ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں : نگروٹہ میں واقع جگتی مائیگرنٹ ٹاؤن شپ کورونا کی زد میں ، لوگ حکومت کے رویہ سے ناراض

Jammu and Kashmir News : مائیگرنٹ پنڈتوں نے شکایت کی ہے کہ ان کی حالت زار کو دیکھنے کے لیے کوئی سرکاری عہدیدار یہاں نہیں آیا ۔ لیکن اس سے زیادہ انہیں اس بات کا غم ہے کہ کشمیری پنڈت طبقہ کی مشہور شخصیات اور ان کے سیاسی اور دیگر لیڈران بھی ان کی مدد کیلئے آگے نہیں آرہے ہیں ۔

  • Share this:
جموں : نگروٹہ میں واقع جگتی مائیگرنٹ ٹاؤن شپ کورونا کی زد میں ، لوگ حکومت کے رویہ سے ناراض
جموں : نگروٹہ میں واقع جگتی مائیگرنٹ ٹاؤن شپ کورونا کی زد میں ، لوگ حکومت کے رویہ سے ناراض

جموں : جموں کے جگتی مائیگرنٹ ٹاؤن شپ میں ہر گزرتے دن کورونا وائرس کے مثبت معاملات سامنے آرہے ہیں ۔ یہاں روزانہ کووڈ معاملات میں اضافہ دیکھنے کو مل رہا ہے ۔ اعداد وشمار کے مطابق اب تک دس مکین اپنی زندگی سے ہاتھ دو چکے ہیں۔ گزشتہ سال کووڈ وبا پھیلنے کے بعد اب تک یہاں سینکڑوں لوگ کووڈ پازیٹیو ہوچکے ہیں ۔ کووڈ کی دوسری لہر بھی کافی خطرناک ثابت ہورہی ہے۔ گزشتہ ایک مہینے میں یہاں ایک سو پچاس سے زیادہ کووڈ پازیٹیو معاملات کی نشاندہی ہوئی ہے۔ گزشتہ چار روز میں جگتی مائیگرنٹ ٹاؤن شپ میں مزید اکسٹھ پازیٹیو معاملات سامنے آئے ۔


مائیگرنٹ پنڈتوں نے شکایت کی ہے کہ ان کی حالت زار کو دیکھنے کے لیے کوئی سرکاری عہدیدار یہاں نہیں آیا ۔ لیکن اس سے زیادہ انہیں اس بات کا غم ہے کہ کشمیری پنڈت طبقہ کی مشہور شخصیات اور ان کے سیاسی اور دیگر لیڈران بھی ان کی مدد کیلئے آگے نہیں آرہے ہیں ۔ مایوس ، برہم اور ناراض لوگوں نے کہا کہ کوئی بھی ان کی مدد کرنے کیلئے نہیں آرہا ہے ۔ جگتی کے مکینوں کا کہنا ہے کہ ان کے نام نہاد لیڈروں نے انہیں صرف سیاسی ہتھیار کے طور پر استعمال کیا ہے ۔


شادی لعل پنڈتا نے نیوز 18 اردو کو بتایا کہ کشمیری پنڈتوں کے لئے جو بھی ادارے ہیں ، وہ صرف اپنے آپ کو اور اپنے رشتہ داروں کے لیے کشمیری پنڈتوں کے نام پر رقومات جمع کرتے ہیں ۔ ان میں سے کوئی ادارہ ان کی امداد کیلئے نہیں پہنچا ۔ یہ ادارے جو دعوے کررہے ہیں ، وہ سارے جھوٹ پر مبنی ہیں ۔ سنیل پنڈتا نے بھی نیوز 18 اردو کو بتایا کہ سرکار کو ان کی تمام آرگنائزیشنز کی جانچ کرنی چاہئے ۔ کیونکہ وہ آج تک ان کے کام نہیں آسکے ۔ انہوں نے کوئی مدد نہیں کی ۔ آج ان کے تمام حقائق سامنے آئے ہیں ۔


ایک اور پنڈت نے کہا کہ یہاں لوگ صرف مالا ڈلوانے کیلئے آتے ہیں ، نہ کہ لوگوں کی مدد کیلئے ۔ جگتی مائیگرنٹ ٹاؤن شپ کے لوگوں نے سرکار سے مطالبہ کیا کہ ان کیلئے طبی بندوبست کیا جائے ۔ جگتی میں قائم اسپتال بھی طبی سہولیات سے محروم ہے ۔ انہیں امید ہے کہ سرکار اور دیگر ادارے ان کیلئے بندوست کریں گے ۔ اس بحرانی کیفیت میں انہیں کوئی بااثر شخص فون کال کرنے کا گوارہ تک نہیں کرتا ۔

ان لوگوں نے خبر دار کیا کہ اب وہ کسی کو بھی انہیں استعمال کرنے نہیں دیں گے ۔ ضرورت اس بات کی ہے کہ ان پنڈتوں کی داد رسی کی جائے اور ان کے بچاؤ کے اقدامات اٹھائے جائیں ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: May 06, 2021 12:11 AM IST