உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    وادی کشمیر میں مختلف مقامات پر یوم عاشورہ کی مناسبت سے جلوس عزا برآمد

    وادی کشمیر میں مختلف مقامات پر یوم عاشورہ کی مناسبت سے جلوس عزا برآمد

    وادی کشمیر میں مختلف مقامات پر یوم عاشورہ کی مناسبت سے جلوس عزا برآمد

    Jammu and Kashmir News : ضلع بڈگام میں میر گنڈ سے سب سے بڑا جلوس برآمد ہوا۔ ذڈی بل سرینگر میں جلوس عزاء برآمد ہوئے ، جن میں ہزاروں کی تعداد میں عزاداروں نے شرکتِ کی ۔

    • Share this:
    سری نگر: یوم عاشورہ کی مناسبت سے سرینگر شہر کے علاوہ وادی بھر میں 10 ویں محرم الحرام کی مناسبت سے ذوالجناح اور علم شریف کے جلوس بر آمد کئے گئے ۔ ضلع بڈگام میں میر گنڈ سے سب سے بڑا جلوس برآمد ہوا۔ ذڈی بل سرینگر میں جلوس عزاء برآمد ہوئے ، جن میں ہزاروں کی تعداد میں عزاداروں نے شرکتِ کی ۔ شمالی کشمیر اور وسطی ضلع بڈگام کے دیگر حصوں سے بھی یوم عاشورہ کی مناسبت سے جلوس برآمد ہوئے ، جن میں خاص طور پر امام بارگاہ باباپورہ ماگام ، ملہ بوچھن ، ذاکر محلہ ماگام ، ڈانگر پورہ ، گوم احمدپورہ ، نولری، مالموہ ، تانترے پورہ، ہاگر پورہ، تونجی ہیرن اور صوفی پورہ ماگام شامل ہیں ۔ یہ تمام جلوس مرکزی اور تاریخی امام بارگاہ احمد پورہ میں اختتام پذیر ہوئے ۔

    ان جلوسوں میں ہزاروں کی تعداد میں عزاداروں نے شرکتِ کی ۔ عزاداروں نے مرثیہ اور نوحہ خوانی کرکے شہدائے کربلا کو خراج عقیدت پیش کیا ۔ امام بارگاہ احمد پورہ میں شیعہ ایسوسی ایشن کے صدر مولانا عمران رضا انصاری نے شہدائے کربلا کے فلسفہ شہادت پر روشی ڈالی ۔ ان کے ہمراہ عابد انصاری، عرفان انصاری، ڈاکٹر امجد انصاری اور دیگر علما بھی تھے۔ عمران انصاری نے امام حسین کے راستے پر چلنے کی تلقین کی ۔

    ادھر پٹن کے یکمن پورہ، میر گنڈ، چینا بل ،حبک ٹینگو، آرم پورہ ،ہانجی ویرہ اور دیگر علاقوں سے بھی عاشورہ کے جلوس برآمد ہوئے۔ تمام مقامات پر پرامن حالات رہے اورکوئی ناخوشگوار واقعہ پیش نہیں آیا ۔ عزاداروں نے نواسہ رسول حضرت امام حسین کی اس شہادت کو یاد کیا ، جو انہوں نے میدان کربلا میں سن اکسٹھ ہجری میں دین اسلام کی آبیاری وبقا کے لیے دی تھی ۔

    انتظامیہ کی جانب سے سرینگر کے لال چوک اور اسے متصل علاقوں سے میں جلوس نکالنے کی اجازت نہیں دی گئی۔  سول لائنز کے کئی علاقوں میں آج جزوی بندشیں عائد کی گئیں ۔ سرینگر میں 8 محرم کو عزاداروں کے جلوس کو نکالنے کی کوشش ناکام بنانے کے بعد یہ قدم اٹھایا گیا ۔ اگرچہ حال ہی میں گورنر انتظامیہ نے سرینگر آبی گزر لال چوک کے تاریخی جلوس پر پابندی ہٹائی تھی ۔ تاہم آٹھویں محرم کو پیش آئے واقعہ کے بعد انتظامیہ نے پھر پابندی عائد کردی ہے ۔

    آٹھویں محرم کو پیش آئے واقعہ میں صحافیوں کو بھی کوریج کے دوران پولیس نے تششد کا نشانہ بنایا ، جس کے بعد ڈی جی پی نے متعلقہ پولیس افسران کے تبادلے کردئے ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: