ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

گلمرگ میں فوج کی پندرہ گڈوال نے تاریخی راجیو شیو مندر مرمت کرکے عوام کیلئے دوبارہ کھول دیا

گلمرگ میں فوج کی پندرہ گڈوال نے تاریخی راجیو شیو مندر کی نئے سرے سے تجدید ومرمت کرکے عوام کے لیے دوبارہ کھول دیا ہے۔ اس مندر کی دیکھ بھال برسوں سے ایک مسلمان کررہے ہیں۔

  • Share this:
گلمرگ میں فوج کی پندرہ گڈوال نے تاریخی راجیو شیو مندر مرمت کرکے عوام  کیلئے دوبارہ کھول دیا
اس مندر کی دیکھ بھال برسوں سے ایک مسلمان کررہے ہیں۔

دنیا بھر میں مشہور شہرہ آفاق سیاحتی مقام گلمرگ میں فوج کی پندرہ گڈوال نے پیغام کشمیریت کے تناظر میں گلمرگ میں قائم تاریخی راجیو شیو مندر کی نئے سرے سے تجدیدو مرمت کی۔فوجی جوانوں نے مقامی لوگوں کے ساتھ اس تاریخی مندر کے ساتھ ساتھ سیڑیوں کی تزئین اور رنگ وروگن کیا۔ راستوں کو نئے سرے سے ڈیزائن کیا۔یہ مندر انیس سو پندرہ میں جموں وکشمیر کے مہاراجہ ہری سنگھ کی اہلیہ مہونی بھائی سسودیا نے تعمیر کیا تھا۔ اب اس مندر کی بڑے پیمانے پر تزئین وآرائش کی ضرورت تھی کیونکہ طویل عرصے سے اس کی بحالی کے لیے کوئی کام نہیں ہواتھا۔گلمرگ آنے والے مقامی لوگوں اور سیاحوں کی ایک بڑی تعداد نے مندر کی تجدید ومرمت اور اس کی شان رفتہ کو بحال کرنے کی خواہش رکھتے تھے۔ فوج نے عوام کے ساتھ روابط کو برقرار رکھتے ہوئے کشمیر کے مذہبی ہم آہنگی کی مثال کو قائم رکھنے میں اہم کردار ادا کرتے ہوئے اس تاریخی مندر کو عوام کے لیے دوبارہ کھول دیا۔ اس کا افتتاح پیر پنچال برگیڈ کے کمانڈر برگیڈیئر بی ایس فوگاٹ نے ڈائریکٹر ٹیورزم ڈاکٹر جی این یتو اور مختلف مزاہب کے دھرم گرو کے ساتھ کیا۔ ڈائریکٹر ٹیورزم کشمیر ڈاکٹر جی این یتو نے نیوز18 اردو کو بتایا کہ کشمیر خاص کر گلمرگ مذہبی رواداری میں اپنی مثال آپ ہے۔


یہاں مسجد ،مندر،گرجاگراور گردوارہ قائم ہیں جو ایک مزہبی ہم آہنگی کی بہترین مثال مانی جاتی ہے۔پیر پنچال برگیڈ کے کمانڈر برگیڈیئر بی ایس فوگاٹ نے بھی خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر میں بھائی چارہ اور مذہبی رواداری کی مثال برسوں پرانی ہے جس میں کسی طرح کی کوئی کمی محسوس نہیں ہوئی۔انہوں نے کہاکہ اس مندر کی دیکھ بھال یہاں کا ایک مسلمان کررہاہے جو دنیا کے لئے کشمیریت کی ایک بڑی مثال ہے۔


۔ اس کا افتتاح پیر پنچال برگیڈ کے کمانڈر برگیڈیئر بی ایس فوگاٹ نے ڈائریکٹر ٹیورزم ڈاکٹر جی این یتو اور مختلف مزاہب کے دھرم گرو کے ساتھ کیا۔
۔ اس کا افتتاح پیر پنچال برگیڈ کے کمانڈر برگیڈیئر بی ایس فوگاٹ نے ڈائریکٹر ٹیورزم ڈاکٹر جی این یتو اور مختلف مزاہب کے دھرم گرو کے ساتھ کیا۔


گلمرگ میں قائم اس مندر کی خاصی بات یہ ہے کہ اس کی نگہداشت اور دیکھ ریخ برسوں سے ایک مسلمان ہی کرتے آئے ہیں۔ گلمرگ میں یہ مندر مزہبی ہم آہنگی اور یگانگت کی جیتی جاگتی مثال ہے کیونکہ گلمرگ میں مندر کے علاوہ گرجاگھر،گردوارہ اور مسجد موجود ہیں ۔ مندر کا پجاری برسوں سے غلام محمد شیخ نامی ایک مسلمان ہے ۔غلام محمد شیخ اس مندر کی ہر طرح کی دیکھ ریکھ کررہاہے۔ غلام محمد شیخ نے نیوز18اردو کو بتایا کہ انہوں نے گزشتہ تیس چالیس برسوں سے اس مندر کی دیکھ بھال کی۔انہوں نے کہاکہ پیغمبر اسلام حضرت محمد مصطفیٰ کاارشاد گرامی ہے کہ ہر دھرم اور ان کی مقدسات کا احترام کیاجائے۔ اسی فرمان کے تحت انہوں نے بھی گلمرگ میں اس مندر کی دیکھ بھال کا ذمہ داری اپنے سرلی کیونکہ یہاں اس وقت کوئی ہندو نہیں تھا۔

انہوں نے کہاکہ اس مندر کی خدمت کرنے میں انہیں قلبی سکون حاصل ہورہا ہے۔تاہم غلام محمد شیخ نے دل برداشتہ ہوکر کہاکہ انہوں نے اگر چہ برسوں سے اس مندر کی دیکھ بھال کی تاہم سرکار نے ان کی خدمات کو کبھی نہیں سراہا۔ان کا کہنا ہے کہ کشمیر میں ایسی خدمات انجام دینے پر ایوارڈ دوسرے لوگوں کو دیاجاتاہےلیکن ان کی مقدس خدمت سرکار کو نظر نہیں آئی۔ اس مندر کی تاریخ حیثیت اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ کئی فلموں کی شوٹنگ اسی مندر کے احاطے میں ہوئی۔ جے جے شنکر کا گانا اسی مندر کے احاطے میں راجیس کھنہ نے فلمایاتھا۔اس مندر کی پرانی وراثت کو واپس لوٹانے کے لیے فوج کی پندرہ گڈوال نے بھیڑا اٹھایا۔ اب امید کی جاسکتی ہے کہ لاک ڈاؤن اور وائرس کے بعد زیادہ سے زیادہ سیاح یہاں کا رخ کریں۔اور گلمرگ میں پھر سیاحت پٹری پر واپس لوٹ آئے۔
Published by: Sana Naeem
First published: Jun 01, 2021 07:43 PM IST