உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Jammu and Kashmir: آرٹیکل 370 نہ میں واپس دلا سکتا ہوں، نہ کانگریس، نہ پوار اور نہ ممتا- بارہمولہ میں بولے غلام نبی آزاد

    غلام نبی آزاد نےکہا- آرٹیکل 370 نہ میں واپس دلا سکتا ہوں، نہ کانگریس

    غلام نبی آزاد نےکہا- آرٹیکل 370 نہ میں واپس دلا سکتا ہوں، نہ کانگریس

    جموں وکشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ اور کانگریس کے سینئر لیڈر غلام نبی آزاد نے آرٹیکل 370 پر بڑا بیان دیا ہے۔ بارہمولہ میں ایک عوامی ریلی کو خطاب کرتے ہوئے غلام نبی آزاد نے کہا کہ ارٹیکل 370 کو نہ تو میں واپس دلا سکتا ہوں اور کانگریس، نہ شرد پوار اور نہ ہی ممتا بنرجی۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Jammu, India
    • Share this:
      نئی دہلی: جموں وکشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ اور کانگریس کے سینئر لیڈر غلام نبی آزاد نے آرٹیکل 370 پر بڑا بیان دیا ہے۔ بارہمولہ میں ایک عوامی ریلی کو خطاب کرتے ہوئے غلام نبی آزاد نے کہا کہ ارٹیکل 370 کو نہ تو میں واپس دلا سکتا ہوں اور کانگریس، نہ شرد پوار اور نہ ہی ممتا بنرجی۔ غلام نبی آزاد نے اسی ریلی میں کہ وہ آئندہ 10 دن میں نئی پارٹی کا اعلان کردیں گے۔

      واضح رہے کہ کانگریس چھوڑنے کے فوراً بعد غلام نبی آزاد نے کہا تھا، جموں وکشمیر میں آرہا ہوں۔ انہوں نے مرکز کے زیر انتظام ریاست میں ہونے والے آئندہ سال اسمبلی انتخابات میں نئی پارٹی کے ساتھ اترنے کی بات کہی تھی۔ اس 73 سالہ لیڈر نے 26 اگست کو کانگریس چھوڑنے سے پہلے، پارٹی میں تقریباً پانچ دہائیاں گزاریں۔ پارلیمنٹ کے دونوں ایوان میں رہے۔ جموں وکشمیر کے وزیر اعلیٰ اور مرکزی وزیر سمیت دیگر کئی اہم عہدوں پر کام کیا۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      صدر جمہوریہ دروپدی مرمو نے کیا غلام علی کو Rajya Sabha کے لئے نامزد، کشمیر سے رکھتے ہیں تعلق
       یہ بھی پڑھیں۔


      کانگریس کے سابق لیڈر غلام نبی آزاد نے ہفتہ کے روز کانگریس کے اس بیان پر پلٹ وارکیا تھا، جس میں الزام لگایا گیا تھا کہ ان کا ریموٹ کنٹرول پی ایم مودی کے ہاتھوں میں ہے۔ یہ اشارہ دیتے ہوئے کہ کانگریس لیڈران کا ریموٹ کنٹرول، سونیا گاندھی اور راہل گاندھی کے ہاتھوں میں تھا، آزاد نے میڈیا سے کہا کہ وہ کسی کے ذریعہ کنٹرول نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا، ’میں ان کی طرح نہیں ہوں، جن کا ریموٹ کنٹرول کہیں اور ہے۔ میرا ریموٹ کنٹرول میرے پاس ہے۔ میں آزاد ہوں۔ وہ غلام ہیں۔ میں نبی (پیغمبر) کا غلام ہوں۔ وہ کسی اور کے غلام ہیں۔ میں یہ بے نقاب نہیں کرنا چاہتا کہ کانگریس یا دیگر پارٹیوں کے لیڈران کس کے کنٹرول میں ہیں‘۔

      گزشتہ 8 ستمبر کو جموں کے بھدرواہ میں ایک ریلی کو خطاب کرتے ہوئے غلام نبی آزاد نے انکشاف کیا کہ انہوں نے کانگریس پارٹی سے استعفیٰ دینے کے بعد انہوں نے سونیا گاندھی اور راہل گاندھی پر عوامی تبصرے کیوں کئے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کی طرف سے میرے لئے توہین آمیز زبان استعمال کرنے کے بعد مجھے جواب دینے کے لئے مجبور ہونا پڑا۔ سونیا گاندھی کو لکھے گئے اپنے استعفیٰ نامہ میں غلام نبی آزاد نے راہل گاندھی پر کانگریس کی بربادی کا ٹھیکرا پھوڑا تھا۔ انہوں نے سینئر لیڈران کو درکنار کرنے، ان کے کام کے طریقہ کو نافذ نہیں کرنے، جی-23 لیڈران کی توہین کرنے والوں کا استقبال کرنے اور صدر نہیں ہونے کے باوجود راہل گاندھی کے ذریعہ کانگریس کو کنٹرول کرنے پر سوال کھڑے کئے تھے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: