائے ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: