ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر ہندوستان اور پاکستان کے درمیان جنگ کا اکھاڑہ بن چکا ہے ، ہر گولی سے کشمیری ہی مرتا ہے : محبوبہ مفتی

پی ڈی پی صدر و سابق وزیر اعلی محبوبہ مفتی نے نیوز 18 اردو کے نمائندہ کے ساتھ خصوصی بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ جموں کشمیر ہند و پاک کے درمیان جنگ کا اکھاڑہ بن چکا ہے ، جہاں سے گولی چلتی ہے اور صرف کشمیری مرتا ہے ۔ لہذا اس خون خرابہ کو روکنے کا واحد راستہ ہند و پاک قیادت کو مسئلہ کشمیر کے پرامن حل کیلے بات چیت کا عمل شروع کرنا چاہئے ۔

  • Share this:
جموں و کشمیر ہندوستان اور پاکستان کے درمیان جنگ کا اکھاڑہ بن چکا ہے ، ہر گولی سے کشمیری ہی مرتا ہے : محبوبہ مفتی
جموں و کشمیر ہندوستان اور پاکستا کے درمیان جنگ کا اکھاڑہ بن چکا ہے ، ہر گولی سے کشمیری ہی مرتا ہے : محبوبہ مفتی

پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی نے کپواڑہ ضلع کے مڈہامہ کپواڑہ کا دورہ کیا اور اس دورے کے دوران انہوں نے سرینگر دہشت گردانہ حملہ میں شہید ہوئے پولیس اہلکار محمد یوسف کے گھر جاکر لواحقین کے ساتھ اظہار یک جہتی کی اور اس واقعہ پر افسوس کا اظہار کیا ۔ اس موقع پر پی ڈی پی صدر و سابق وزیر اعلی محبوبہ مفتی نے نیوز 18 اردو کے نمائندہ کے ساتھ خصوصی بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ جموں کشمیر ہند و پاک کے درمیان جنگ کا اکھاڑہ بن چکا ہے ، جہاں سے گولی چلتی ہے اور صرف کشمیری مرتا ہے ۔ لہذا اس خون خرابہ کو روکنے کا واحد راستہ ہند و پاک قیادت کو مسئلہ کشمیر کے پرامن حل کیلے بات چیت کا عمل شروع کرنا چاہئے ۔ تاکہ جموں و کشمیر کے عوام پرامن ماحول میں سانس لے سکیں ۔


محبوبہ مفتی نے کہا کہ اگرچہ ہندوستان نے چین کے ساتھ بات چیت کا عمل شروع کیا ، لیکن پاکستان کے ساتھ بات کرنے میں کیا حرج ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ چین نے ہمارے بیس فوجیوں کو شہید کیا ، لیکن اس کے برعکس بھی ہندوستان نے ان کے ساتھ بات چیت کا عمل شروع کیا جو کہ ایک خوش آئند اقدام ہے ۔ لیکن کشمیر میں خون خرابہ روکنے کیلے ہندوستان اور پاکستان کو بات چیت کا عمل شروع کرنا چاہیے۔ تاکہ کشمیر میں لوگ امن و امان سے زندگی گزار سکیں ۔


انہوں نے کہا کہ اگر ایسا نہیں ہوا تو کشمیر میں خون خرابہ جاری رہے گا اور ہر گولی سے کشمیری کا ہی خون ہورہا ہے اور ہر ایک دن بچے یتیم اور خواتین بیوہ ہورہی ہیں ۔ انہوں نے دہشت گردانہ حملہ میں پولیس اہلکار کی شہادت کو افسوسناک واقعہ قرار دیتے ہوئے اس واقعہ کی مذمت کی ۔ انہوں نے کہا کہ پرامن ماحول کیلئے ہندوستان اور پاکستان کو اٹل بہاری واجپئی کے نقش قدم پر چل کر امن کا ماحول تیار کرنا چاہئے ۔ تاکہ بندوق کو خاموش کیا جاسکے ۔


انہوں نے کہا کہ گولی دہشت گردوں کی ہو یا فوج کی ، دونوں صورت میں کشمیری ہی مرتا ہے ۔ لہذا اس سلسلے کو روکنے کا واحد راستہ بات چیت ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Feb 21, 2021 11:54 PM IST