உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    J&K News : صنعتی پالیسی کو لاگو کرنے سے متعلق چیف سیکریٹری کی اہم میٹنگ ، دی یہ بڑی ہدایت

    J&K News : صنعتی پالیسی کو لاگو کرنے سے متعلق چیف سیکریٹری کی اہم میٹنگ ، دی یہ بڑی ہدایت

    J&K News : صنعتی پالیسی کو لاگو کرنے سے متعلق چیف سیکریٹری کی اہم میٹنگ ، دی یہ بڑی ہدایت

    Jammu and Kashmir News : میٹنگ میں بتایا گیا کہ زمین کی الاٹمنٹ کی نئی پالیسی کے تحت محکمہ صنعت کو زمین کی الاٹمنٹ کے لیے اب تک 4,114 آن لائن درخواستیں موصول ہوئی ہیں اور 1,84,100 روزگار پیدا کرنے کی صلاحیت کے لئے 44,327 کروڑ روپےمختص رکھنے کی بات کہی گئی۔

    • Share this:
    جموں : چیف سکریٹری ڈاکٹر ارون کمار مہتا نے آج جموں میں ایک اہم میٹنگ کی صدارت کرتے ہوئے محکمہ صنعت و تجارت کے کام کاج کا جائزہ لیا۔ میٹنگ میں بتایا گیا کہ زمین کی الاٹمنٹ کی نئی پالیسی کے تحت محکمہ صنعت کو زمین کی الاٹمنٹ کے لیے اب تک 4,114 آن لائن درخواستیں موصول ہوئی ہیں اور 1,84,100 روزگار پیدا کرنے کی صلاحیت کے لئے 44,327 کروڑ روپےمختص رکھنے کی بات کہی گئی۔ میٹنگ میں مزید بتایا گیا کہ ان تمام درخواستوں پر سنگل ونڈو سسٹم کے تحت کارروائی کی جا رہی ہے ، جس میں شفاف طریقہ کار کے ذریعے زمین کی الاٹمنٹ کی جا رہی ہے ، اس میں  سرمایہ کاری، روزگار، صنعت، ماحولیاتی اثرات کی تشخیص، اور  دوسرے  الاٹمنٹ کے عمل میں شفافیت کو برقرار رکھنے کے لیے حتمی فہرست اور انتخاب کی تفصیلات کے ساتھ محکمہ کی آفیشل ویب سائٹ پر شیئر کی جاتی ہیں اس کے علاوہ  سرکاری الاٹمنٹ سے قبل اعتراضات بھی طلب کیے جاتے ہیں۔

    چیف سیکرٹری نے اہل درخواست دہندگان کے حق میں الاٹمنٹ کے عمل کو مکمل کرنے اور 18 مہینوں میں تقریباً 2 لاکھ روزگار کی فراہمی کو یقینی بنانے کی ہدایت دی۔ اس کے علاوہ میٹنگ میں زمین کی الاٹمنٹ اورصنعتی یونٹ کے قیام کے بارے میں ایک جامع رپورٹ پیش کی گئی، جس میں روزگار پیدا کرنے کی صلاحیت کو بڑھانے کی بات کہی گئی۔ ڈاکٹر مہتا نے محکمہ پر مزید زور دیا کہ وہ سنگل ونڈو سسٹم کو مربوط کرے تاکہ درخواست دہندگان کو محکمہ کے ساتھ رائے دینے کے قابل بنایا جاسکے۔ انہوں نے باقی محکموں کی خدمات پر توجہ مرکوز کرتے ہوئے اس ماہ کے آخر تک (EoDB) کے تحت شناخت کی گئی تمام خدمات کے اینڈ ٹو اینڈ ڈیجیٹائزیشن کو مکمل کرنے کی بھی ہدایت دی۔

    میٹنگ میں محکمہ صنعت و تجارت سے کہا گیا کہ وہ تمام ضلعی ہیڈکوارٹرز میں دستکاری اور ہینڈلوم ہاٹ تیار کرے تاکہ مقامی مصنوعات کو مقامی طور پرمارکیٹ فراہم کی جا سکے۔  محکمہ سے مزید کہا گیا کہ وہ ہر ضلع میں ایک شے کی نشاندہی کرنے میں تیزی لائے تاکہ اسے بڑے پیمانے پر قومی اور بین الاقوامی منڈیوں میں برآمد کیاجا سکے۔ جموں و کشمیر کے دستکاری اور ہینڈلوم کو فروغ دینے کے لیے ڈاکٹر مہتا نے مصنوعات کے معیار کی مناسب سرٹیفیکیشن کے بعد مقامی مارکیٹ کو ای کامرس پلیٹ فارم کے ساتھ جوڑنے پر زور دیا۔  اس کے علاوہ انہوں نے مقامی مصنوعات کے جی آئی ٹیگ اور اس کے بعد کوالٹی ٹیسٹنگ کی بھی تاکید کی۔ تاکہ جموں و کشمیر کی مصنوعات کے معیار پر صارفین کا اعتماد حاصل کیا جا سکے۔

    میٹنگ میں یہ بھی بتایا گیا کہ حال ہی میں منعقد ہونے والی دبئی ایکسپو 2022 کے دوران حکومت جموں و کشمیر نے سرمایہ کاری لانے کے لیے مختلف اداروں کے ساتھ مفاہمت ناموں پر دستخط کیے ہیں۔ جس میں 3,000 کروڑ کی سرمایہ کاری ہوگی، جس میں  صنعتی کمپنیاں شامل ہیں۔میٹنگ میں کہاگیاکہ 2021-22 کے دوران صنعت اور تجارت کے محکمے نے PMEGP کے تحت 1392 کیسز کی منظوری دی ہے  19.34 کروڑ روپے کی منظور شدہ رقم کے ساتھ کاریگروں کے لیے کریڈٹ کارڈ کے تحت 2810 کیسوں کو سپانسر کیا۔  1.89 کروڑ میں جموں و کشمیر کی صنعت و تجارت کے فروغ کے لیے 26 کارخانے قائم کیے اور 20 نمائشوں کا اہتمام کیا۔

    جموں وکشمیر کےصنعتی منظر نامے کو تبدیل کرنے کے لیےمحکمے نے صنعتی ترقی کے لیے نئی مرکزی سیکٹر اسکیم، J&K صنعتی پالیسی 2021-30، J&K صنعتی زمین الاٹمنٹ پالیسی 2021-30، J&K پرائیویٹ انڈسٹریل اسٹیٹ ڈویلپمنٹ پالیسی بنائی ہے۔اس میٹنگ میں پرنسپل سیکرٹری، صنعت و تجارت کے ڈائریکٹرز، مختلف اداروں کے  منیجنگ ڈائر یکٹرز،جموں وکشمیر ٹریڈ پروموشن آرگنائزیشن کے ساتھ متعلقہ افسران نے شرکت کی۔

    واضح رہے کہ دفعہ تین سو ستہر اور پینتیس اے کو منسوخ کئے جانے کے بعد مرکزی سرکار کی طرف سے کئی ایسے اقدامات کئے جارہے ہیں جن کی رو سے یوٹی میں بے روزگار نوجوانوں کے لیے روزگار کے مواقع میسر کئے جاسکے۔

     
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: