ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

لاک ڈاون کی وجہ سے وادی کشمیر میں یوم قدس کی تمام تقریبات اور جلسے جلوس منسوخ ، لوگوں نے اپنا یہ نیا طریقہ

وادی کشمیر میں اس مرتبہ سڑکیں سنسان نظر آئیں ۔ تاہم لوگوں نے اپنے اپنے گھروں کے صحن اور اندورنی گلی کوچوں میں پوسٹر چسپاں کرکے اورسوشل ڈسٹنس کا خیال رکھتے ہوئے فلسطین کے لوگوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کر کے اس دن کو یاد کیا ۔

  • Share this:
لاک ڈاون کی وجہ سے وادی کشمیر میں یوم قدس کی تمام تقریبات اور جلسے جلوس منسوخ ، لوگوں نے اپنا یہ نیا طریقہ
لاک ڈاون کی وجہ سے وادی کشمیر میں یوم قدس کی تمام تقریبات اور جلسے جلوس منسوخ ، لوگوں نے اپنا یہ نیا طریقہ

انقلاب اسلامی ایران کے بانی حضرت امام خمینی نے ماہ رمضان المبارک کے آخری جمعہ یعنی جمعۃ الوداع کو عالمی یوم قدس قرار دے کر دنیا والوں کی توجہ مسئلہ فلسطین کی طرف مرکوز کی تھی ۔ بیت المقدس کی بازیابی کے لئے گزشتہ ستر برسوں  سے دنیا بھر کے ساتھ ساتھ وادی کشمیر میں  بھی آج کے روز سڑکوں پر نکالے جارہے جلسے و جلوسوں میں لاکھوں کی تعداد میں لوگ شرکت کرتے آئے ہیں ۔  شہر، شہر ، بستی ، بستی میں بر آمد ہونے والے جلسے و جلوسوں اور ریلیوں میں چھوٹے بچے سے لیکر بزرگوں  تک قبلہ اول کی بازیابی اور اسرائیل اور امریکہ  کے خلاف اظہار برہمی  کے لئے شرکت کرتے رہے ہیں ۔ تاہم کورنا وائرس اور لاک ڈاون کی وجہ سے اس مرتبہ یوم قدس کی تقاریب اور جلسے و جلوس متاثر ہوئے ۔


وادی کشمیر میں اس مرتبہ سڑکیں سنسان نظر آئیں ۔ تاہم لوگوں نے اپنے اپنے گھروں کے صحن اور اندورنی گلی کوچوں میں  پوسٹر چسپاں کرکے اورسوشل ڈسٹنس کا خیال رکھتے ہوئے فلسطین کے لوگوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کر کے اس دن کو یاد کیا ۔ ایک ریسرچ اسکالر امتیاز احمد نے نیوز 18  اردو کو بتایا کہ امام حسین  کا فرمان ہے کہ دوسروں کے مظلوم ہونے پر خاموش رہنے والے خود ہی ظلم کے مجرم  ہیں ۔ اس فرمان کا حوالہ دے کر انہوں نے کہا کہ لاک ڈاون کے باوجود وہ اس دن کو کبھی فراموش نہیں کرسکتے ہیں ۔ انہوں نے مزید بتایا کہ امام خمینی  نے زور دیا ہے کہ امت مسلمہ کو خواہ کہ وہ  مظلوم فلسطینی عوام  کے تئیں اپنی ذمہ داریوں کو سمجھے  اور یوم قدس کی تقریبات میں  شرکت کر کے اپنے دینی ، مذہبی اور اخلاقی جذبہ کا عملی ثبوت پیش کرے ۔


مولوی قمر علی نے نیوز 18 اردو کو بتایا کہ لوگوں نے لاک ڈوان کا احترام کرتے ہوئے یوم قدس منانے کے لئے سوشل میڈیا کا بھی سہارا لیا ۔ لوگوں نے سو شل میڈیا یعنی فیس بک ، ٹویٹر، انسٹاگرام ، وہاٹس ایپ اور دیگر طریقہ اور ذریعہ اپنا کر یوم قدس اور فلسطین کے ساتھ اظہار یکجہتی سے متعلق بیانات تحریر کئے ۔ مولوی قمر علی نے مزید بتایا کہ  علما اور ماہرین طب کے مشورے کے مطابق لاک ڈاون  کا احترام بھی ضروری اور جمعہ الوداع  یعنی یوم قدس کویاد کرنا بھی فرض اولین تھا ۔


ماگام سے تعلق رکھنے والے ایک  ذاکر نثار حسین  نے بھی نیوز 18 اردو کو بتایا کہ روز قدس اسلام کی حیات کا دن ہے ۔ دین اسلام  سلامتی ، بھائی چارے ، امن ومحبت ، اخوت مساوات کا دین ہے ۔ جو ظلم کی شدید نفی کرتا ہے اور ظالم کی سرکوبی کا حکم دیتا ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ امام خمینی نے اسلامی دنیا کو ایک نئی فکر سے روشنا س کرایا اور امام خمینی کے حکم کے مطابق اس دن کو کبھی فراموش نہیں کیا جاسکتا ۔
First published: May 22, 2020 09:31 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading