உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    J&K News: این ایچ 444 کی تعمیر کے دوران لیبر قوانین اڑائی جارہی ہیں دھجیاں

    J&K News: این ایچ 444 کی تعمیر کے دوران لیبر قوانین اڑائی جارہی ہیں دھجیاں

    J&K News: این ایچ 444 کی تعمیر کے دوران لیبر قوانین اڑائی جارہی ہیں دھجیاں

    Jammu and Kashmir: مختلف تعمیراتی کاموں سے وابستہ مزدوروں کے لیے اگرچہ حکومت نے کئی قوانین بنائے ہیں ۔ تاہم اس کے باوجود بھی بڑی تعیراتی کمپنیان لیبر قوانین کی دھجیاں اڑا رہی ہیں ۔

    • Share this:
    پلوامہ : مختلف تعمیراتی کاموں سے وابستہ مزدوروں کے لیے اگرچہ حکومت نے کئی قوانین بنائے ہیں ۔ تاہم اس کے باوجود بھی بڑی تعیراتی کمپنیان لیبر قوانین کی دھجیاں اڑا رہی ہیں ۔ تفصیلات کے مطابق Ministry of Road transport and highways کی جانب سے سرینگر سے لے کر قاضی گنڈ تک تعمیر کرنے والے نیشنل ہایی وے 444 پر ضلع پلوامہ میں چل رہے تعمیراتی کام میں تعمیراتی ایجنسی لیبر قوانین کی خلاف ورزی کررہی ہیں ۔

     

    یہ بھی پڑھئے : جامع مسجد سرینگر ایک بار پھر بند ، شب قدر اور جمعۃ الوداع کی اجازت نہیں


    ضلع پلوامہ کے گڈورہ علاقے میں تعمیراتی ایجنسی کی جانب سے نالہ رومشی پر پل کا کام کررہے مزدور بنا کسی لائف سیفٹی ٹول کے کام کررہے ہیں ۔ پل پر ویلڈنگ اور دیگر تعمیراتی کام کررہے مقامی اور غیر مقامی مزدور سیفٹی کے علاوہ سائٹ پر کسی قسم کی سہولیات میسر نہیں ہیں ۔ جب یہ مسئلہ نیوز18 اردو نے اسسٹنٹ لیبر کمشنر پلوامہ کی نوٹس میں لایا تو متعلقہ محکمہ کے عہدیداراں نے تعمیراتی سائٹ پر چھاپہ مارا اور این ایچ 444 پر کام کررہی تعمیراتی ایجنسی کی جانب سے لیبر قوانین کے حوالے سے کئی بے ضابطگیاں پائی گئیں ۔

     

    یہ بھی پڑھئے : شاہ فیصل پھر سے نوکری پر لوٹے، استعفی دے کر بنائی تھی سیاسی پارٹی


    اس موقع پر لیبر افسر نے تعمیراتی ایجنسی کو 9 مئی تک لیبر کورٹ پلوامہ میں حاضر ہونے کیلئے کہا ہے ۔ لیبر افسر نوشاد نے نیوز 18 اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ چکنگ کے دوران انہوں نے پایا کہ مذکورہ تعمیراتی کمپنی نے مقامی اور غیر مقامی مزدوروں کا رجسٹریشن بھی عمل میں نہیں لائی ہے جبکہ سیفٹی ٹول بھی مزدوروں کو فراہم نہیں کیا گیا ہے ۔

    انہوں نے کہا کہ مزدوروں کا رجسٹریشن لازمی ہوتا ہے ۔ تاکہ کسی بھی حادثہ کے بعد مزدور کو امداد فراہم کرنے کے لیے محکمہ لیبر سامنے آتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ لیبر کورٹ تعمیراتی کمپنی کے خلاف قانونی کارروائی کرے گی ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: