ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر میں سرکاری کنٹریکٹر ٹیکس کی ادائیگی میں ادا کر رہے ہیں اہم کردار

جموں و کشمیر میں ٹیکس کی وصولیابی میں سرکاری و دیگر کنٹریکٹر ایک اہم کردار ادا کر رہے ہیں۔ جبکہ ٹیکس کی وصولیابی میں ڈراونگ اور ڈسںرسنگ افسران کا جانکار ہونا بے حد ضروری ہے۔

  • Share this:
جموں و کشمیر میں سرکاری کنٹریکٹر ٹیکس کی ادائیگی میں ادا کر رہے ہیں اہم کردار
جموں و کشمیر میں سرکاری کنٹریکٹر ٹیکس کی ادائیگی میں ادا کر رہے ہیں اہم کردار

جموں و کشمیر : جموں و کشمیر میں ٹیکس کی وصولیابی میں سرکاری و دیگر کنٹریکٹر ایک اہم کردار ادا کر رہے ہیں۔ جبکہ ٹیکس کی وصولیابی میں ڈراونگ اور ڈسںرسنگ افسران کا جانکار ہونا بے حد ضروری ہے۔ ان باتوں کا اظہار اننت ناگ کے ڈاک بنگلو میں جموں و کشمیر گڈس اینڈ سروس ٹیکس ایکٹ 2017 کے تحت ٹی ڈی ایس کٹوتی پر ایک روزہ تربیتی ورکشاپ میں کیا گیا۔ اس پروگرام کا اہتمام ریاستی ٹیکس محکمہ اننت ناگ نے ضلعی انتظامیہ اننت ناگ کے اشتراک سے کیا تھا۔ پروگرام کا مقصد ٹی ڈی ایس کی کٹوتی کی اہمیت پر زور دینے کے لئے کیا گیا تھا جو سرکاری ٹھیکیداروں سے ٹیکس وصولی کے دوران ایک اہم کڑی تشکیل دیتا ہے ، کیوں کہ ٹیکس محصولات کی مد میں ٹھیکیدار سب سے بڑا معاون ہے۔


پروگرام میں ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر اننت ناگ گلزار احمد ،  ڈپٹی کمشنر انفورسمنٹ ساؤتھ سید شاہنواز ، ڈاکٹر محمد حسین اسٹیٹ ٹیکس آفیسر اننت ناگ اول ،  عبدالحامد گنائی اسٹیٹ ٹیکس آفیسر اننت ناگ II ، نے شرکت کی۔ سجاد احمد صوفی اسٹیٹ ٹیکس آفیسر سرکل اننت ناگ III اور ضلع اننت ناگ کے تمام ڈی ڈی اوز بھی اس موقع پر موجود رہے۔جے اینڈ کے جی ایس ٹی ایکٹ 2017 کے تحت ٹی ڈی ایس سے متعلق پریزنٹیشن میں ڈاکٹر محمد حسین نے ٹی ڈی ایس مجموعہ کے ڈی ڈی اوز کے کردار اور ذمہ داریوں پر تفصیل سے تبادلہ خیال کیا۔


انہوں نے تمام ڈی ڈی اوز جو کام کے معاہدے کی ادائیگیوں کا انتظام کررہے ہیں اور ٹی ڈی ایس سرکاری ادائیگیوں اور ٹیکس وصولی کے لئے ٹیکس کے نشان کے طور پر کام کرتے ہیں ، کو مفصل جانکاری دی۔  اس کے نتیجے میں  ٹی ڈی ایس کی کٹوتی اور جی ایس ٹی آر 7 کی شکل میں ریٹرن کو بھرنا ٹیکس وصولی کی بڑی اسکیم میں اہم ہے۔  ڈاکٹر محمد حسین نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے اس بات کا اعادہ کیا کہ ضلع اننت ناگ میں ایک متحرک بزنس کمیونٹی اور ثقافت شامل ہے  اور اسی طرح ریاست کے ٹیکس کے نقشے پر ٹیکس میں حصہ لینے والا ایک بڑا ضلع بن کر ابھرنے کا امکان ہے۔ جبکہ اس طرح کے پروگراموں کا مقصد ٹیکسوں کے ڈھانچے اور نظام کے تمام اسٹیک ہولڈرز کے درمیان شعور اجاگر کرکے ٹیکس کی تعمیل کا ماحولیاتی نظام تیار کرنا ہے۔


وہاں موجود افسران نے جموں و کشمیر جی ایس ٹی ایکٹ 2017 کی تعمیل کرنے کیلئے ٹیکس دہندگان تک ذاتی طور پر پہنچنے پر زور دیا۔ پروگرام کا اختتام سوال وجواب کے سیشن کے ساتھ ہوا ، جس میں شرکا کو مسائل سے آگاہ کیا گیا۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Mar 06, 2021 10:55 PM IST